سیرت النبی ﷺ:ولادت تا نبوتؒ:04

رسول کریم پر وحی کا آغاز

قوم کے اندر پھیلی ہوئی خرافات اور برائیوں کو دیکھ کر آپ غمزدہ رہنے لگے اورآپ بار بار یہ سوچنے لگے کہ انہیں  کس طرح ہلاکت سے بچایا جائے یہ غم اور خواہش بڑھتی گئی یہاں تک کہ آپ رمضان کے مہینہ میں (جبل نورپرواقع)غار حرا (جس کی لمبائی 4گز اور چوڑائی پونے 2گز ہے) میں جا کر سیّدنا ابراہیم علیہ السلام کی تعلیمات کے مطابق اللہ تعالیٰ کی عبادت کرنے میں مصروف ہو گئے اور مہینہ پورا کر کے آپ بیت اللہ تشریف لاتے، بیت اللہ کا طواف کرنے کے بعد اپنے گھر چلے جاتے۔ تین سال تک آپ کا یہی معمول رہاپھر جب آپ کی عمر مبارک 40 سال کےقریب ہوئی توآپ کو سچے خواب آنا شروع ہو گئے پھر روشنی نظر آنے لگی اور بے جان چیزوں کی آواز سنائی دینےلگی۔رسول اکرم فرماتے ہیں : میں مکہ کے ایک پتھر کو پہچانتا ہوں جو نبوت ملنے سے پہلے مجھے سلام کیاکرتاتھا۔(مسلم)
تیسرے سال رمضان کے مہینہ میں جب آپ کی عمرمبار ک 40 سال 6 ماہ اور 12 دن ہو گئی۔ 21 رمضان المبارک بروز پیر بمطابق  10 اگست 610؁ عیسوی میں آپ غارِ حرا میں اللہ تعالیٰ کی عبادت میں مصروف تھے کہ اچانک جبرائیل علیہ السلام سامنے آئے اور کہا:
اِ قْرَاْ آپ ( ) پڑھئے۔ آپ نے فرمایا: مَا اَنَا بِقَارِیٍٔ میں پڑھا ہوا نہیں ہوں ۔ جبرائیل علیہ السلام نےآپکو اپنے سینہ سے لگاکر دبایا پھر کہا : اِ قْرَأْ پڑھئے۔ آپ نے دوبارہ وہی جواب دیا: مَا اَنَا بِقَارِیٔ میں پڑھنانہیں جانتا۔ سیّدنا جبرائیل علیہ السلام نے آپ کو تیسری بار سینہ سے لگاکر دبایا اور کہا:
اِقْرَاْ بِاسْمِ رَبِّكَ الَّذِيْ خَلَقَ ۝ خَلَقَ الْاِنْسَانَ مِنْ عَلَقٍ ۝ اِقْرَاْ وَرَبُّكَ الْاَكْرَمُ۝ الَّذِيْ عَلَّمَ بِالْقَلَمِ ۝ عَلَّمَ الْاِنْسَانَ مَا لَمْ يَعْلَمْ ۝
(اے محمّد )اپنے رب کا نام لے کر پڑھئے جس نے (پورے عالم کو) پیدا کیا۔جس نے انسان کو خون کےلوتھڑےسےپیدا کیا۔ پڑھئے آپ کا رب بڑاکریم ہے۔ جس نے قلم کے ذریعہ سے(انسان کو) علم سکھایا اور انسان کو وہ باتیں سکھائیں جن کا اسے علم نہ تھا۔ ( العلق 96 : آیات 1تا 5)
ان آیات کو سیکھ کر آپ گھر تشریف لائے۔ اس وقت آپ کا دل گھبراہٹ کی وجہ سے کانپ رہاتھا۔ آپ نے سیّدہ خدیجہ ؓ سے فرمایا: مجھے کمبل اُڑھادیجئے، مجھے کمبل اُڑھادیجئے۔ انہوں نےآپکو کمبل اُڑھا دیا۔کچھ دیر بعد آپ کی گھبراہٹ ختم ہو ئی توآپ نے سیّدہ خدیجہؓکو غار والا پورا واقعہ سنایا اور کہا: مجھے اپنی جان کے بارے میں خوف محسوس ہورہاہے۔ سیّدہ خدیجہؓ نے آپ کو تسلی دیتے ہوئے کہا:اللہ کی قسم، ایسا ہرگز نہیں ہو سکتا۔ اللہ تعالیٰ آپکوکبھی رُسوا نہیں کرے گااس لئے کہ آپ (رشتہ داروں سے) صلہ رحمی کرتےہیں،بےسہارالوگوں کا بوجھ اٹھاتے ہیں ، تنگ دست لوگوں کی مدد کرتے ہیں ، مہمانوں کی میزبانی کرتےہیں اور مصیبت کے وقت لوگوں کی مدد کرتے ہیں ۔ اس کے بعدآپ ؓ آپ کو اپنےچچازادبھائی ورقہ بن نَوفل کے پاس لے کر گئیں جو کہ عیسائی عالم تھے اور انجیل کا عبرانی زبان میں ترجمہ کررہے تھے۔ اس وقت وہ بوڑھے اور نابینا ہو چکے تھے۔سیّدہ خدیجہ ؓ نے کہا: بھائی جان، آپ اپنے بھتیجے کی باتیں سنیں ۔
ورقہ بن نَوفل نے کہا: اے بھتیجے، سناؤ۔ آپ
کے ساتھ جو واقعہ پیش آیا تھا، آپ نے وہ پورا واقعہ سنایا۔ اس واقعہ کو سنتے ہی انہوں نے کہا: یہ تو وہی ناموس (وحی لانے والا فرشتہ) ہے جو موسیٰ علیہ السلام پرنازل ہوا تھا پھر کہنے لگے: کاش، میں اُس وقت تک زندہ رہوں ، جب آپ کی قوم آپکویہاں(مکہ)سے نکال دے گی۔ آپ نے پوچھاکہ واقعی میری قوم مجھے یہاں سے نکال دےگی؟
ورقہ نے کہا: جی ہاں جب بھی کوئی رسول آپ جیسا پیغام لے کر آیا تو اس سے ضرور دشمنی کی گئی۔ اگر میں نے تمہارا وہ(نبوت والا)زمانہ پا لیا تو ضرور تمہاری مدد کروں گا۔ اس کے کچھ عرصہ بعدہی ورقہ وفات پاگئےاورکچھ عرصہ تک آپ
پر وحی کا سلسلہ بندہوگیا۔(بخاری،مسلم )
وحی کا بندہونا اور آپ کی اضطرابی کیفیت
پہلی وحی کے بعد کچھ عرصہ کے لئے آپ پروحی آنا بند ہو گئی۔آپ بہت زیادہ غمگین رہنےلگے۔کئی مرتبہ آپ پہاڑ کی چوٹی پر تشریف لے کر گئے تاکہ وہاں سے لڑھک جائیں لیکن آپ جب بھی کسی پہاڑ کی چوٹی پر پہنچتے تو جبرائیل علیہ السلام نمودار ہوتے اور فرماتے کہ :اے محمّد آپ اﷲ کے برحق رسول ہیں ۔ اس تسلی سے آپ کے دل کو قرار آجاتا اور آپ واپس گھرتشریف لےآتے۔(بخاری)
وحی کی یہ بندش اس لئے تھی تاکہ پہلی وحی کی و جہ سے آپ پر جو خوف طاری ہوگیا تھا وہ ختم ہوجائےاور آپ کے دل میں دوبارہ وحی کی آمد کا شوق وانتظار پیدا ہوجائے۔ جب آپ کا شوق وانتظار اس لائق ہوگیا کہ آئندہ وحی کی آمد پر آپ اس بوجھ کو بآسانی اٹھالیں گے تو جبرائیل علیہ السلام دوبارہ تشریف لائے۔ آپ نے دوبارہ وحی نازل ہونے کا واقعہ اس طرح بیان فرمایا : میں چل رہا تھا۔ اچانک مجھے آسمان سے ایک آواز سنائی دی۔ میں نے نگاہ اٹھاکر دیکھا تو وہی فرشتہ جو میرے پاس غار حرا میں آیا تھا، آسمان وزمین کے درمیان ایک کرسی پر اس طرح پر پھیلا کر بیٹھا ہے کہ آسمان کے کنارے اس سےچھپ گئے ہیں ۔ میں اس منظر سے خوفزدہ ہو کر اپنے اہل خانہ کے پاس آیا اور کہا: مجھے کمبل اُڑھادیجئے،مجھے کمبل اُڑھادیجئے۔ اہل خانہ نے مجھے کمبل اُڑھادیا اس کے بعد اﷲ تعالیٰ نے یہ آیات نازل فرمائیں :
يٰٓاَيُّهَا الْمُدَّثِّرُ۝ قُمْ فَاَنْذِرْ۝ وَرَبَّكَ فَكَبِّرْ ۝ وَثِيَابَكَ فَطَهِّرْ ۝ وَالرُّجْزَ فَاهْجُرْ ۝
اے کپڑا اوڑھنے والے۔ اٹھئے اور( لوگوں کو عذاب الٰہی سے) ڈرائیے۔اور اپنے رب کی بڑائی بیان کیجئے۔ اوراپنےکپڑوں کو پاک رکھئے۔ اور (بتوں کی) ناپاکی سے دور رہئے۔ ( المدثر 74:آیات 1تا 5) پھر وحی کا سلسلہ
باقاعدگی سے جاری ہوگیا۔ (بخاری۔عن جابر
ؓ )
وحی کے آغاز پر جنوں اور شیاطین پر آسمانی باتیں سننے پر پابندی
آپ کو نبوت ملنے سے پہلے جنات آسمان سے قریب ہو کر فرشتوں کی باتیں بآسانی سن لیا کرتےتھےلیکن  جب رسول اکرم کو نبوت عطا کی گئی تو وحی کو ان کی دخل اندازی سے محفوظ رکھنے کے لئے جنات کےآپکی باتیں سننے پر پابندی لگا دی گئی۔اب جو بھی شیطان باتیں سننے کی کوشش کرتا، اسے انگاروں سےماراجاتا۔ جب جنات کے آسمانی باتیں سننے پر پابندی لگی تو وہ آپس میں کہنے لگے کہ اللہ تعالیٰ نے ضرورزمین پرواقع ہونے والے کسی عظیم کام کا فیصلہ کیا ہے۔اس لئے وہ اس(عظیم کام) کی تلاش کے لئے زمین میں مختلف ٹولیوں کی صورت میں پھیل گئے۔ ان میں سے ایک جماعت نے آپ کو مکہ کے قریب وادی نخلہ (جگہ کانام) میں صحابہ کرام ؓ کو فجر کی نماز میں قرآن کی تلاوت کرتے ہوئے پایاتو وہ جماعت فوراً سمجھ گئی کہ یہی وہ عظیم کام ہے جس کی وجہ سے ہمارے آسمان پر جانے پر پابندی لگا دی گئی ہے۔لہٰذا یہ جماعت اسی وقت آپ پر ایمان لے آئی اور جاکر اپنی قوم کو بھی تبلیغ کرنے لگی۔ ( بخاری،مسلم)
فرمان الٰہی ہے : اور (جنوں نے کہا)ہم نے آسمان کو ٹٹول کر دیکھا تو اسے سخت پہرے داروں اور شعلوں سےبھرا ہوا پایا اوریہ کہ ہم(باتیں ) سننے کے لئے اس (آسمان ) میں جگہ جگہ بیٹھا کرتے تھے مگر اب جو بھی (سننے کے لئے) کان لگاتا ہے تو وہ اپنے لئے گھات لگائے ہوئے شعلہ کوتیار پاتا ہے اور بلا شبہ ہم نہیں جانتےکہ زمین والوں کے لئے کسی برے معاملہ کا ارادہ کیا گیا ہے یا ان کے رب نے ان کے ساتھ بھلائی کاارادہ کیاہے۔ (الجن72 : آیا ت 8 تا 10)
اللہ ربّ العالمین کے فرشتے آسمانوں پر چوکیداری کرتے ہیں تاکہ شیاطین آسمان والوں کی باتیں نہ سن سکیں۔ اب چوری چھپے جو شیاطین بھی آسمانی باتیں سننے کی کوشش کرتے ہیں تو آسمان کے ستارے شعلہ بن کر ان پرگرتے ہیں چونکہ شیطان آسمانی باتیں سن کر کاہنوں کو بتلادیا کرتے تھے اور وہ (کاہن)اپنی طرف سے جھوٹ ملا کر لوگوں کے سامنے بیان کیا کرتے تھے۔
فرمان الٰہی ہے : شیاطین اس (قرآن) کو لے کر نازل نہیں ہوئے اور نہ یہ ان کے لائق ہے اور نہ انہیں اس کی طاقت ہے بلکہ وہ تو سننے سے بھی محروم کردیئے گئے ہیں ۔ ( الشعرآء 26 : آیات 210 تا 212)
وحی الٰہی کو شیطانی دراندازی(بدگوئی) سے بالکل محفوظ کردیا گیا ہے کیونکہ شیاطین کا مقصد صرف شروفساداورشرک و بدعات کو پھیلانا ہوتا ہے، جب کہ قرآن مجید سرچشمہ ہدایت ہے اور اس کو نازل کرنےکامقصد نیکی کاحکم دینا اور برائی سے روکنا ہے۔ جب جنوں کو بھی آپ پر نازل ہونے والی وحی سننےکا موقع ملا تو وہ بھی ایمان لائے بغیر رہ نہ سکے۔
فرمان الٰہی ہے : (اے محمّد) آپ کہہ دیں کہ مجھے وحی کی گئی ہے کہ جنوں کی ایک جماعت نےاسے(قرآن کو) غور سے سنا اور کہاکہ ہم نے عجیب قرآن سنا ہے جو صحیح راہ کی طرف راہ نمائی کرتا ہے۔ ہم اس (قرآن) پر ایمان لاچکے۔ اب ہم ہرگز کسی کو بھی اپنے رب کا شریک نہ بنائیں گے۔ (الجن72:اآیات1تا 2)
آپ پر نزول وحی کے طریقے
فرمان الٰہی ہے :کسی انسان کے لئے یہ ممکن نہیں کہ وہ اللہ سے آمنے سامنے کلام کرسکے، مگر وحی کے ذریعہ سےیا پردہ کے پیچھے سے یا وہ کوئی فرشتہ بھیجتا ہے اور وہ اپنے حکم سے جو چاہتا ہے وحی کرتا ہے۔ یقینا اللہ سب سے بلند، خوب حکمت والا ہے۔ (الشوریٰ 42: آیت51)
آپ پرحسب ذیل طریقوں سے وحی نازل ہوئی :
فرشتہ انسانی شکل اختیار کرکے آپ کو مخاطب کرتا پھر جو کچھ وہ کہتا آپ اُسے یاد کرلیتے۔
کبھی صحابہ کرام ؓ بھی فرشتہ کو دیکھتے تھے۔
کبھی آپ فرشتے کو اُس کی اصل حالت میں دیکھتے۔ اسی حالت میں وہ اﷲتعالیٰ کے حکم سےآپپروحی نازل کرتا۔اصلی صورت میں صرف دو مرتبہ دیکھا۔ چند دن وحی موقوف رہنے کے بعد جب دوبارہ وحی کا نزول ہوا ،معراج کے موقع پر۔(بخاری)
کبھی آپ کے پاس وحی گھنٹی کی آواز(ٹن ٹنانے) کی صورت میں آتی۔ وحی کی یہ صورت سب سے سخت ہوتی۔ جب فرشتہ آپ سے ملتا اور وحی آتی تو سخت سردی کے موسم میں بھی آپ کی پیشانی پرپسینہ آجاتا تھا۔ آپ اونٹنی پر سوار ہوتے تو وہ بوجھ کی وجہ سے زمین پر بیٹھ جاتی۔
براہ راست اﷲسبحانہٗ و تعالیٰ نے پردہ کے پیچھے سے آپ سے گفتگو فرمائی جیسے معراج کی رات میں نمازاورسورہ بقرہ کی آخری(2) آیات کا تحفہ دیااور شرک نہ کرنے والے کے لئے مغفرت کا وعدہ کیا۔(بخاری)
کبھی آپ پرسچے خواب کی صورت میں وحی نازل ہوتی۔ آپ جو کچھ خواب میں دیکھتے وہ صبح آپکے سامنے آجاتا۔
فرشتہ آپ کودکھائی دئیے بغیر آپ کے دل میں بات ڈال دیتا تھا۔
اللہم صل علی محمّد وعلی آل محمّد، کما صلیت علی ابراہیم وعلی آل ابراہیم انک حمیدمجید،
اللہم بارک علی محمّد وعلی آل محمّد کما بارکت علی ابراہیم وعلی آل ابراہیم انک حمید مجید

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

Pak Islamic Library

Authentic Islamic Books

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Urdu Islamic Books

islamic books in urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.wordpress.com

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Contact Us: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

creating happiness everyday

an artist's blog to document her creativity, and everyday aesthetics

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

I am woman, hear me roar

This blog contains the feminist point of view on anything and everything.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

%d bloggers like this: