مختصر حالات امام ابو جعفر طحاوی


سلسلۂ نسب :

ابوجعفر احمد بن محمد بن سلامہ بن سلمہ بن عبدالملک بن سلمہ بن سلیم بن سلیمان بن جواب الازدی الطحاوی۔

صحراۓ مصر کی ایک بستی کی طرف منسوب ہونے کی وجہ سے طحاوی نام سے مشہور ہوئے۔آپ سن ۲۳۹ میں پیدا ہوئے۔

سن بلوغ کو پہنچے تو تحصیل علم کے لیے مصر منتقل ہوئے۔ ابتداء میں  اسماعیل بن یحیٰ المازنی سے علم حاصل کیا۔جیسے ہی علم میں وسعت پیدا ہوتی گئ ویسے ہی مسائل فقہ میں انہماک بڑھتا گیا ، امام صاحب نے قریب تین سو شیوخ واساتذہ سے کسب فیض اور تربیت علم و عمل پائی۔
      مصر میں موجود اور نو وارد تمام علماء کی خدمت میں جا پہنچتے اور تبادلۂ خیال کرتے۔                     
 علامہ بن یونس آپ کے بارے میں لکھتے ہیں:
امام طحاوی ثقہ ، جید ، عالم فقیہ اور ایسے دانشمند انسان تھے کہ ان کی مثال نہیں۔
      علامہ ذہبی فرماتے ہیں :
امام طحاوی بہت بڑے فقیہ ، محدث ، حافظ ، معروف شخصیت ، ثقّہ راوی ، جید عالم اور زیرک انسان تھے۔
      امام طحاویؒ امام ابوحنیفہؒ کے طرز استدلال سے بہت زیادہ متاثر تھے اس لیے عمر بھر مسلک حنفی کی نشر و اشاعت کرتےرہے،اسی بنا پر آپ کو حنفی مسلک کا بہت بڑا وکیل سمجھا جاتا تھا۔

                        تصانیف

العقیدۃ الطحاویہ ، معانی الاثار ، مشکل الاثار ، احکام القران ، المختصر ، الشروط ، شرح الجامع الکبیر ، شرح الجامع الصغیر ، النوادر الفقہیہ ، الرد علی ابی عبید الرد علی عیسی بن ابان۔
ذی القعدۃ ۳۲۱ بروز جمعرات آپ نے وفات پائ ،اورقرافہ نامی بستی میں دفن کیے گیے ، رحمۃ اللہ رحمۃ واسعۃ
Advertisements

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: