آیئے اور خسارے سے بچیئے:01

خسارہ

اﷲ رب العزت نے قرآن مجید میں یہ حقیقت پوری طرح واضح فرمائی ہے کہ دنیا میں اس کے احکامات کی پاسداری کا نتیجہ ابدی سعادت ہے۔ اس کے برعکس، ہدایات الٰہی سے روگردانی انسان کی زندگی کو تلخ بنا دیتی ہے ۔ اﷲ احکم الحاکمین نے قرآن مجید میں بارہا مقامات پرانسان کو خسارے کے اسباب اور نقصانات سے آگاہ فرمایا ہے پھر اس پرمستزادانسان کو اس خسارے سے محفوظ رہنے کے ذرائع کےبارے میں بھی مطلع کیا ہے۔ درج ذیل سطور میں اختصار کے ساتھ خسارے کے حقیقی اسباب، نتائج اور اس سےبچنےکےطریقےقلمبندکئے گئے ہیں ۔

خسارے کی حقیقت

          خسارہ عربی زبان کا لفظ ہے جس کا مادہ خ،س،ر ہے جو کہ اپنے معنی کے اعتبار سے نقصان، گھاٹے وغیرہ پر منطبق ہوتا ہے۔حقیقت میں خسارہ دنیا میں انعامات سے محرومی نہیں بلکہ آخرت میں جنت الفردوس کے حصول میں ناکامی، دیدار الٰہی سے محرومی اصل خسارہ اورنقصان ہے۔فرمان ربانی ہے:                       
فَمَنْ زُحْزِحَ عَنِ النَّارِ وَاُدْخِلَ الْجَنَّۃَ فَقَدْ فَازَ                  ’’جو (خوش قسمت) آگ سے بچایا گیا جنت میں داخل کر دیا گیا حقیقت میں کامیاب وہی ہے۔‘‘ (آل عمران185)

خسارہ کے اسباب

اﷲ کی ذات ،صفات ، افعال میں کسی بھی چیز کو شریک کرنا شرک کہلاتا ہے اور شرک ہی انسان کے لئے دنیا و آخرت میں خسارےکابنیادی سبب ہے جیسا کہ ارشاد رب العالمین ہے:
وَلَقَدْ أُوحِیَ إِلَیْْکَ وَإِلَی الَّذِیْنَ مِنْ قَبْلِکَ لَئِنْ أَشْرَکْتَ لَیَحْبَطَنَّ عَمَلُکَ وَلَتَکُونَنَّ مِنَ الْخَاسِرِیْنَ
اور بلا شبہ آپ کی طرف اور ان لوگوں کی طرف ، جو آپ سے پہلے ہوئے (یہ) وحی کی گئی کہ اگر آپ نے شرک کیا تو آپ
کے اعمال ضرور ضائع ہو جائیں گے اور آپ ضرور خسارہ اٹھانے والوں میں سے ہو جائیں گے۔‘‘
(زمر65)
امام ابن کثیر ؒ فرماتے ہیں کہ یہ (خسارہ)اس لئے ہے کہ شرک سے آدمی کے نیک عمل ختم ہو جاتے ہیں اور اس کی زندگی تلخ ہو جاتی ہے۔‘‘
قیامت ایک اٹل حقیقت ہے۔ روز حشر رب تعالیٰ کے حضور پیشی کا یقین رکھنا لازمی امر ہے لیکن جو لوگ اﷲ سے ملاقات اور حشر کے قیام کے منکر ہیں وہ نقصان اور خسارہ پانے والے ہیں جیسا کہ ارشاد ربانی ہے:
قَدْ خَسِرَ الَّذِیْنَ کَذَّبُواْ بِلِقَاء اللّہِ حَتَّی إِذَا جَاء تْہُمُ السَّاعَۃُ بَغْتَۃً قَالُواْ یَا حَسْرَتَنَا عَلَی مَا فَرَّطْنَا فِیْہَا وَہُمْ یَحْمِلُونَ أَوْزَارَہُمْ عَلَی ظُہُورِہِمْ أَلاَ سَاء مَا یَزِرُونَ
بیشک وہ لوگ خسارے میں رہے جنہوں نے اﷲ سے ملاقات کو جھٹلایا حتی کہ جب انکے پاس قیامت اچانک آ جائے گی تو وہ کہیں گے
’’ہائےافسوس !ہم سے اس معاملے میں کیسی کوتاہی ہوئی ! اور اپنے بوجھ اپنی پیٹھ پر اٹھائے ہوئے ہوں گے۔‘‘ (انعام31)
الشیخ عبد الرحمٰن بن ناصر السعدی اس آیت کی تفسیر میں فرماتے ہیں کہ جو شخص اﷲ کے ساتھ ملاقات کا انکاری ہے وہ خائب وخاسراورہرقسم کی بھلائی سے محروم ہے۔
یادرکھئے ! قیامت کی تکذیب آدمی کو محرمات کے ارتکاب پر اکساتی ہے اور ہلاکت کا موجب بنے والے اعمال کرنے پر آمادہ کرتی ہے۔
کفر و ارتداد اور اسلام سے روگردانی
انسان اگر کفرو ارتداد کا راستہ اختیار اور اسلام سے اعراض اور پہلو تہی کرے تو یہ قبیح عمل بھی خسارے اور نقصان فی الدارین کا موجب
ہے، جیسا کہ اس امر کی وضاحت اس آیت میں ہے :
الَّذِیْنَ آتَیْْنَاہُمُ الْکِتَابَ یَتْلُونَہُ حَقَّ تِلاَوَتِہِ أُوْلَـئِکَ یُؤْمِنُونَ بِہِ وَمن یَکْفُرْ بِہِ فَأُوْلَـئِکَ ہُمُ الْخَاسِرُونَ
’’جن لوگوں کو ہم نے کتاب دی وہ اس کی تلاوت کرتے ہیں جس طرح اس کی تلاوت کا حق ہے وہی لوگ اس پر ایمان لاتے ہیں اور جو اس کو نہیں مانتے وہی (حقیقت میں)خسارہ پانے والے ہیں ۔‘‘ (البقرہ121)
دوسرے مقام پر ارشاد رب العالمین ہے:
وَمَن یَکْفُرْ بِالإِیْمَانِ فَقَدْ حَبِطَ عَمَلُہُ وَہُوَ فِیْ الآخِرَۃِ مِنَ الْخَاسِرِیْنَ
جو شخص ایمان کا انکار کرتا ہے اس کے اعمال ضائع ہو گئے (جبکہ) روز قیامت وہ خسارہ پانے والوں میں سے ہو گا۔‘‘ (المائدہ5)
الشیخ عبدالرحمن بن ناصر السعدی فرماتے ہیں کہ ان کا شمار ان لوگوں میں ہو گا جو قیامت کے روز اپنی جان، مال اور اپنے اہل و عیال کےبارے میں سخت خسارہ میں ہوں گے اور ابدی بدبختی ان کا نصیب، جبکہ جنت سے محرومی ان کا مقدر ہو گی۔
شیطان انسان کا ازلی و ابدی دشمن ہے جس کی عداوت اظہر من الشمس ہے مگر افسوس کہ مسلمان زیادہ تر اسی شیطان کو ہی اپنا دوست بناتاہے اس کے کہنے پر برے اعمال انجام دیتا ہے بالآخر یہی روش انسان کو خاسرین کی صف میں لے جاتی ہے ۔ رب العزت کا فرمان ذیشان ہے :
وَمَن یَتَّخِذِ الشَّیْْطَانَ وَلِیّاً مِّن دُونِ اللّہِ فَقَدْ خَسِرَ خُسْرَاناً مُّبِیْناً
اور جو شخص اﷲ کو چھوڑ کر شیطان کو اپنا دوست بنا لے تو وہ یقیناً کھلے نقصان میں جا پڑا۔‘‘ (النساء119)
الشیخ السعدی فرماتے ہیں ’’جو بد بخت دین و دنیا کے خسارے میں پڑ جائے اور جسے اس کے گناہ ہلاک کر کے رکھ دیں اس سے زیادہ واضح اوربڑا خسارہ کیا ہوسکتا ہے وہ ہمیشہ رہنے والی جنت کی نعمتوں سے محروم ہو کر بدنصیبی میں مبتلا ہو گئے۔ اس کی غماضی یہ آیت کرتی ہے:
اسْتَحْوَذَ عَلَیْْہِمُ الشَّیْْطَانُ فَأَنسَاہُمْ ذِکْرَ اللَّہِ أُوْلَئِکَ حِزْبُ الشَّیْْطَانِ أَلَا إِنَّ حِزْبَ الشَّیْْطَانِ ہُمُ الْخَاسِرُونَ
’’ان پر شیطان غالب آ گیا ہے پھر اس نے انہیں اﷲ کے ذکر سے غافل کر دیا یہ لوگ شیطان کے گروہ ہیں خبردار! یاد رکھئے کہ شیطانی گروہ ہی خسارہ پانے والا ہے۔‘‘ (المجادلہ19)
اﷲ تعالیٰ کے وعدوں پر یقین نہ رکھنا اور بد ظنی سے کام لینا بھی خسارے کا باعث اور نقصان فی الدارین کا موجب ہے اﷲ رب العزت کافرمان ہے :
وَذَلِکُمْ ظَنُّکُمُ الَّذِیْ ظَنَنتُم بِرَبِّکُمْ أَرْدَاکُمْ فَأَصْبَحْتُم مِّنْ الْخَاسِرِیْنَ
’’اور تمہارا یہی(برا) گمان جو تم نے اپنے رب کے بارے میں کیا ، اسی نے تمہیں ہلاک کیا چنانچہ تم خسارہ پانے والوں میں سےہوگئے۔‘‘(حم السجدہ23)
سیدنا حسنؒ اس آیت کی تفسیر میں فرماتے ہیں کہ ’’خبردار ! لوگ اﷲ پر اپنے گمان کے مطابق اعمال کرتے ہیں مومن و موحد آدمی کا اﷲ
کے ساتھ گمان اچھا ہوتا ہے۔ اس لئے وہ اعمال صالحہ میں سبقت لے جاتا ہے اور کافر و منافق چونکہ رب اﷲ تعالی کے ساتھ بد ظن ہوتے ہیں اس لئے بد عملی کے عادی ہیں ۔‘‘
اﷲ کے ساتھ کئے گئے وعدوں کی پاسداری نہ کرنا انسان کو عظیم خسارہ سے دوچار کر دیتا ہے ۔ فرمان رب العزت ہے:
الَّذِیْنَ یَنقُضُونَ عَہْدَ اللَّہِ مِن بَعْدِ مِیْثَاقِہِ وَیَقْطَعُونَ مَا أَمَرَ اللَّہُ بِہِ أَن یُوصَلَ وَیُفْسِدُونَ فِیْ الأَرْضِ أُولَـئِکَ ہُمُ الْخَاسِرُونَ
’’جو لوگ اﷲ کا عہد پکا کر لینے کے بعد اسے توڑتے ہیں اور جن (رشتوں ) کو اﷲ نے جوڑنے کا حکم دیا ہے انہیں کاٹتے ہیں اور زمین پرفسادکرتے ہیں وہی لوگ خسارہ اٹھانے والے ہیں ۔‘‘ (البقرہ27)
تفسیر سعدی میں ہے کہ ’’اﷲ تعالیٰ نے فاسقوں کا وصف بیان کیا ہے کہ وہ اﷲ کے عہد کو پختہ کرنے کے بعد توڑ دیتے ہیں آیت میں عہدکالفظ عام ہے اس سے مراد وہ عہد بھی ہے جو ان کے اور انکے رب کے درمیان ہے اور اس کا اطلاق اس عہد پر بھی ہوتا ہے جو کہ انسان ایک دوسرے کے ساتھ کرتے ہیں اﷲ رب العزت نے اپنا ایفائے عہد کی سخت تلقین فرمائی، مگر کافر لوگ ان وعدوں کی پرواہ نہیں کرتےان کو توڑتے اور حکم الٰہی سے اعراض کرتے، گمراہی و معاصی کے مرتکب ہوتے ہیں اور آپس کے معاہدوں کا پاس نہیں رکھتے۔
اﷲ تبارک و تعالیٰ نافرمان لوگوں کے ساتھ اپنی تدبیر سے انتقام لیتا ہے مگر کچھ بدبخت لوگ پھر بھی تدبیر الٰہی سے بے خوف رہتے ہیں اوررب تعالیٰ کے انتقام سے بچنے کا ذریعہ (احکامات الٰہی پر عمل کرنا) اختیار نہیں کرتے۔ باری تعالیٰ نے ایسے ظالم لوگوں کو نقصان اٹھانےوالے قرار دیا ہے۔ جیسا کہ قرآن مجید میں ارشاد رب العزت ہے:
 اَفَاَمِنُوْا مَکْرَ اللّٰہِج فَلاَ یَاْمَنُ مَکْرَ اللّٰہِ اِلَّا الْقَوْمُ الْخٰسِرُوْنَ
’’ کیا وہ پھر اﷲ کی تدبیر سے بے خوف ہو گئے ؟ اﷲ کی تدبیر سے بے خوف تو وہی لوگ ہوتے ہیں جو خسارہ پانے والے ہوں ۔‘‘ (الاعراف۹۹)
دنیا ایک مسافر خانہ، مومن آدمی اس میں دل لگا کر اپنی اصل منزل ( آخرت ) کو بھولتا نہیں ہے ۔ مگر چند قابل ترس لوگ ایسے بھی ہیں جنہوں نے دنیاوی معاملات (مال و دولت اور آل و اولاد) میں مشغول ہو کر اپنے حقیقی مقصد کو بھلا دیا ہے۔ یہی لوگ درحقیقت نقصان سے دوچار ہوں گے۔ قرآن مجید نے اس حقیقت کا اظہار کرتے ہوئے فرمایا:
یَا أَیُّہَا الَّذِیْنَ آمَنُوا لَا تُلْہِکُمْ أَمْوَالُکُمْ وَلَا أَوْلَادُکُمْ عَن ذِکْرِ اللَّہِ وَمَن یَفْعَلْ ذَلِکَ فَأُوْلَئِکَ ہُمُ الْخَاسِرُونَ
’’اے ایمان والو ! تمہارا مال اور تمہاری اولادیں تمہیں اﷲ کے ذکر سے غافل نہ کر دیں اور جو ایسا کریں گے تو وہی لوگ خسارہ پانےوالےہیں ۔‘‘ (المنافقون9)
اس آیت میں اﷲ تعالیٰ نے اپنے مومن بندوں کو کثرت سے اپنا ذکر کا حکم دیا ہے اور اس بات سے منع فرمایا ہے کہ مال و اولاد میں ہی مشغول ہو کر نہ رہ جائیں ۔یاد رکھئے جو شخص دنیا کی زندگی اور زیب و زینت ہی کو اپنا مطمع نظر بنانے اور اپنے خالق کی اطاعت اور اس کےذکر سے غافل ہو جائے تو ان کا شمار ان خسارہ پانے والوں میں ہو گا جو قیامت کے دن اپنے آپ کو اور اپنے اہل و عیال کو بھی نقصان وخسارے میں مبتلا کر دیں گے۔

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

Pak Islamic Library

Authentic Islamic Books

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Urdu Islamic Books

islamic books in urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.wordpress.com

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Contact Us: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

creating happiness everyday

an artist's blog to document her creativity, and everyday aesthetics

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

I am woman, hear me roar

This blog contains the feminist point of view on anything and everything.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

%d bloggers like this: