نفل عمرے اور حج ادا کرنے والوں کے نام:ایک کھلا خط:03

کیا یہ ممکن نہیں کہ آپ اپنے نفل عمرے کی کمائی ان بے شمار اُردو اخباروں اور رسائل پر لگا دیں جو اس زبان کو زندہ رکھنے کی کاوش میں لگے ہوئے ہیں؟
یا ان اُردو اسکولوں کی بقا پر لگا دیں جو صرف اُردو زبان کے لئے نہیں بلکہ اُردو زبان سے وابستہ ایک پورےدین،کلچر،تہذیب اور تاریخ کی بقا کے لئے جنگ لڑ رہے ہیں۔
کیا آپ جانتے ہیں کہ آپ کے شہروں کے باہر اضلاع میں ہزاروں یتیم غیر قوم کے دوسرے یتیم خانوں میں پل رہےہیں اور غیر مذہب میں جذب ہو رہے ہیں؟
کیا ایک ایک فرد گاؤں اور دیہات میں یتیم خانے کی پوری ذمہ داری نہیں لے سکتا؟
کیا آپ نے وہ حدیث نہیں سنی کہ کسی یتیم کی پرورش کرنے والا قیامت میں میرے ساتھ اس طرح قریب ہوگاجیسےدوجُڑی ہوئی اُنگلیاں ہوتی ہیں؟
آپ پوری انسانیت کی فلاح کے لئے پیدا ہوئے تھے لیکن افسوس آپ کا وقت آپ کا چندہ اور آپ کی توانائیاں صرف مسلمانوں کے لئے ہیں۔ اس لئے دوسری قومیں آپ کوانسانیت کا ہمدرد نہیں سمجھتیں۔ کیا آپ انسانیت کے لئے یہ نہیں کرسکتے کہ کوئی شخص leprosy سنٹر کھول لے۔ کوئی TB یا AIDS کے لئے اپنا پیسہ وقف کر دے اور آپ بھی دوسری قوموں کو فائدہ پہنچائیں؟ کیا دوسری قوموں کے بے شمار اداروں سے مسلمان فائدہ نہیں اُٹھاتے؟ہزاروں لڑکیاں جوڑےجہیز کی مجبوری کی وجہ سے غیر مذہب میں شادیاں کر رہی ہیں یا ان کے یہاں نوکریاں کر رہی ہیں اور بے شمارایسی ہیں جو جسم بیچنے پر مجبورہیں۔ ہزاروں ایسی ہیں جو بے سہارا ہیں۔ شوہر چھوڑ کر بھاگ گئے ہیں یا ناکارہ ہیں۔ان کے ہزاروں بچے تعلیم سے محروم ہیں اور چور اُچکے بن رہے ہیں ۔
کیا آپ اپنے نفل عمرے اور حج کی رقوم سے ایسے سنٹر قائم نہیں کر سکتے جہاں ایسی بے سہارا عورتوں اور ان کے بچوں کوسہارا دیا جا سکے؟
کون نہیں جانتا کہ جوڑا یا جہیز چاہے خوشی سے دیا جائے یا مطالبے پر، دونوں صورتوں میں حرام ہے۔ شادی کے دن کاکھاناجس کا خرچ لڑکی والوں پر ڈال دیا جاتا ہے یہ سب حرام ہیں۔لیکن لوگ جانتے بوجھتے اپنے فائدے کے لئے منافقت کرتے ہیں اور ان چیزوں کو جائز کر لیتے ہیں۔
ایک عمرے کی رقم میں کم سے کم پانچ ہزار کی تعداد میں ایک کتاب شائع ہو سکتی ہے جس کے ذریعے ان حرام کاموں سے لوگوں کو آگاہ کر کے رائے عامہ کو ہموار کیا جا سکتا ہے۔
کیا آپ اپنے نفل عمروں اور حج کی رقموں کو ان قابل طلباء کے لئے وقف نہیں کر سکتے جن کے اندر بہترین تقریری اورتحریری صلاحیتیں ہیں جو غیر مسلموں میں جا کر سمینار یا ڈائیلاگ یا DEBATE کے ذریعے اسلام کے تعلق سے جو غلط فہمیاں ان کے ذہنوں میں بٹھا دی گئی ہیں اُن کو دور کر سکتے ہیں؟
یہی تو ہندو کر رہا ہے۔ یہی تو امریکہ اور اسرائیل کرتے ہیں۔کیا آپ اُن کتابوں کو سندھی، انگریزی ، عربی، پنجابی وغیرہ میں ترجمے کروا کے زندہ نہیں کر سکتے جو ہزاروں کی تعداد میں آج اُردو میں ہونے کی وجہ سے ختم ہو رہی ہیں اورانکےساتھ ہی آپ کے دین کا اور تاریخ و ادب کا ایک عظیم سرمایہ ختم ہی نہیں بلکہ نیست و نابود ہو رہا ہے؟
صرف ایک نفل عمرے یا حج کی قیمت میں کم سے کم دو کتابیں شائع ہوسکتی ہیں جو جب تک پڑھی جاتی رہیں گی آپکےلئےنیکیاں لکھی جاتی رہیں گی۔ کتنے ایسے بے گناہ معصوم نوجوان ہیں جن کو دہشت گردی کے جرم میں مہینوں بلکہ
سالوں سے جیلوں میں بند کر دیا گیا ہے اور جو اپنے خاندانوں کے واحد کمانے والے ہیں۔ اِن کو آزاد کروانا قُرآن کےالفاظ میں ’گردنوں کو چُھڑانے ‘ کی تعریف میں داخل ہے۔ ایک ایک نفل عمرے یا حج کی قیمت میں ایک ایک خاندان مصیبت سے آزاد ہو سکتا ہے۔
اگر آپ اِن کاموں میں سے کسی کام کو بھی ضروری نہیں سمجھتے کوئی بات نہیں لیکن اُس کام کو تو شروع کر سکتے ہیں جوآپ ہی کے ذہن میں سب سے زیادہ اہم ہے اور جس سے امت کا فائدہ ہو سکتا ہے؟ اس طرح کسی کا ذہن دینی میدان میں تو کسی کا تعلیمی میدان میں کسی کا ادبی میدان میں تو کسی کا اور کسی میدان میں کام کرے گا۔
اس طرح پاکستا ن سے ہر سال ہزاروں نفل عمرہ اور حج پر جانے والوں کا ایک ایک لاکھ روپیہ اگر مختلف اجتماعی ترقی کےکاموں پر لگنا شروع ہو جائے تو ان شاء اللہ آئندہ 10 تا 15 سال میں اس امت کا اخلاقی معاشی دینی و سیاسی نقشہ بدل جائے گا۔

نفل حج / عمرہ اور سعودی عرب کے مقیمین

اب آئیے اُن داخلی حاجیوں پر گفتگو ہو جائے جو مملکتِ سعودی عرب کے مختلف حصّوں سے ہر دو چار سال بعد معلّمین کوکم سے کم دو ہزار ریال فی کس دے کر چلے آتے ہیں ۔
جہاں تک سال کے دوسرے مہینوں میں عمرے کرنے کا سوال ہے اس میں کوئی مضائقہ نہیں لیکن جہاں تک پیسہ خرچ کرکے حج پر آ کے دوسرے حاجیوں کے لئے مسائل کھڑے کرنے کا سوال ہے اُن پر بھی وہی اخلاقی ذمہ داری ہےجوہندوپاک سے نفل عمروں اور حج پر آنے والوں پر ہے کہ وہ دوسروں کے لئے رکاوٹ نہ بنیں۔
سعودی حکومت حج کے شاندار انتظامات کے معاملے میں اپنا ریکارڈ رکھتی ہے اس کے باوجود اژدھام کی وجہ سے ہر سال بے شمار جانیں حادثات کی نذر ہو جاتی ہیں۔اتنے لاکھ حاجیوں کا انتظام کوئی معمولی کارنامہ نہیں لیکن اگر لوگ تعاون نہ کریں تو حادثات ہی نہیں بلکہ رہائش، بلدیہ، ٹریفک وغیرہ کے مسائل کو بھی قابو میں نہیں کیا جاسکتا۔
حکومتِ سعودی عرب ہر سال کوشش کرتی ہے کہ پہلی بار عمرہ یا حج کرنے والوں کو پہلے موقع ملے۔ لیکن نفل حج اورعمرے والے دوسروں کے لئے تکلیف کا باعث بن جاتے ہیں اورا ِتنی بھیڑ کر دیتے ہیں کہ خود کو بھی اور دوسروں کوبھی  عبادت کے صحیح لطف سے محروم کر ڈالتے ہیں۔ حیرت تو اُن اقامہ ہولڈر حاجیوں پر ہوتی ہے جو سعودی قانون سے واقف ہیں لیکن قانون توڑنے کو وطیرہ بنا رکھا ہے۔
کیا ایسے حاجی اور ان کی مدد کرنے والے معلّمین جو انہیں بغیر تصریح کے حج کرنے میں مدد کرتے ہیں قیامت میں اللہ تعالیٰ کے نزدیک قانون شکن نہیں ہیں؟ ہمیں کئی ایسے خود ساختہ مفتی اور عالم ملے جو حج کرنے کے لیے ملکی قانون کوتوڑناجائز سمجھتے ہیں۔ حالانکہ یہ ضرور پیشِ نظر رہنا چاہئے کہ سعودی علماء کبھی ایسا قانون جاری ہونے نہیں دیتےجوشریعت کے خلاف ہو۔ لوگوں کو چاہئے کہ قانون کا احترام کریں۔
یاد رکھئے اگر نفل حج اور عمروں کی کثرت کا عمل رسول اللہ (ﷺ) کو محبوب ہوتا تو سیرتِ رسول (ﷺ) اور سیرتِ صحابہ (ؓ ) اس کے ذکر سے بھری ہوتیں۔
رسول اللہ (ﷺ) نے ایسے کئی اعمال کی تلقین فرمائی جن کا کرنا نفل حج یا عمرہ ہی کے برابر ہے جیسے کسی غلام کوآزادکروانا، کسی مصیبت زدہ کو مصیبت سے باہر نکالنا۔
ایک موقع ایسا بھی آیا جب ایک صحابی (ؓ) نے اصرار کے ساتھ پوچھنا شروع کیا کہ : کیا ہر سال حج فرض کیا گیا ہے؟
تو آپ (ﷺ) نے اُنہیں غصّے سے فرمایا : نہیں !

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

Pak Islamic Library

Authentic Islamic Books

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Urdu Islamic Books

islamic books in urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.wordpress.com

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Contact Us: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

creating happiness everyday

an artist's blog to document her creativity, and everyday aesthetics

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

I am woman, hear me roar

This blog contains the feminist point of view on anything and everything.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

%d bloggers like this: