حج کی فرضیت و فضیلت،ارکان و مسائل:06

قیامِ منیٰ :
 سیدنا انس بن مالک سے عبدالعزیز بن رفیع نےپوچھا کہ نبی سے نے ظہر اور عصر کی نمازیں آٹھویں ذوالحجہ کے دن کہاں پڑھیں ؟ تو انہوں نے کہا ”منیٰ میں “ اس شخص نے دوبارہ پوچھا کہ نفر کے دن عصر کی نماز کہاں پڑھی؟ توانہوں نے کہا ”ابطح میں “ پھر سیدنا انس ؓ نے کہا کہ تم ویسا ہی کرو جس طرح تمہارے سردار لوگ کریں ۔ (بخاری)
عبدالرحمن بن یعمر دئلی سے روایت ہے کہ میں نے رسول اﷲ کوفرماتے سنا: حج وقوف عرفہ ہے۔ جو حاجی مزدلفہ والی رات یعنی 9 اور10 ذی الحجہ کی درمیانی شب میں بھی صبح صادق سے پہلے عرفات میں پہنچ جائے تو اس نے حج پالیااوراس کا حج ہوگیا۔ منیٰ میں قیام کے تین دن میں (جن میں تینوں جمروں کی رمی کی جاتی ہے 11، 12، 13 ذی الحجہ)اگر کوئی آدمی صرف دو دن میں یعنی11، 12 ذی الحجہ کو رمی کرکے منیٰ سے چل دے تو اس میں بھی کوئی گناہ نہیں ہے۔ ( ترمذی، ابی داؤد، نسائی، ابن ماجہ،)
یومِ عرفہ :
سیدناعبداﷲ بن عمر ؓ نے عرفہ کے دن زوالِ آفتاب کے بعد حجاج کے خیمے کے قریب آکر بلند آواز دی تو حجاج نے باہرنکل کر پوچھا کہ اے ابو عبدالرحمن کیا بات ہے؟ تو انہوں نے کہا کہ اگر تو سنت کی پیروی چاہتا ہے تو تجھے اسی وقت وقوف کے لےے چلنا چاہیئے۔ حجاج نے عرض کیا کہ مجھے اتنی مہلت دیجئے کہ میں اپنے سر پر پانی ڈال لوں ۔ پھر حجاج نکلا تو چل پڑے ۔ اس موقع پر موجودسالم بن عبداﷲ ؓ نے حجاج سے کہا کہ اگر تو سنت کی پیروی چاہتا ہے تو خطبہ مختصرپڑھنااوروقوف میں عجلت کرنا تو وہ حجاج عبداﷲ بن عمر ؓ کی طرف دیکھنے لگا ۔جب عبداﷲ بن عمرنے کہا کہ سالم صحیح کہتے ہیں ۔ سیدنا اسامہ بن زید ؓ سے پوچھا گیا کہ جب رسول حجةالوداع میں عرفات سے روانہ ہوئے تو کس طرح چل رہے تھے؟ توسیدنااسامہ ؓ نے کہا کہ ہجوم میں بھی تیز تیز چل رہے تھے اور جب میدان صاف ہوتا تو اور بھی تیز چلنے لگتے۔ (بخاری
اُمُّ المومنین حضرت عائشہ صدیقہ ؓ کہتی ہیں کہ ہم مزدلفہ میں اترے تو اُمُّ المومنین سودہ ؓ نے نبی سے اجازت مانگی کہ لوگوں کے ہجوم سے پہلے چل دیں اور وہ ایک سست عورت تھیں تو آپ نے انہیں اجازت دیدی اور وہ لوگوں کےہجوم سے پہلے چل دیں اور ہم لوگ ٹھہرے رہے یہاں تک کہ صبح ہوگئی پھر ہم رسول کے ہمراہ روانہ ہوئے۔مگرمجھے اس قدر تکلیف ہوئی کہ میں تمنا کرتی تھی کہ کاش میں نے بھی رسول سے اجازت لے لی ہوتی جس طرح کہ سودہ ؓ نے لے لی تھی تو مجھے ہر خوشی کی بات سے زیادہ پسند ہوتا۔ (بخاری)
حضرت عائشہ صدیقہ ؓ سے روایت ہے کہ رسول نے فرمایا: کوئی دن ایسا نہیں ہے جس میں اﷲ تعالیٰ عرفہ کے دن سے زیادہ اپنے بندوں کے لئے جہنم سے آزادی اور رہائی کا فیصلہ کرتا ہو۔ اس دن اﷲ تعالیٰ اپنی صفت ر حمت کے ساتھ عرفات میں جمع ہونے والے اپنے بندوں کے بہت ہی قریب ہوجاتا ہے اور ان پر فخر کرتے ہوئے فرشتوں سےکہتا ہےکہ دیکھتے ہو!میرے یہ بندے کس مقصد سے یہاں آئے ہیں ؟(صحیح مسلم) تابعی حضرت طلحہ بن عبید اﷲ کریز سے روایت ہےکہ رسول نے فرمایا کہ: شیطان کسی دن بھی اتنا ذلیل خوار، پھٹکارا ہوا اورجلا بھنا ہوا نہیں دیکھا گیا جتنا وہ عرفہ
کے دن دیکھا جاتا ہے۔ ایسا صرف اس لئے ہے کہ وہ اس دن رحمتِ الٰہی کوبرستے ہوئے اور بڑے بڑے گناہوں کی معافی کا فیصلہ ہوتے دیکھتا ہے ۔(موطا امام مالک)
وقوف ِمزدلفہ :
 سیدنا عبداﷲ بن مسعود ؓ سے روایت ہے کہ وہ سب لوگوں کے ہمراہ مزدلفہ گئے اور ہم نے مغرب اور عشاءکی نمازیں ایک ساتھ پڑھیں ۔ ہر نماز کے صرف فرض پڑھے اذان و اقامت کے ساتھ اور دونوں نمازوں کے درمیان کھانا کھایا اس
کے بعد جب صبح کا آغاز ہوا تو فوراً فجر کی نماز پڑھ لی۔ نماز سے فراغت پانے کے بعد سیدنا عبداﷲ بن مسعود
ؓ نے کہا کہ بے شک رسول نے فرمایا ہے کہ یہ دونوں نمازیں اس مقام یعنی مزدلفہ میں اپنے وقت سے ہٹادی گئی ہیں مغرب اورعشائ۔ پس لوگوں کو چاہیئے کہ جب تک عشاء کا وقت نہ ہوجائے مزدلفہ میں نہ آئیں اور فجر کی نماز صبح صبح اسی وقت پڑھیں ۔ جب خوب سفیدی پھیل گئی تو عبداﷲ بن مسعود ؓ نے کہا کہ اگر امیر المومنین عثمان ؓ اب منیٰ کی طرف چل دیتےتو سنت کے موافق کرتے ۔چنانچہ امیر المومنین نے کوچ کردیا ۔ پھر سیدنا ابنِ مسعود ؓ برابر تلبیہ کرتے رہے اورقربانی کے دن جمرةالعقبہ کو کنکریاں ماریں ۔تب تلبیہ موقوف کردیا۔ امیر المومنین سیدنا عمر ؓ نے فجر کی نماز مزدلفہ میں پڑھی پھرٹھہرے رہے اس کے بعد فرمایا کہ مشرک لوگ جب تک آفتاب طلوع نہ ہوتا یہاں سے کُوچ نہ کرتے تھےاورثبیرنامی پہاڑ سے کہا کرتے تھے کہ اے ثبیرآفتاب کی کرنوں سے چمک جا۔بے شک نبی نے ان کی مخالفت فرمائی تھی۔ اس کے بعد سیدنا عمر ؓ نے آفتاب کے نکلنے سے پہلے ہی کوچ کردیا۔ (بخاری)
حج کی قربانی:
 سیدنا جابر بن عبداﷲ ؓ سے روایت ہے کہ انہوں نے نبی کے ہمراہ حج کیا جب کہ آپ اپنے ہمراہ قربانی لےگئےتھے اور سب صحابہ نے حج مفرد کا احرام باندھا تھا تو آپ نے ان سے فرمایا کہ تم لوگ کعبہ کا طواف اورصفامروہ کی سعی کرکے احرام سے باہر آجاؤ اور بال کتروا ڈالو پھر احرام سے باہر ہوکر ٹھہرے رہو یہاں تک کہ جب ترویہ کا دن آجائے تو تم لوگ حج کا احرام باندھ لینا اور یہ احرام جس کے ساتھ تم آئے ہو اس کو تمتع کردو تو صحابہ نےعرض کیا کہ ہم اس کو تمتع کردیں حالانکہ ہم حج کا نام لے چکے؟ تو آپ نے فرمایا جو کچھ میں تم کو حکم دیتا ہوں وہی کرو اگر میں قربانی نہ لایا ہوتا تو میں بھی ویسا ہی کرتا جس طرح تم کو حکم دیتا ہوں لیکن اب مجھ سے احرام علیحدہ نہیں ہوسکتا جب تک کہ قربانی اپنی اپنی قربان گاہ پر نہ پہنچ جائے۔ (بخاری)
سیدنا ابن عمر ؓ کہتے ہیں کہ رسول نے حجةالوداع میں عمرہ اور حج کے ساتھ تمتع فرمایا اور قربانی لائے پس ذوالحلیفہ سےقربانی اپنے ہمراہ لی اور سب سے پہلے آپ نے عمرہ کا احرام باندھا۔ اس کے بعد حج کا احرام باندھا پس اور لوگوں نےبھی نبی کے ہمراہ عمرہ اور حج کے ساتھ تمتع کیا اور ان میں سے بعض لوگ تو قربانی ساتھ لائے تھے اور بعض نہ لائے تھے۔ پس جب نبی مکہ میں تشریف لے آئے تو لوگوں سے فرمایا کہ تم میں سے جو شخص قربانی ساتھ لایا ہو وہ احرام میں جن چیزوں سے پرہیز کرتا ہے حج مکمل ہونے تک پرہیز کرے اور جو نہیں لایا اُسے چاہیئے کہ کعبہ کا طواف اورصفامروہ کی سعی کر کے بال کتر والے اور احرام کھول دے۔ اس کے بعد سات یا آٹھ ذوالحجہ کو کو صرف حج کا احرام باندھے ۔پھر حج کرے اور قربانی کرے۔ پھر جسے قربانی میسر نہ ہوتو تین روزے حج کے دنوں میں رکھے اور سات روزےاس وقت رکھے جب اپنے گھر واپس لوٹ کر جائے۔ (بخاری)
سیدنا ابو ہریرہ ؓ سے روایت ہے کہ رسول نے ایک شخص کو دیکھا کہ وہ قربانی کے جانور کو ہانک رہاہےتوآپنےفرمایا کہ اس پر سوار ہوجا۔ اس نے عرض کیا کہ یا رسول ! یہ تو قربانی کا جانور ہے اس پرکیسےسوارہوسکتا ہوں ؟ تو آپ نے فرمایا اس پر سوار ہوجاؤ۔ سیدنا مسور بن مخرمة ؓ اور مروان ؓ سے روایت ہے کہ نبی صلح حدیبیہ میں ایک ہزار سے زائد صحابہ ؓ کے ہمراہ روانہ ہوئے ۔ جب ذوالحلیفہ پہنچے تو نبی نے قربانی کےجانورکےگلے میں ہار ڈالا اور عمرہ کا احرام باندھا۔ اُمُّ المومنین حضرت عائشہ صدیقہ ؓ سے منقول ہے کہ نبینےبکریاں ، قربانی کیلئے روانہ کی تھیں ۔ ایک اور روایت میں کہ آپ بکریوں کو قلادہ پہنا کرروانہ کردیتےتھےاور حج پر نہ جانے کے باعث اپنے گھر میں بغیر احرام کے رہتے تھے۔
اُمُّ المومنین حضرت عائشہ صدیقہ ؓ فرماتی ہیں کہ میں نے قربانی کے جانوروں کے لےے ہار بنائے تھے۔(بخاری)
سیدنا عبداﷲ بن عمر ؓ منحر میں یعنی رسول کی قربانی کرنے کی جگہ پر قربانی کیا کرتے تھے۔سیدنا عبداﷲ بن عمرؓکاگزرایک ایسے شخص پر ہوا جس نے اونٹ کو نحر کرنے کے لےے بٹھا رکھا تھا تو انہوں نے کہا کہ اس کو کھڑا کرکے اس کاپیرباندھ دے پھر اس کو نحر کر کیونکہ یہی محمد کی سنت ہے۔امیر المومنین سیدنا علی ؓ کہتے ہیں کہ مجھے نبی نے حکم دیا تھا کہ میں قربانی کے جانوروں کے پاس کھڑا رہوں اور ان کی بنوائی کی اجرت میں قصاب کو گوشت یا کھال وغیرہ نہ دوں ۔ سیدناجابر بن عبداﷲ ؓ کہتے ہیں کہ ہم لوگ قربانی کا گوشت تین دن سے زیادہ نہ کھاتے تھے اور وہ بھی صرف منیٰ میں ۔ اس کے بعد نبی نے ہمیں اجازت عنایت کی اور فرمایا کہ کھاؤ اور ساتھ لے جاؤ ۔ پس ہم نے کھایا بھی اور ساتھ بھی لے کرآئے۔ (بخاری)
حضرت عبداﷲ بن قرط سے روایت ہے کہ رسول نے فرمایا: اﷲ کے نزدیک سب سے زیادہ عظمت والا دن یوم النحر(10 ذی الحجہ) ہے۔
اس کے بعد اس سے اگلا دن یوم القر(11 ذی الحجہ) کا درجہ ہے۔ اس کے بعد (یعنی 12 ذی الحجہ) اگر کی جائے تو ادا توہوجائے گی ۔ راوی بیان کرتے ہیں کہ ایک دفعہ پانچ یا چھ اونٹ کے لئے رسول کے قریب لائے گئے تو ان میں سے ہر ایک آپ کے قریب ہونے کی کوشش کرتا تھا، تاکہ پہلے اسی کو آپ ذبح کریں ۔ ( ابو داؤد)

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

Pak Islamic Library

Authentic Islamic Books

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Urdu Islamic Books

islamic books in urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.wordpress.com

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Contact Us: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

creating happiness everyday

an artist's blog to document her creativity, and everyday aesthetics

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

I am woman, hear me roar

This blog contains the feminist point of view on anything and everything.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

%d bloggers like this: