تعلیم و تعلم:

 مسلمانوں کا مزاج علمی ہے، کیوں کہ ایک تو انسان کی فطرت ہی علمی ہے اور دوسرا اسلام کی بنیاد علم پررکھی ہے۔ ’’اقرا باسم ربک‘‘ پڑھ اپنے رب کے نام پر۔ اب ’’علم آدم الاسماء ‘‘اور ’’اقرا ‘‘کا اثر سب سے زیادہ مسلمانوں پرہوا،کیوں کہ فطرت کو صحیح معنی میں اختیار کرنے کا ڈھنگ مسلمان نے انبیاء کرام علیہم السلام کی تعلیمات سےسیکھا، جس کے نتیجے میں اس کے رگ و ریشے میں علم سرایت کر گیا، یہود و نصاریٰ کیوں کہ آغاز اسلام ہی سے مسلمانوں کے بہت قریب رہے ہیں، لہٰذا انہوں نے مسلمانوں کی علم پروری اور علم دوستی کو بھانپ لیا،لہٰذاصلیبی جنگوں میں ناکامی کے بعد نشاۃ ثانیہ کا اعلان کر کے، نئی صلیبی جنگ کی تیاری شروع کر دی، جس کا نام ’’استشراق‘‘ دیا، محض دھوکہ دینے کے لیے، کیوں کہ استشراق کے اصل معنی تو مشرقی تہذیب و تمدن، ثقافت وکلچر، ادیان و تاریخ کا مطالعہ کرنا، مگر اس کے پس پردہ اسلام کے خلاف ایک نئی فکری جنگ اور یلغار کے آغاز کی تیاری تھی۔
 مغربی افراد نے استعمار کے تعاون سے اسلام کو مسلمانوں میں ضعیف کرنے کے لیے، قرآن وحدیث،تاریخ،فقہ،اصول فقہ، لغت، نحو وصرف، عقائد، افکار، تمام چیزوں کا مطالعہ شروع کر دیا، اور غرض ہدایت یا حق شناسی نہ تھا بل کہ مادیت اور استعمار کی خدمت تھی، لہٰذا غیر اہم مراجع سے باتوں کو لے کراسلام پر نقطہ چینی کی، مہم چھیڑ دی، جاحظ کی کتاب ’’الحیوان‘‘ اصفہانی کی ’’الاغانی‘‘ دمیری کی ’’الحیوان‘‘ وغیرہ سے غیر معتبر باتوں کو لے کر، اس پر تصنیف و تالیف کا آغاز کر دیا۔
 مسلمانوں سے ہنر مندی سیکھ کر، اس میں مہارت حاصل کی، اور کلیسا سے تنگ آ کر الحاد کو ہوا دی،اورپھرسرکاری سطح پر مسلمانوں سے اخذ کئے ہوئے علوم پر تجربہ کرنا شروع کر دیا، اور مسلمانوں کی ایجادات کوفروغ دےکر اپنی طرف سے کچھ اضافے کیے اور اسے اپنی ہی طرف منسوب کر دیا، اس طرح ’’صنعتی انقلاب‘‘ برپا ہوا، اب اپنی بنی ہوئی چیزوں کو فروخت کرنے کے لیے منڈیاں تلاش کرنا شروع کر دیا، تجارت و معیشت کے نام پر عالم اسلام میں قدم رنجہ ہوئے، آہستہ آہستہ منڈیوں پر چھا گئے، جب کچھ قوت محسوس ہوئی تو فوجی چھاؤنیاں بنائی، بادشاہوں کےدربار میں داخل ہو کر دخل اندازی شروع کی، اور مادیت کے دلدادہ ؤں کو اپنا ہم نوا بنا لیا، یہاں تک کہ پورے پورے ملک پر قابض ہو گئے، ہندوستان، انڈونیشا، مصر، افریقہ، سب جگہ ایسا ہی ہوا، یہاں تک کہ ملک کی زمام حکومت اپنے ہاتھ میں لے کر ’’اسلامی عدالتوں ‘‘ کو کالعدم قرار دے کر ’’انگریزی یافرانسی قوانین‘‘نافذکردیئے،مذہبی تعلیم پر پابندی لگا دی اور حکومتی سطح پر نصاب تیار کر کے مغربی افکار کو جوسراسرالحادپرمبنی تھے، کتابوں میں شامل کر دیا۔ اسی طرح مشرقی دماغ میں مغربی فکر کو جگہ دے دی، پھر کچھ مادہ پرستوں کواپنےممالک کی طرف بھیج کر اپنا دلدادہ بنا لیا، جنہوں نے مغربی کلچر اور افکار کو کامیابی کی شاہِ کلی تصورکرلیااورمغربی طرز پر مغربی تعلیم کے ادارے قائم کر دیئے، اس طرح لوگوں میں مادیت غالب آ گئی، اور روحانیت نہ ہونےکےبرابر رہ گئی، ایک مدت تک حکومت کرنے کے بعد اگر چہ مغربی طاقتیں مشرق سے بے دخل ہونےپرمجبورہوئی، مگر لوگوں کو تعلیم کے راستے ذہنی غلام کا شکار بنا کر گئی۔
 اپنی بے دخلی کے بعد عالمی جنگ اول اور ثانی کے بعد اقوام متحدہ کی بنیاد ڈال دی گئی، جس میں پوری دنیاکوجکڑکررکھ دیا گیا، اور تعلیمی، سیاسی تمام شعبوں کو اسی سے سیراب کیا جانے لگا، اسی طرح ہر ملک کا نصاب مغربیت زدہ تیار کیا گیا، جس میں مذہب کو صرف پرائیوٹ معاملہ بتایا گیا، معیشت اور دین میں تفریق کی گئی، سیاست کو دین کی ضد تصور کرائی گئی، کھیل کود کو تعلیم کا اہم جز بنا دیا گیا، آزاد اور مساوات کا راگ الاپا گیا، اور اب تو  سیکس ایجو کیشن بھی نصاب میں داخل کر دیا گیا۔ اس طرح بچہ کے ذہن کو بچپن سے جوانی تک اور جوانی سےآگے تک، ایسا درس دیا گیا کہ اللہ، رسول، دین، جنت، جہنم، عذاب، جزاء و سزا، حساب اور قیامت کوئی چیز نہیں، محض افسانے اور خیالی پلاؤ ہے، اصل یہی ہے کہ اپنے مفادکے لیے کماؤ، اپنی مرضی کے مطابق کھاؤپیواورخوب عیش اڑاؤ، اس کے علاوہ کچھ کرنے کی ضرورت نہیں۔
 مغرب نے سب کچھ کرنے کے بعد اپنے یہاں پر بڑی بڑی کالجز قائم کی اور غیر مغربیوں کو تعلیم کے لیے وہاں بلایا اور ان کی برین واشنگ کی مغربیت کو ان کے دماغوں پر مسلط کر دیا اور انہیں اس بات کے لیے تیار کیا کہ وہ قومیت اور جمہوریت کے نام پر اپنے ملکوں میں حکومت حاصل کرے اور مغربی طور و طریق کو اپنائے، اس کے لیےان کا ہر ممکن تعاون کیا جائے گا۔
خلاصہ کلام یہ ہے کہ ایک منظم پلاننگ کے ذریعہ لا دینی اور سیکولر تعلیم کو عالم اسلام پر خاص طور پر اور پورےعالم پر عام طور پر، پوری مکاری کے ساتھ مسلط کر دیا گیا، ابنائے قوم کو اس تعلیم میں اتنا مشغول کر دیا گیا کہ اس کے پاس اس کے علاوہ دینی و مذہبی تعلیم کے لیے وقت ہی نہ بچا اور بچے بیچارے چار و نا چار دینی تعلیم سے نا واقف ہوتے رہے۔ اور آج بھی ایسا ہو رہا ہے۔لہٰذا ضرورت اس بات کی ہے کہ ہر ملک کے کچھ دین دار،سمجھ دار لوگ یہ بیڑا لے کر کھڑے ہوں اور وہ نصاب میں داخل اسلام متصادم نظریات اور غیر ضروری امورکو خارج کر دیں۔ اگر یہ طاقت نہیں تو کم از کم یہ کریں کہ ان امور اور اشیاء سے مسلمان طلبہ کو متنبہ کرنےکے لیے ایک لائحہ عمل تیار کریں کہ جس میں قرآن و حدیث کی روشنی میں علما سے مکمل تعاون حاصل کرکے ایسے کتابچہ تیار کریں جس میں مسلمان طلبہ کو ان چیزوں سے اجتناب کی تلقین کی گئی ہو اور ساتھ ساتھ دین کی بنیادی اور ضروری باتوں کو آسان اور سہل انداز میں بیان کر دیا گیا ہو، تاکہ ہمارے معصوم بچے برین واشنگ سے محفوظ ہو جائے۔ امید کہ توجہ دی جائے گی۔ ہم اپنے بچوں کو پہلے مسلمان بنائیں پھر ڈاکٹر، پہلے مسلمان بنائیں پھر انجینئر، پہلے مسلمان بنائیں پھر تاجر، پہلے مسلمان بنائیں پھر سائنس داں۔ قرآن کا اعلان ہے:
’’قو انفسکم و اھلیکم نارا‘‘ اپنے آپ کو، اپنے اہل و عیال کو جہنم سے بچاؤ۔
نوٹ: تعلیم و تربیت اور ماحول سے اعداء اسلام نے بے شمار لوگوں کو متاثر کیا، ویسے بھی نفس برائی کو جلدی ہی قبول کرتا ہے، مثلاً، مصر میں رفاعہ رافع طہطاوی جس نے رقص اور مخلوط ناچ گانے کو صحیح قرار دیا، اور فرعونیت کے احیاء کی کوشش کی، اسی طرح طہٰ حسین، قاسم امین،وغیرہ نے عورت کی آزادی اور اسلام مخالف نظریات کی تائید کے لیے کتابیں لکھ ماری۔ الجزائر میں محمد اَرْکون نے قرآن پر اعتراضات کیے۔ سرسید نے قرآن و حدیث کو مغربی افکار اور آزادانہ تشریح و توضیح کے ذریعہ سمجھانے کی کوشش کی، یہ سب انہوں نے برطانیہ کے سفر کے بعد ہی کیا، اور آج بھی یہ سلسلہ جاری ہے، مصر کے حسنی مبارک، اُردن کے شاہ عبداللہ، امارات کویت، سعودی، ترکی، پاکستان، وغیرہ تمام حکمراں اور ان کی اولاد مغرب ہی تعلیم حاصل کر رہے ہیں، و یا للاسف۔ آزادی، تجدید، مساوات، سیکولرزم، موڈرنزم، قومیت، جمہوریت، اشتراکیت، وغیرہ کے فروغ میں بھی یہی لوگ کوشاں ہیں۔
1 comment
  1. لکھا تو آپ نے درست ہے لیکن آج کے جوان آپ کی بات اسلئے نہیں مانیں گے کہ جہاں کہیں مسلمان کا نام رہنے بھی دیا گیا وہاں نام کی ہیئت بدل دی گئی جیسے ابن سیناء کو ایوی سینا بنا دیا ۔ ناصر کو نازیئر بنا دیا

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

Pak Islamic Library

Authentic Islamic Books

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Urdu Islamic Books

islamic books in urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.wordpress.com

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Contact Us: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

creating happiness everyday

an artist's blog to document her creativity, and everyday aesthetics

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

I am woman, hear me roar

This blog contains the feminist point of view on anything and everything.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

%d bloggers like this: