21رمضان: یوم شہادت حضرت علی ابن ابوطالب ؓ

آپ کی کنیت ابوالحسن تھی اور حضور نبی کریم نے آپ کی کنیت ابوتراب رکھی تھی۔ آپ کی والدہ ماجدہ کا نام فاطمہ بنت اسد بن ہاشم تھا۔ آپ پہلی ہاشمیہ ہیں جو اسلام لائیں اور ہجرت فرمائی۔ حضرت علی المرتضیٰؓ عشرہ مبشرہ میں سے ہیں اوراسلامی بھائی چارہ میں حضور نبی کریم کے بھائی ہیں اور حضور نبی کریم کے داماد فاطمۃ الزہرا ؓ  کےخاونداورسب  سے پہلے نیک لوگوں میں سے تھے۔ آپ عالم ربانی اور مشہور بہادر اور بے بدل زاہد اور معروف خطیب تھے، آپ ان لوگوں میں تھے جنہوں نے قرآن پاک جمع اور حفظ کرکے رسالت پناہی میں پیش کیا پھر ابوالاسوددئلی، ابوعبدالرحمن سلمی اورعبدالرحمن بن ابویعلیٰ نے آپ ہی سے قرآن پاک سیکھا، آپ بنی ہاشم میں سب سے پہلے خلیفہ ہیں۔ آپ اسلام میں قدیم ہیں بلکہ حضرت ابن عباس ؓ، حضرت انس ؓ، حضرت زید بن ارقم ؓ اور حضرت سلمان فارسی ؓ اور بہت سےصحابہ ؓ  اس پر متفق ہیں کہ اول آپ ہی اسلام لائے اور بعض نے اس پر اجماع بھی لکھا ہے۔
ابویعلی، حضرت علی المرتضیٰؓ سے روایت کرتے ہیں کہ حضور نبی کریم دوشنبہ کے روز نبی ہوئے اور میں منگل کےدن مسلمان ہوا جس وقت آپ اسلام لائے آپ کی عمر شریف دس سال کی تھی بلکہ بعض نو بعض آٹھ اور بعض اس سےبھی کم بتاتے ہیں۔ حسن بن زید بن حسن ؓ کہتے ہیں کہ آپ نے کبھی چھوٹی عمر میں بھی بت پرستی نہیں کی۔ (ابن سعد)
جس وقت حضور نبی کریم نے مدینہ منورہ کی طرف ہجرت کا ارادہ کیا تو آپ کو حکم دیا کہ تم ہمارے بعد چند دنوں تک مکہ معظمہ میں اور قیام کرنا تاکہ جو امانتیں اور جو ودیعتیں اور وصیتیں ہمارے پاس رکھی ہیں وہ پہنچا دینا چنانچہ آپ نے ایسا ہی کیا۔ آپ تمام غزوات میں سوائے غزوۂ تبوک کے حضور نبی کریم کے ساتھ شریک ہوئے ہیں۔ حضور نبی کریم نے غزوہ تبوک میں آپ کو اپنا خلیفہ بنا کرمدینہ منورہ میں ہی چھوڑ دیا تھا۔ تمام لڑائیوں میں آپ کے بہادرانہ کارنامےاورآثارمشہور ہیں۔
حضور نبی کریم
نے بہت دفعہ لڑائیوں میں آپ کو جھنڈا عطا فرمایا اور سپہ سالار بنایا ہے۔
حضرت سعید بن مسیبؓ کہتے ہیں کہ جنگ احد میں آپ کو سولہ زخم آئے تھے۔ بخاری اور مسلم نے ثابت کیا ہے کہ جنگ خیبر میں آپ کو حضور نبی کریم نے جھنڈا عطا کیا تھا اور پیشین گوئی کی تھی کہ خیبر آپ ہی کے ہاتھ سے فتح ہوگا۔ آپ کی بہادری کے کارنامے اور قوت بازو کی مثالیں مشہور و معروف ہیں۔ آپ خوب موٹے تھے، خود کی وجہ سے سر کے بال اڑے ہوئے تھے۔ میانہ قد مائل بہ پست قوی، پیٹ کسی قدر بھاری بہت لمبی سفید داڑھی، رنگ زیادہ گندم گونی تھا، تمام جسم پربہت بال اُگے ہوئے تھے۔
حضرت جابر بن عبداﷲؓ کہتے ہیں کہ جنگ خیبر میں آپ نے اپنی پیٹھ پر قلعہ خیبر کا دروازہ اٹھا لیا اور مسلمان اس پرسوارہوکر اندر داخل ہوگئے اور خیبر کو فتح کر لیا اور آپ نے پھر اس کو پھینک دیا، جب اس کو گھسیٹ کر دوسری جگہ ڈالنےلگے تو چالیس آدمیوں نے کھینچا۔ (ابن عساکر)
ابن اسحق نے مغاری میں اور ابن عساکر نے حضرت ابورافعؓ سے روایت کیاہے کہ حضرت علی المرتضیٰؓ نے جنگ خیبر میں قلعہ خیبر کادرواز اٹھا کر بہت دیر تک ہاتھ میں رکھا اور اس سے ڈھال کا کام لیا اور جس وقت قلعہ فتح ہوگیا تو اسےپھینک دیا، لڑائی کے بعد ہم آٹھ آدمیوں نے مل کر اسے اٹھانا چاہا مگر ہم سے نہیں ہلا۔
بخاری ’’ادب‘‘ میں حضرت سہل بن سعدؓ سے روایت کرتے ہیں کہ حضرت علی المرتضیٰؓ کو اپنا نام ابوتراب بہت پسندتھا اور جب آپ کو کوئی اس نام سے آواز دیتا تھا تو آپ بہت خوش ہوتے تھے اور کیوں خوش نہ ہوتے جبکہ آقائے دوجہاں حضور نبی کریم نے آپ کو یہ لقب عنایت فرمایا تھا۔ واقعہ اس طرح ہے کہ ایک دن آپ حضرت فاطمۃ الزہرا ؓ  سےناراض ہوکر مسجد میں آکر لیٹ گئے تھے، آپ کے بدن پر کچھ مٹی لگ گئی۔ حضور نبی کریم بہ نفس نفیس مسجدمیں
تشریف لائے اور آپ کے بدن پر جو مٹی لگ گئی تھی آپ اسے جھاڑتے ہوئے فرمانے لگے، ابوتراب (مٹی کے باپ) اٹھو۔
آپ نے حضور نبی کریم سے پانچ سو چھیاسی احادیث روایت کی ہیں اور آپ سے آپ کے تینوں صاحبزادوں حضرت سیدنا امام حسن ؓ، حضرت سیدنا امام حسین ؓ، حضرت محمد ابن حنیفہ ؓ، حضرت مسعود ؓ، حضرت ابن عمر ؓ، حضرت ابن عباس ؓ، حضرت ابن زبیر ؓ، حضرت ابوموسیٰ ؓ، حضرت ابوسعید ؓ، حضرت زید بن ارقم ؓ، حضرت جابربن عبداﷲ ؓ، حضرت ابوامامہ ؓ، حضرت ابوہریرہ ؓ اور دیگر صحابہ اور تابعین ؓ  نے روایت کیاہے۔
حضرت امام احمد بن حنبلؒ فرماتے ہیں کہ جتنی احادیث سے حضرت علیؓ کی فضیلت ثابت ہوتی ہے، کسی دوسرے صحابی کی نہیں ہوتی۔ (حاکم)
بخاری، مسلم حضرت سعد بن ابی وقاصؓ سے روایت کرتے ہیں کہ جب حضور نبی کریم نے غزوہ تبوک میں آپکومدینہ منورہ میں رہنے کا حکم دیا تو آپ نے عرض کیا:یا رسول اﷲ ! کیا آپ مجھے یہاں عورتوں اور بچوں میں چھوڑ کر جا رہے ہیں۔ آپ نے فرمایا: کیا تم اس بات سے راضی نہیں ہو کہ اس طرح چھوڑے جاتا ہوں جیسے حضرت موسیٰ علیہ السلام حضرت ہارون علیہ السلام کو چھوڑکر گئے تھے، فرق صرف اتنا ہے کہ میرے بعد کوئی نبی نہیں ہے۔
بخاری، مسلم، حضرت سہل بن سعدؓ سے روایت کرتے ہیں کہ جنگ خیبر میں (جبکہ کئی دن تک فتح نہ ہو سکی) حضور نبی کریم نے فرمایا: صبح کو میں ایسے شخص کو جھنڈا دوں گا کہ جس کے ہاتھ سے اﷲ تعالیٰ اس قلعہ کو فتح کرے گا اوروہ اﷲ تعالیٰ اور اس کے رسول () سے محبت کرتا ہے اور اﷲ تعالیٰ اوراس کا رسول () اس سے محبت کرتے ہیں،رات کو جس وقت صحابہ سوئے تو غور و خوض کرتے تھے کہ دیکھئے علم کس کو عنایت ہوتا ہے، جب صبح ہوئی تو ہر شخص حضور نبی کریم کی خدمت میں حاضر ہوا اور ہر ایک کے دل میں خواہش تھی کہ شاید مجھے یہ فخرحاصل ہو الحاصل رسول اﷲ نے فرمایا: علی المرتضیٰ (ص) کہاں ہیں؟ لوگوں نے عرض کیا کہ ان کی آنکھیں دکھتی ہیں اس غرض سے تشریف نہیں لائے آپ نے فرمایا انہیں فوراً بلا لو، جس وقت آپ تشریف لائے تو حضور نبی کریم نے آپ کی آنکھوں پر اپنا لعاب دہن لگا دیا جس سے فوراً آنکھیں اچھی ہوگئیں اور پھر کبھی آپؓ کی آنکھیں نہیں دکھیں۔ اس کے بعد حضور نبی کریم نے جھنڈا آپ ہی کو عطا فرمایا ہم غور و خوض اور باتیں ہی کرتے رہ گئے۔ (اس حدیث کو طبرانی نے متعددصحابہ سے روایت کیا ہے۔)
صحیح مسلم میں حضرت سعد بن ابی وقاصؓ سے روایت ہے کہ جس وقت یہ آیت نازل ہوئی : ’’نَدْعَ اَبْنَآئَ نَاو اَبْنَآئَ کُمْ‘‘ توحضورنبی کریم نے حضرت علی المرتضیٰؓ اور حضرت فاطمۃ الزہرا ؓ  اور حضرت سیدنا امام حسن اور حضرت سیدنا امام حسین (ؓ ) کوبلا کر دعا کی: ’’الٰہی! یہ میرے گھر کے لوگ ہیں۔‘‘
ترمذی نے ابوسریحہ اور حضرت زید بن ارقمؓ سے روایت کرتے ہیں کہ حضور نبی کریم نے ارشاد فرمایا: جس کا میں محبوب ہوں، اس کے علی بھی محبوب ہیں۔
بعض راوی اتنا اور زیادہ کرتے ہیں کہ مولیٰ کریم! جو علی سے محبت رکھے، اس سے تو بھی محبت رکھ اور جو علی المرتضیٰؓ سے بغض رکھے، اس سے تو بھی بغض رکھ۔
احمد، ابوالطفیل سے روایت کرتے ہیں کہ حضرت علی المرتضیٰؓ نے ایک وسیع میدان میں لوگوں کو جمع کرکے فرمایا کہ میں تمہیں قسم دے کر پوچھتا ہوں کہ حضور نبی کریم نے غدیرخم میں میری نسبت کیا فرمایا تھا۔ تیس شخص ان میں سے کھڑے ہوئے اور انہوں نے گواہی دی کہ ہمارے سامنے حضور نبی کریم نے فرمایا: جس کا میں مولیٰ ہوں، اس کے علی بھی مولیٰ ہیں۔ مولیٰ کریم! جو علی المرتضیٰ ؓسے محبت رکھے، ان سے محبت رکھ اور حضرت علی المرتضیٰ (ص) سے جو دشمنی رکھے تو اس سے دشمنی رکھ۔
ترمذی، حاکم، حضرت بریدہؓ سے روایت کرتے ہیں کہ حضور نبی کریم نے ارشاد فرمایا: مجھے چار آدمیوں سے محبت رکھنے کا حکم دیا گیا ہے اور یہ بھی خبر دی گئی ہے کہ اﷲ تعالیٰ بھی ان سے محبت رکھتا ہے۔ لوگوں نے عرض کیا: یا رسول اﷲ ! ہمیں ان کا نام بتا دیجئے، آپ نے فرمایا: ان میں سے ایک علی ہیں اور تین آدمی ابوذر، مقداد اور سلمان فارسی (ؓ ) ہیں۔
ترمذی، نسائی اور ابن ماجہ نے حبشی بن جنادہ سے روایت کیا ہے کہ حضور نبی کریم نے فرمایا: علی المرتضیٰ ؓ مجھ سے ہیں اور میں علی ؓسے ہوں۔
ترمذی، حضرت ابن عمرؓ سے روایت کرتے ہیں کہ جب حضور نبی کریم نے صحابہ کے آپس میں مواخات یعنی بھائی چارہ کرایا تو حضرت علی المرتضیٰؓ روتے ہوئے تشریف لائے اور عرض کیا: یارسول اﷲ ! آپ نے تمام صحابہ کے درمیان مواخات کرائی مگر میں یوں ہی رہ گیا۔ حضور نبی کریم نے ارشاد فرمایا: تم دنیا اور آخرت میں میرے بھائی ہو۔
صحیح مسلم میں حضرت علی ؓسے روایت ہے کہ مجھے اس ذات کی قسم! جس نے دانہ اگایا اور جان پیدا کی، حضور نبی کریم نے مجھ سے عہد کیا ہے کہ مومن تجھ سے (علیؓ ) محبت رکھے گا اور منافق بغض رکھے گا۔ترمذی نے حضرت ابوسعیدؓ سے روایت کیا ہے کہ ہم منافق کو حضرت علی المرتضیٰؓ کے بغض سے پہچان لیتے تھے۔
ترمذی، حاکم حضرت علیؓ سے روایت کرتے ہیں کہ حضور نبی کریم نے ارشاد فرمایا: میں علم کا شہر ہوں اور علی اس کا دروزہ ہے۔
حاکم، حضرت علیؓ سے روایت کرتے ہیں کہ مجھے حضور نبی کریم نے جب یمن کی طرف بھیجنا چاہا تو میں نے عرض کیا: یارسول اﷲ ! آپ مجھے یمن بھیجتے ہیں اور میں ایک جوان شخص ہوں، نا تجربہ کار، معاملات طے کرنے نہیں جانتا،آپ نے یہ سن کر میرے سینہ میں ایک ہاتھ مارا اور فرمایا: مولیٰ کریم! اس کے دل کو روشن فرما دے اور اس کی
زبان کو استقلال عطا فرما۔ واﷲ! اس روز سے مجھے معاملات طے کرنے میں کبھی شک نہیں ہوا۔
ابن سعد، حضرت علی المرتضیٰؓ سے روایت کرتے ہیں کہ آپ سے لوگوں نے کہا: اس کی کیا وجہ کہ آپ زیادہ احادیث روایت کرتے ہیں میں نے (علیؓ نے) کہا کہ جب کبھی میں حضور نبی کریم سے دریافت کرتا تھا تو حضور نبی کریم مجھے خوب سمجھایا کرتے تھے اور جب میں خاموش رہتا تھا تو خود بتایا کرتے تھے۔
حضرت ابوہریرہؓ فرماتے ہیں کہ حضرت عمر بن خطابؓ نے فرمایا: حضرت علی المرتضیٰؓ ہم میں سب بہتر فیصلہ کنندہ ہیں۔ حضرت ابن مسعودؓ فرماتے ہیں ہم آپس میں باتیں کیا کرتے تھے کہ حضرت علی المرتضیٰؓ مدینہ منورہ میں ہم سب سے زیادہ معاملہ فہم ہیں۔
ابن سعد، حضرت ابن عباسؓ سے روایت کرتے ہیں کہ حضرت علی المرتضیٰؓ سے جب کوئی مسئلہ معتبر ذریعہ سے پہنچے تو اس کے بعد پوچھنے کی ضرورت نہیں۔
حضرت سعید بن مسیب ؓ کہتے ہیں کہ حضرت عمرؓ اﷲ سے پناہ مانگا کرتے تھے کہ کہیں ایسا معاملہ درپیش نہ ہو جس کافیصلہ حضرت علی المرتضیٰؓ بھی نہ کر سکیں۔ سعید بن مسیب ؓ کہتے ہیں کہ مدینہ منورہ میں سوائے حضرت علی المرتضیٰؓ کے کوئی ایسا نہ تھا جو یہ کہہ کر سکے کہ جو کچھ پوچھنا ہو مجھ سے پوچھ لے۔
ابن عساکر، حضرت عبداﷲ بن مسعودؓ سے روایت کرتے ہیں کہ مدینہ بھر میں حضرت علی المرتضیٰؓ سے زیادہ فرائض جاننے والا اور معاملہ فہم کوئی شخص نہیں تھا۔
حضرت عائشہ صدیقہ ؓ  سے روایت ہے کہ حضرت علی المرتضیٰؓ سے زیادہ کوئی شخص سنت کا جاننے والا نہیں ہے۔ مسروق ؓ کہتے ہیں کہ اصحاب رسول اﷲ () کا علم حضرت عمر، حضرت علی، حضرت ابن مسعود، حضرت عبداﷲ (ؓ ) پر ختم ہوگیا۔
عبداﷲ بن عیاش بن ابوربیعہ ؓ کہتے ہیں کہ حضرت علی المرتضیٰؓ کے اندر علم کی پوری پختگی اور مضبوطی تھی اور آپ حضور نبی کریم کی قرابت تقدم، اسلام، دامادی رسول اﷲ () فقہ حدیث جرأت، جنگ سخاوت مال کی وجہ سےافضل ہیں۔

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

Pak Islamic Library

Authentic Islamic Books

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Urdu Islamic Books

islamic books in urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.wordpress.com

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Contact Us: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

creating happiness everyday

an artist's blog to document her creativity, and everyday aesthetics

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

I am woman, hear me roar

This blog contains the feminist point of view on anything and everything.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

%d bloggers like this: