حضرت موسى علیہ السلام -5

دیدار پرودگار كى خواہش
قرآن میں بنى اسرائیل كى زندگى كے بعض دیگر مناظر پیش كئے گئے ہیں ۔ان میں سے ایك یہ ہے كہ بنى اسرائیل كے ایك گروہ نے حضرت موسى علیہ السلام سے بڑے اصرار كے ساتھ یہ
خواہش كى كہ وہ خدا كو دیكھیں گے۔ اگر ان كى یہ خواہش پورى نہ ہوئی تو وہ ہر گز ایمان نہ لائیں گے۔
جس وقت حضرت موسى علیہ السلام وعدہ گاہ الہى كى طرف گئے تو انہوں نے بنى اسرائیل سے یہ كہہ ركھا تھا كہ ان كى واپسی  تیس روز سے زیادہ دن طویل نہ ہوگى لیكن جب خدا نے اس پر دس دنوں كا اضافہ كردیا تو بنى اسرائیل نے كہا:موسى علیہ السلام نے اپنا وعدہ توڑ دیا اس كے نتیجہ میں انہوں نے وہ كام كئے جو ہم جانتے ہیں (یعنى گوسالہ پرستى میں مبتلا ہوگئے۔)
رہا یہ سوال كہ یہ چالیس روز یا چالیس راتیں ،اسلامى مہینوں میں سے كونسا زمانہ تھا؟ بعض روایات سے معلوم ہوتا ہے كہ یہ مدت ذیقعدہ كى پہلى تاریخ سے لے كر ذى الحجہ كى دس تاریخ تك تھی۔ قرآن میں چالیس راتوں كا ذكر ہے نہ كہ چالیس دنوں كا۔ تو شاید اس وجہ سے ہے كہ حضرت موسى علیہ السلام كى اپنے رب سے جو مناجاتیں تھیں وہ زیادہ تر رات ہى كے وقت ہوا كرتى تھیں ۔
اس كے بعد ایك اور سوال سامنے آتا ہے،وہ یہ كہ حضرت موسى علیہ السلام نے كسطرح اپنے بھائی ہارون علیہ السلام سے كہا كہ:قوم كى اصلاح كى كوشش كرنا اور مفسدوں كى پیروى نہ كرنا،جبكہ حضرت ہارون علیہ السلام ایك نبى برحق اور معصوم تھے وہ بھلا مفسدوں كى پیروى كیوں كرنے لگے؟
اس كا جواب یہ ہے كہ:یہ درحقیقت اس بات كى تاكید كے لئے تھا كہ حضرت ہارون علیہ السلام كو اپنى قوم میں اپنے مقام كى اہمیت كا احساس رہے اور شاید اس طرح سے خود بنى اسرائیل كو بھى اس بات كا احساس دلانا چاہتے تھے كہ وہ ان كى غیبت میں حضرت ہارون علیہ السلام كى رہنمائی كا اچھى طرح اثر لیں اور ان كا كہنا مانیں اور ان كے اوامر ور نواہی(احكامات)كو اپنے لئے سخت نہ سمجھیں ،اس سے اپنى تحقیر خیال نہ كریں اور انكے سامنے اس طرح مطیع و فرمانبرداررہیں جس طرح وہ خود حضرت موسى علیہ السلام كے فرمانبردار تھے۔
چنانچہ حضرت موسى علیہ السلام نے ان كے ستر آدمیوں كا انتخاب كیا اور انہیں اپنے ہمراہ پروردگار كى میعادگاہ كى طرف لے گئے، وہاں پہنچ كر ان لوگوں كى درخواست كو خدا كى بارگاہ میں پیش كیا۔ خدا كى طرف سے اس كا ایسا جواب ملا جس سے بنى اسرائیل كے لئے یہ بات اچھى طرح سے واضح ہوگئی۔
ارشاد ہوتا ہے:” جس وقت موسى ہمارى میعادگاہ میں آئے اور ان كے پروردگار نے ان سے باتیں كیں تو انہوں نے كہا:اے پروردگار خود كو مجھے دكھلادے تاكہ میں تجھے دیكھ لوں ”۔( سورہ اعراف 143)
لیكن موسى علیہ السلام نے فوراًخدا كى طرف سے یہ جواب سنا: تم ہز گز مجھے نہیں دیكھ سكتے ۔
لیكن پہاڑ كى جانب  نظر كرو اگر وہ اپنى جگہ پر ٹھہرا رہا تب مجھے دیكھ سكو گے۔  جس وقت خدا نے پہاڑ پر جلوہ كیا تو اسے فنا كردیا اور اسے زمین كے برابر كردیا۔
موسى علیہ السلام نے جب یہ ہولناك منظر دیكھا تو ایسا اضطراب لاحق ہوا كہ بے ہوش ہو كر زمین پر گرپڑے۔اور جب ہوش میں آئے تو خدا كى بارگاہ میں عرض كى پروردگاراتو منزہ ہے،میں تیرى طرف پلٹتا ہوں ،اور توبہ كرتا ہوں اور میں پہلا ہوں مومنین میں سے۔( سورہ اعراف 143)
الواح توریت
آخر كار اس عظیم میعادگاہ میں اللہ نے موسى علیہ السلام پر اپنى شریعت كے قوانین نازل فرمائے۔پہلے ان سے فرمایا:”اے موسى میں نے تمہیں لوگوں پر منتخب كیا ہے،اور تم كو اپنى رسالتیں دى ہیں ،اور تم كو اپنے ساتھ گفتگو كا شرف عطا كیا ہے”۔( سورہ اعراف144)
اب جبكہ ایسا ہے تو”جو میں نے تم كو حكم دیا ہے اسے لے لو اور ہمارے اس عطیہ پر شكر كرنے والوں میں سے ہوجائو”۔( سورہ اعراف144)
اس كے بعد اضافہ كیا گیا ہے كہ :ہم نے جو الواح موسى علیہ السلام پر نازل كى تھیں ان پر ہر موضوع كے بارے میں كافى نصیحتیں تھیں اورضرورت كے مسائل كى شرح اور بیان تھا۔
اس كے بعد ہم نے موسى علیہ السلام كو حكم دیا كہ”بڑى توجہ اور قوت ارادى كے ساتھ ان فرامین كو اختیار كرو۔”(سورہ اعراف آیت 145)اور اپنى قوم كو بھى حكم دو كہ ان میں جو بہترین ہیں انہیں اختیار كریں ۔ 

اور انہیں خبردار كردوكہ ان فرامین كى مخالفت اور ان كى اطاعت سے فرار كرنے كا نتیجہ دردناك ہے اوراس كا انجام دوزخ ہے اور ”میں جلد ہى فاسقوں كى جگہ تمہیں دكھلادوں گا۔”(سورہ اعراف آیت 145)
( یہاں پردو چیزوں كى طرف توجہ كرنا ضرورى ہے:
1۔الواح كس چیز كى بنى ہوئی تھیں :اس آیت كا ظاہر یہ ہے كہ خداوند كریم نے حضرت موسى علیہ السلام پر جو الواح نازل كى تھیں ان میں توریت كى شریعت اور قوانین لكھے ہوئے تھے ،ایسا نہ تھا كہ یہ لوحیں حضرت موسى علیہ السلام كے ہاتھ میں تھیں اور اس میں فرامین منعكس ہوگئے تھے۔ اب رہا یہ سوال كہ یہ لوحیں كیسى تھیں ؟كس چیز كى بنى ہوئی تھیں ؟ قرآن نے اس بات كى كوئی وضاحت نہیں كى ہے صرف كلمہ”الواح” سربستہ طور پر آیا ہے۔جو در اصل”لاح یلوح”كے مادہ سے ماخوذ ہے جس كے معنى ظاہر ہونے اور چمكنے كے ہیں ۔چونكہ صفحہ كے ایك طرف لكھنے سے حروف نمایاں ہوجاتے ہیں اور مطلب آشكار ہوجاتے ہیں ،اس لئے صفحہ كو جس پر كچھ لكھا جائے”لوح”كہتے ہیں ۔لیكن روایات و اقوال مفسرین میں ان الواح كى كیفیت كے بارے میں اور ان كى جنس كے بارے میں گوناگوں احتمالات ذكر كئے گئے ہیں ۔ چونكہ ان میں سے كوئی بھى یقینى نہیں ہے اس لئے ان كے ذكر سے ہم اعراض كرتے ہیں ۔
2۔كلام كیسے ہوا:قرآن كریم كى مختلف آیات سے استفادہ ہوتا ہے كہ اللہ تعالٰی نے حضرت موسى علیہ السلام سے كلام كیا،خدا كا موسى علیہ السلام سے كلام كرنا اس طرح تھا كہ اس نے صوتى امواج كو فضا میں یا كسى جسم میں پیدا كردیا تھا۔ كبھى یہ امواج صوتی”شجرہ وادى ایمن ”سے ظاہر ہوتى تھیں اور كبھی”كوہ طور” سے حضرت موسى علیہ السلام كے كان میں پہنچتى تھیں ۔ جن لوگوں نےصرف الفاظ پر نظر كى ہے اور اس پر غور نہیں كیا كہ یہ الفاظ كہاں سے نكل سكتے ہیں انہوں نے یہ خیال كیا كہ خدا كا كلام كرنا اس كے تجسم كى دلیل ہے۔حالانكہ یہ خیال بالكل بے بنیاد ہے۔)
Advertisements

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Best Urdu Books

Worlds Largest Free Online Islamic Books | Islamic Books in Urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.net

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Donate Your Books at: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

Amna Art Studio

Maker of art and artsy things, art teacher, and loud thinker

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

Pressure Cooker

Where I brew the stew to feed inner monsters...

My Blog

Just another WordPress.com site

%d bloggers like this: