اسلام كے مہاجرینِ اوۤل

پیغمبر اكرم ﷺ كى بعثت اور عمومى دعوت كے ابتدائی سالوں میں مسلمان بہت ہى كم تعداد میں تھے قریش نے قبائل عرب كو یہ نصیحت كرركھى تھى كہ ہر قبیلہ اپنے قبیلہ كے ان لوگوں پر كہ جو
پیغمبر اكرم ﷺ پر ایمان لاچكے ہیں انتہائی سخت دبائوڈالیں اور اس طرح مسلمانوں میں سے ہر كوئی اپنى قوم وقبیلہ كى طرف سے انتہائی سختى اور دبائومیں مبتلا تھا اس وقت مسلمانوں كى تعدادجہادآزادى شروع كرنے كے لئے كافى نہیں تھى ۔پیغمبراكرم ﷺ نے اس چھوٹے سے گروہ كى حفاظت اور مسلمانوں كے لئے حجاز سے باہر قیام گاہ مہیاكرنے كے لئے انہیں ہجرت كا حكم دے دیا اور اس مقصد كےلئے حبشہ كو منتخب فرمایا اور كہا كہ وہاں ایك نیك دل بادشاہ ہے جو ظلم وستم كرنے سے اجتناب كرتا ہے ۔ تم وہاں چلے جائو یہاں تك كہ خداوند تعالى كوئی مناسب موقع ہمیں عطافرمائے۔پیغمبر اكرم ﷺ كى مراد نجاشى سے تھى (نجاشى ایك عام نام تھا جیسے كسرى جو حبشہ كے تمام بادشاہوں كا خاص لقب تھا لیكن اس نجاشى كا اصل نام جو پیغمبر اكرم ﷺ كا ہم عصر تھا
اصحمہ تھا جو كہ حبشہ كى زبان میں عطیہ وبخشش كے معنى میں ہے )۔مسلمانوں میں سے گیارہ مرداور چار عورتیں حبشہ جانے كے لئے تیار ہوئے اور ایك چھوٹى سى كشتى كرایہ پر لے كر بحرى راستے سے حبشہ جانے كے لئے روانہ ہوگئے ۔یہ بعثت كے پانچویں سال ماہ رجب كا واقعہ ہے ۔كچھ زیادہ عرصہ نہیں گزراتھا كہ جناب جعفر بن ابوطالب بھى مسلمانوں كے ایك دوسرے گروہ كے ساتھ حبشہ چلے گئے ۔ اب اس اسلامى جمعیت میں 82/مردوں علاوہ كافى تعداد میں عورتیں اور بچے بھى تھے ۔
مشركین ،مہاجرین كى تعقب میں
اس ہجرت كى بنیادبت پرستوں كے لئے سخت تكلیف دہ تھى كیونكہ دہ اچھى طرح سے دیكھ رہے تھے كہ كچھ زیادہ عرصہ نہیں گزرے گا كہ وہ لوگ جو تدریجاً اسلام كو قبول كرچكے ہیں اور حبشہ كى سرزمین امن وامان كى طرف چلے گئے ہیں ، مسلمانوں كى ایك طاقتور جماعت كى صورت اختیار كرلیں گے یہ حیثیت ختم كرنے كے لئے انہوں نے كام كرنا شروع كردیا اس مقصد كے لئے انہوں نے جوانوں میں سے دوہوشیار، فعال، حیلہ باز اور عیار جوانوں یعنى عمروبن عاص اور عمارہ بن ولید كا انتخاب كیا بہت سے ہدیے دے كر ان كو حبشہ كى طرف روانہ كیا گیا ،ان دونوں نے كشتى میں بیٹھ كر شراب پى اور ایك دوسرے سے لڑپڑے لیكن آخركار وہ اپنى سازش كو روبہ عمل لانے كے لئے سرزمین حبشہ میں داخل ہوگئے ۔ ابتدائی مراحل طے كرنے كے بعد وہ نجاشى كے دربار میں پہنچ گئے ،دربار میں باریاب ہونے سے پہلے انہوں نے نجاشى كے درباریوں كو بہت قیمتى ہدیے دے كران كو اپنا موافق بنایا تھا اور ان سے اپنى طرفدارى اور تائید كرنے كا وعدہ لے لیا تھا ۔
عمروعاص نے اپنى گفتگو شروع كى اور نجاشى سے اس طرح ہمكلام ہوا:
ہم سرداران مكہ كے بھیجے ہوئے ہیں ہمارے درمیان كچھ كم عقل جوانوں نے مخالفت كا علم بلند كیا ہے اور وہ اپنے بزرگوں كے دین سے پھر گئے ہیں ،اور ہمارے خدائوں كو برابھلا كہتے ہیں ،انہوں نے فتنہ وفساد برپا كردیا ہے لوگوں میں نفاق كا بیچ بودیاہے ،آپ كى سرزمین كى آزادى سے انہوں نے غلط فائدہ اٹھایا ہے اور انہوں نے یہاں آكر پناہ لے لى ہے ، ہمیں اس بات كا خوف ہے كہ وہ یہاں بھى خلل اندازى نہ كریں بہتریہ ہے كہ آپ انہیں ہمارے سپرد كردیںتاكہ ہم انہیں اپنى جگہ واپس لے جائیں ۔یہ كہہ كر ان لوگوں نے وہ ہدیئےو وہ اپنے ساتھ لائے تھے پیش كیے ۔
نجاشى نے كہا : جب تك میں اپنى حكومت میں پناہ لینے والوں كے نمائندوں سے نہ مل لوں اس سلسلے میں كوئی بات نہیں كرسكتا اور چونكہ یہ ایك مذہبى بحث ہے لہذا ضرورى ہے كہ تمہارى موجودگى میں مذہبى نمائندوں كوبھى ایك جلسہ میں دعوت دى جائے ۔
جعفرؓ بن ابى طالب مہاجرین كے بہترین خطیب
چنانچہ دوسرے دن ایك اہم جلسہ منعقد ہوا، اس میں نجاشى كے مصاحبین اور عیسائی علماء كى ایك جماعت شریك تھى جعفر بن ابى طالب مسلمانوں كے نمائندہ كى حیثیت سے موجود تھے اور قریش كے نمائندے بھى حاضر ہوئے نجاشى نے قریش كے نمائندوں كى باتیں سننے كے بعد جناب جعفر كى طرف رخ كیا اور ان سے خواہش كى كہ وہ اس سلسلے میں اپنا نقطہ نظربیان كریں جناب جعفرادائے احترام كے بعد اس طرح گویا ہوئے :
پہلے ان سے پوچھیے كہ كیا ہم ان كے بھاگے ہوئے غلاموں میں سے ہیں ؟
عمرو نے كہا :نہیں بلكہ آپ آزاد ہیں ۔
جعفر: ان سے یہ بھى پوچھئے كہ كیا ان كا كوئی قرض ہمارے ذمہ ہے كہ جس كا وہ ہم سے مطالبہ كرتے ہیں ؟
عمرو : نہیں ہمارا آپ سے ایسا كوئی مطالبہ نہیں ہے ۔
جعفر: كیا ہم نے تمہارا كوئی خون بہایا ہے كہ جس كا ہم سے بدلہ لینا چاہتے ہو ؟
عمرو:نہیں ایسا كچھ نہیں ہے؟
جعفر: تو پھر تم ہم سے كیا چاہتے ہو ؟تم نے ہم پر اتنى سختیاں كیں اور اتنى تكلیفیں پہنچائیں اور ہم تمہارى سرزمین سے جو سراسر مركز ظلم وجور تھى باہر نكل آئے ہیں ۔
اس كے بعد جناب جعفر نے نجاشى كى طرف رخ كیا اور كہا : ہم جاہل اور نادان تھے، بت پرستى كرتے تھے ،مردار كا گوشت كھاتے تھے ، طرح طرح كے برے اور شرمناك كام انجام دیتے تھے، قطع رحمى كرتے تھے ، اپنے ہمسایوں سے براسلوك كرتے تھے اور ہمارے طاقتور كمزوروں كے حقوق ہڑپ كرجاتے تھے ۔ لیكن خدا وند تعالى نے ہمارے درمیان ایك پیغمبر كو معبوث فرمایا، جس نے ہمیں حكم دیا كہ ہم خدا كا كوئی مثل اورشریك نہ بنائیں اور فحشاء ومنكر، ظلم وستم اور قماربازى ترك كردیں ہمیں حكم دیا كہ ہم نماز پڑھیں ، زكوة ادا كریں ، عدل واحسان سے كام لیں اور اپنے وابستگان كى مدد كریں ۔
نجاشى نے كہا : عیسى مسیح علیہ السلام بھى انہى چیزوں كے لئے مبعوث ہوئے تھے ۔
اس كے بعد اس نے جعفر ‌ؓسے پوچھا: ان آیات میں سے جو تمہارے پیغمبر پر نازل ہوئی ہیں كچھ تہمیں یاد ہیں؟
جعفرنے كہا : جى ہاں : اور پھر انہوں نے سورۂ مریم كى تلاوت شروع كردى ،اس سورۂ كى ایسى ہلادینے والى آیات كے ذریعہ جو مسیح علیہ السلام اور ان كى ماں كو ہر قسم كى نارو اتہمتوں سے پاك قراردیتى ہیں ، جناب جعفر كے حسن انتخاب نے عجیب وغریب اثر كیا یہاں تك كہ مسیحى علماء كى آنكھوں سے فرط شوق میں آنسو بہنے لگے اور نجاشى نے پكار كر كہا : خدا كى قسم : ان آیات میں حقیقت كى نشانیاں نمایاں ہیں ۔
جب عمرنے چاہا كہ اب یہاں كوئی بات كرے اور مسلمانوں كو اس كے سپرد كرنے كى درخواست كرے ، نجاشى نے ہاتھ بلند كیا اور زور سے عمرو كے منہ پر مارا اور كہا: خاموش رہو، خدا كى قسم اگر ان لوگوں كى مذمت میں اس سے زیادہ كوئی بات كى تو میں تجھے سزادوں گا ،یہ كہہ كر مامورین حكومت كى طرف رخ كیا اور پكار كر كہا :
ان كے ہدیے ان كو واپس كردو اور انہیں حبشہ كى سرزمین سے باہر نكال دو
جناب جعفر اور ان كے ساتھیوں سے كہا : تم آرام سے میرے ملك میں زندگى بسر كرو ۔اس واقعہ نے جہاں جعفر اور ان كے ساتھیوں سے كہا تم آرام سے میرے ملك میں زندگى بسركرو۔( بہت سے مفسرین نے نقل كیا ہے كہ سورۂ مائدہ ایات 82تا86 نجاشى اور اس كے ساتھیوں كے بارے میں نازل ہوئی ہیں)اس واقعہ نے جہاں حبشہ كے كچھ لوگوں پر اسلام شناسى كےسلسلے میں گہرا تبلیغى اثر كیا وہاں یہ واقعہ اس بات كا بھى سبب بنا كہ مكے كے مسلمان اس كو ایك اطمینان بخش جائے پناہ شماركریں اور نئے مسلمان ہونے والوں كو اس دن كے انتظارمیں كہ جب وہ كافى قدرت و طاقت حاصل كریں ،وہاں پر بھیجتے رہیں ۔
فتح خیبركى زیادہ خوشى ہے یا جعفرؓكے پلٹنے كی
كئی سال گزر گئے پیغمبر ﷺ بھى ہجرت فرماگئے اور اسلام روزبروز ترقى كى منزلیں طے كرنے لگا،عہدنامہ حدیبیہ لكھا گیا اور پیغمبر اكرم ﷺ فتح خیبركى طرف متوجہ ہوئے اس وقت جب كہ مسلمان
یہودیوں كے سب سے بڑے اور خطر ناك مركز كے لوٹنے كى وجہ سے اتنے خوش تھے كہ پھولے نہیں سماتے تھے، دور سے انہوں نے ایك مجمع كو لشكر اسلام كى طرف آتے ہوئے دیكھا ،تھوڑى ہى دیر گزرى تھى كہ معلوم ہواكہ یہ وہى مہاجرین حبشہ ہیں ، جو آغوش وطن میں پلٹ كر آرہے ہیں ،جب كہ دشمنوں كى بڑى بڑى طاقتیں د م توڑچكى ہیں اور اسلام كا پودا اپنى جڑیں كافى پھیلا چكا ہے ۔ پیغمبر اكرم ﷺ نے جناب جعفرؓاور مہا جرین حبشہ كو دیكھ كر یہ تاریخى جملہ ارشاد فرمایا
:
میں نہیں جانتا كہ مجھے خیبر كے فتح ہونے كى زیادہ خوشى ہے یا جعفر كے پلٹ آنے كى كہتے ہیں كہ مسلمانوں كے علاوہ شامیوں میں سے آٹھ افراد كہ جن میں ایك مسیحى راہب بھى تھا اوران كا اسلام كى طرف شدید میلان پیدا ہوگیا تھاپیغمبر ﷺ كى خدمت میں حاضرہو ئے اور انہوں نے سورۂ یٰسین كى كچھ آیات سننے كے بعد رونا شروع كردیا اور مسلمان ہوگئے اور كہنے لگے كہ یہ آیات مسیح علیہ السلام كى سچى تعلیمات سے كس قدر مشابہت ركھتى ہیں ۔ اس روایت كے مطابق جو تفسیر المنار، میں سعید بن جبیر سے منقول ہے نجاشى نے اپنے یارو انصار میں سے تیس بہترین افراد كوپیغمبر اكرم ﷺ اور دین اسلام كے ساتھ اظہار عقیدت كے لئے مدینہ بھیجا تھا اور یہ وہى تھے جو سورۂ یٰسین كى ایات سن كر روپڑے تھے اور اسلام قبول كرلیا تھا۔
مرقدِ حضرت جعفر طیّار :اردن
Advertisements

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Best Urdu Books

Free Online Islamic Books | Islamic Books in Urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | Dars e Nizami Books | besturdubooks.net

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Donate Your Books at: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

Amna Art Studio

Maker of art and artsy things, art teacher, and loud thinker

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

I am woman, hear me roar

This blog contains the feminist point of view on anything and everything.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

MAHA S. KAMAL

INTERNATIONAL RELATIONS | POLITICS| POLICY | WRITING

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

Pressure Cooker

Where I brew the stew to feed inner monsters...

%d bloggers like this: