اسلام ميں آزادى كا تصور

ہر شخص کی خواہش ہوتی ہے کہ وہ آزاد رہے اور اس کی آزادی کو کوئی چیلنج كرنے والا نہ ہو، اسی قدرتی جذبہ کا احترام کرتے ہوئے اسلام نے انسان کو مکمل طور پر آزادی دی ہے:
آزادی کی اہمیت کا صحیح تجربہ وہی کر سکتا ہے جو آزاد فضا میں زندگی گزارنے کے بعد غلامی کی زنجیروں  میں جكڑا ہوا ہو۔ اسی ليے اسلام نے آزادی پر بہت زور دیا۔ انسانوں کو انسانوں کی غلامی سے نجات دلانا اسلام کا بنیادی مقصد ہے۔
اسلام نے ظاہر ہوتے ہی یہ اعلان کیا کہ حق طاقت نہیں بلکہ خود حق ہے، اور اللہ کے علاوہ کسی کے لئے مناسب نہیں كہ وه اس کے غلاموں کو اپنا تابع اور غلام بنائے۔
مولانا آزاد نے مسلمانوں کوقیادت کرتے ہوئے صرف دو ہی راستے اپنانے کی دعوت دی ہے، آزادی یا موتچنانچہ وه پورے بے باکی سے کہتے ہیں :
انسانوں کے برے رویے سے کسی کی تعلیم کی حقیقت نہیں جھٹلائی جا سکتی۔ اسلام کی تعلیم اس کى كتاب میں موجود ہے۔ وہ کسی صورت میں بھی جائز نہیں رکھتی کہ آزادی کھو کر مسلمان زندگی گزارے۔ مسلمانوں کو مٹ جانا چاہیے۔
عام کاموں میں انسان آزاد ہے اللہ نے انسان کو عام کاموں میں پوری آزادی دی، جو چاہے کھائے، جو چاہے پہنے، جہاں چاہے جائے، جو کام چاہے اپنائے، جو چاہے خریدے اور جو چاہے بيچے۔ اس آزادی میں عورت اور مرد برابر ہیں ، شادی بیاہ میں بھی مرد اور عورت آزاد ہیں کہ جن سے چاہیں شادی کریں یہاں تک کسی لڑکی کی
اجازت کے بغیر اس کی شادی بھی نہیں کی جا سکتی۔ اسی طرح ہر قسم کی سائنسی انکشافات کی آزادی ہے کہ جس چیز کی چاہے تحقیق کرے۔
اسلام نے انسان کو آزادی ضرور دی ہے لیکن اس آزادی کو اللہ اور اس کے احکامات کے تابع کر دیا ہے بالکل آزاد نہیں چھوڑا۔
اللہ سبحانہ وتعالی کا فرمان ہے :وماكان لمؤمن ولامؤمنة إذا قضى الله ورسوله أمرا أن يكون لهم الخيرة من أمرهم اور (دیکھو) کسی مومن مرد اور مومن عورت کے ليے اللہ اور اس کے رسول کے فیصلہ کے بعد اپنے کسی ماملے کا کوئی حق باقی نہیں رہتا، (یاد رکھو) اللہ تعالی اور اس کے رسول کی جو بھی نافرمانی کرے وہ کھلی گمراہی میں پڑے گا (الأحزاب 36)
اس لئے اللہ اور اس کے رسول نے جن کاموں کے کرنے کا حکم دیا انہیں کرنا اور جن کاموں سے روک دیا ان سے رک جانا ہی آزادی کا صحیح استعمال ہے۔
لہذا ایک شخص کو یہ آزادی نہیں دی جا سکتی کہ اللہ کے اوامرسے لاپرواهی برتے یا اس کے منہیات کو پامال کرنے لگے۔ آزادی کے نام پر دین کا مذاق اڑانا، اللہ اور اس کے رسول کے بارے میں برے الفاظ کا استعمال کرنا اور اسلام کے کسی حکم کو دل سے نا پسند کرنا جائز نہیں ۔ بلکہ ایسا کرنے والا اسلام کے دائره سے نکل جاتا ہے۔ اسی طرح اگر مرد اور عورت زنا کے لئے آپس میں راضی ہو جائیں تو زنا جائز نہیں ہو جاتا۔
اور اگر سود کا لین دین کرنے والے آپس میں راضی ہوں تو سود جائز نہیں ہو سکتا۔
اصل غلامى كس كى هونى چاہیئے ؟
 اللہ کو یہ بات ہرگز پسند نہیں کہ اس کی کائنات کسی اور کی غلامی میں رہ کر زندگی گزارے۔ وجہ یہ ہے اللہ خالق ہے تو وہ اپنی ہر کائنات سے غلامی کا مطالبہ اپنے آپ کے ليے کرتا ہےاور اپنے غلاموں کو اپنی غلامی میں دیکھنا چاہتا ہے۔ کیونکہ اس نے پوری كائنات کو پیدا ہی نہیں کیا ہے بلکہ ان كا منعم حقيقی بھی ہے۔ اور ان سب کى حفاظت بھی کر رہا ہے۔ جب اسی نے دنیا کو رچايا، اسی نے ہر طرح کے احسانات کیے، وہی دنیا کو چلا رہا ہے اور دنیا کی مدت مکمل ہونے کے بعد وہی دنیا کو تباہ بھی کرے گا تو انسان کو قدرتی طور پر اسی کی غلامی میں رہنا چاہئے۔ اور اس کے علاوہ ہر قسم کی غلامی کو رد کر دینا چاہيے۔
اللہ کی غلامی میں آ جانے کے بعد ایک انسان ہر طرح کی غلامی سے آزاد ہو جاتا ہے۔ اسی لئے صحابه كرام جب کسی ملک میں جاتے تو لوگوں تك اللہ کا پیغام پہنچاتے ہوئے کہتے تھے ابتعثنا الله لنخرج الناس من عبادة العباد إلى عبادة الله ہمیں اللہ نے اس لیے بھیجا ہے تاکہ ہم لوگوں کو انسان کی پوجا سے نجات دلا کر اللہ کی عبادت کی طرف لائیں۔
جب مصر کے گورنر عمرو بن عاص ؓ کے بیٹے نے ایک مصری کی بغیر کسی وجہ کے پٹائی کی تو مصری نے اس وقت کے خلیفہ حضرت عمر فاروق ؓ کے پاس اس کی شکایت کی، خلیفہ نے گورنر اور ان کے بیٹے کو مدینہ بلایا، پھر مصری سے کہا میرے سامنے تم گورنر کے بیٹے سے ویسے ہی بدلہ لے لو، جس طرح اس نے تمہاری پٹائی کی ہے۔
پھر فرمایا:
متى استعبدتم الناس وقد ولدتهم أمهاتهم أحرارا تم نے لوگوں کو کب سے غلام بنا لیا جب کہ ان کی ماؤں نے ان کو آزاد پیدا کیا تھا۔
علی ؓ نے فرمایا :لا تكن عبد غيرك وقد جعلك الله حراً اللہ نے تجھے آزاد پیدا کیا ہے اس لئے کسی اور کی غلامی قبول مت کر۔
دنيا جب ترقی کے دور میں داخل ہوئى تو غلامی کی مختلف شكلين ظاہر ہونے لگیں ۔ اسلام دشمنوں نے آزادی کے نام پر غلامی کے بہت سارے طریقے عام کئے تاکہ لوگ ان کے خيالات سے متفق ہو جائیں پھر وہ جیسے چاہیں لوگوں کو پھیرتے رہیں ۔ اس طرح آزادی کے نام پر غلامی کا تصور کو پھیلایا جانے لگا۔ لہذا کچھ لوگ خواہشات کے غلام بن گئے کہ خواہشات ہی انہیں حركت دینے لگی، اٹھانے بٹھانے لگی۔ کچھ لوگ روپيے پیسے کے غلام بن گئے کہ دین سے بے پرواہ ہو کر دنیا کمانے میں پوری طرح مصروف رہنے لگے۔ کچھ لوگ منشیات کے ایسے غلام بن گئے کہ اپنی جوانی اور دولت تک کو گنوا بیٹھے۔
یہ کہنا کہ دوسروں کو نقصان پہنچائے بغیر جو چاہو كرو یہ خیال بالکل غلط ہے۔ کیونکہ اس کا مطلب یہ ہوا کہ سگریٹ پینا حرام اس لئے ہے کہ اس سے دوسروں کو تکلیف پہنچتى ہے، اب اگر کوئی تنہائی میں سگریٹ پیتا ہے تو اسے اجازت دی جانی چاہیے۔ اگرکوئی بند کمرے میں اللہ کی نافرمانی کرتا ہے تو کیااسے صحیح سمجھنا چاہئے؟
یہ شیطانی فریب ہے۔ انسان تنہائی میں بھی آزاد نہیں ہوتا، وہاں بھی اللہ کی نگرانی اس کے ساتھ ہوتی ہے اور اس کے دائیں بائیں کندھوں پر فرشتے نگرانی کر رہے ہوتے ہیں۔
Advertisements
4 comments
  1. Zafarrahmani said:

    Mashaa Allah
    Very thought provoking post.
    Want more. Is there any continuation ?

  2. کچھ وضاحت فرما دیجئے
    مولانا محمد حسین آزاد یا مولانا ابو الکلام آزاد ؟
    ماملات یا معاملات ؟
    منہیات کا ترجمہ

    ہو سکے تو ان پر بھی نظر مار لیجئے
    http://safat.wordpress.com/2012/02/25/%D8%A7%D8%B3%D9%84%D8%A7%D9%85-%D9%85%D9%8A%DA%BA-%D8%A2%D8%B2%D8%A7%D8%AF%D9%89-%D9%83%D8%A7-%D8%AA%D8%B5%D9%88%D8%B1/
    http://www.commongroundnews.org/article.php?id=22542&lan=ur&sp=1
    http://www.oururdu.com/forums/archive/index.php/t-6043.html

    • اسلام علیکم
      افتخار صاحب آپ بزرگ ہیں، میرا آپ سے ایک سوال ہے۔
      کیا اسلام نے غلامی کا تصور، کہ آدمی آدمی کا غلام ھو، یکسر ختم کر دیا ہے۔کیا کوئی انسان کسی انسان کا غلام یا لونڈی نہیں ھو سکتا؟ کیا اسلام نے غلاموں کی صورت میں انسانوں کی خریدوفروخت سے منع کیا ھے؟ کیا تمام انسان آزاد ھی پیدا ھوتے ہیں؟ اگر غلام کو آزاد کیا جا سکتا ھے تو کیا کوئی آزاد انسان غلام نہیں بن سکتا؟
      اگر آپ ذرا تحقیق کے بعد جواب دیں تو میں آپ کا بے حد مشکور ھوں گا۔
      اللہ ھم سب کو اسلام کی اصل روح کو سمجھنے اور اسی کو پھیلانے کی توفیق دے۔
      آمین۔

  3. تم نے لوگوں کو کب سے غلام بنا لیا جب کہ ان کی ماؤں نے ان کو آزاد پیدا کیا تھا”۔”
    تو کیا اس کا مطلب ھوا کہ اگر لوگوں کی مائیں ان کو آزاد پیدا کریں تو ان کو غلام نہیں بنایا جا سکتا۔
    تو
    اگر کسی کی ماں نے اسے آزاد پیدا نہ کیا ھو تو کیا ہم اس کو آزاد ڈکلیئر کر سکتے ہیں؟

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Best Urdu Books

Worlds Largest Free Online Islamic Books | Islamic Books in Urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.net

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Donate Your Books at: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

Amna Art Studio

Maker of art and artsy things, art teacher, and loud thinker

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

Pressure Cooker

Where I brew the stew to feed inner monsters...

My Blog

Just another WordPress.com site

%d bloggers like this: