حجامہ ،طب نبوی ﷺکا معجزہ:-4

حجامہ کو عام کرنے کی ضرورت:
مردوزن ہر ایک کے لیے مناسب ہے کہ وہ حجامہ سیکھیں ۔اورحجامہ کا کام نہایت آسان بھی ہے۔ اس طرح حجامہ کرنے اور کرانے والے دونوں بفضلہ تعالی پیارے نبی ﷺکی سنت کواپنانے کی وجہ سے اجرعظیم کے مستحق ہوں گے۔
اہم بات :
آپ نے مروجہ طب کے ذریعہ بارہا علاج کراکر تجربہ کیا اور مختلف دوائیں بھی استعمال کیں ، ممکن ہے آپ اس کے لیے یورپ وامریکہ بھی سفر کیے ہوں اور بہت زیادہ پیسے خرچ کیے ہوں ‘اب آپ حجامہ کراکرلیں، خواہ اپنی پوری زندگی میں کسی ایک مرض سے شفایابی کے لیے ہی کیوں نہ ہو؟ اس پرچند روپوں  کی لاگت آئے گی اور بس ۔
اگر آپ شفایاب ہوگئے تو اللہ تعالی کے فضل وکرم سے اور اگر شفایابی نہیں ملی تو اجر کے مستحق ضرور ہوں گے اورآپ کو کسی طرح کا خسارہ بھی اٹھانا نہیں پڑے گا۔
عام لوگوں کا موقف:
حجامہ نبی ﷺکا طریقہ اور کامیاب علاج ہے اور یہ جائز نہیں کہ مسلمان یہ اعتقاد رکھے کہ حجامہ کراتے ہی مرض سے لازمی اور فوری طور پر شفاءمل جائے (بلکہ اس کی حالت بھی دوسرے مفید علاجوں کی طرح ہے) کیونکہ شفاءاللہ کی ذات سے مربوط ہے، اگر چاہے تو فوری شفاءعطا کردے یا کسی حکمت و مصلحت کے تحت کبھی تاخیر کرے،اس لیے کہ شفا اللہ کے ہاتھ میں ہے جیساکہ اللہ عزوجل کا فرمان ہے :
واذَامَرِضت فَھوَ یَشفِینِ اور جب میں بیمار پڑتا ہوں تو مجھے شفا بخشتا ہے (سورة الشعراء80)
بلاشبہ جس طب کی طرف ہمارے نبی ﷺنے ہماری رہنمائی فرمائی ہے وہ صحیح و کامل اور غلطی سے پاک وصاف طب ہے اور جو اس کے علاوہ ہیں وہ ناقص ہیں کیونکہ ان کا دارومدار صرف اور صرف انسانی تجربوں اور نفع و نقصان کے مابین فرق کرنے والی ناقص عقلوں پر ہے۔ بلاشبہ اللہ تعالی جس نے انسانوں کو پیدا کیا وہ صحیح معنوں میں تن تنہا نقصان سے خالی شفاءکے اسباب کو جانتا ہے اور اسی نے اپنے نبی ﷺکی طرف حجامہ کرانے کی وحی کی ہے جوکہ علاج کرائی جانے والی ساری چیزوں میں سب سے زیادہ سود مند ہے۔
اللہ تعالی نے فرمایا:ألَا یَعلَمُ مَنخَلَقَ وَھُوَ اللَّطِیفُ الخَبِیرُ بھلا جس نے پیدا کیا وہ بے خبر ہے؟ وہ تو پوشیدہ باتوں کا جاننے والا اور (ہر چیز سے) آگاہ ہے ( سورة الملک14)
 اختتامیہ :
 حجامہ کی اہمیت ،اس کے عظیم فوائد ومنفعت کے پیش نظر ہم پورے عالم اسلام میں ذمہ داران سے درخواست کرتے ہیں کہ حجامہ کو مدارس و معاہد اور جامعات میں پڑھایاجائے ، ذرائعِ ابلاغ کےذریعہ اس کو نشر کیا جائے ، ہاسپیٹلوں ، کلینکوں اور طبی مراکز وغیرہ میں اس کو عام کیا جائے یہاں تک کہ خیر عام ہوجائے اور امت محمدیہ کو عظیم فائدہ ہونے لگے۔
ہم قادر مطلق اللہ تعالی سے اپنے مریضوں اور سارے مسلمان مریضوں کی شفایابی کی دعا کرتے ہیں بلاشبہ وہ اس کا مالک اور اس پر قادر بھی ہے۔ درودوسلام ہو ہمارے آخری نبی محمدا ان کے آل و عیال اور جملہ ساتھیوں پر اور تمام تعریف اللہ رب العالمین کے لیے ہے۔اللہ تعالی آپ سب کو جزائے خیردے۔
ختم شد
Advertisements

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

w

Connecting to %s

%d bloggers like this: