آدابِ طہارت:

اسلام پاكيزہ مذہب ہے اور پاكيزگى و صفائى ستھرائى كوہى پسند كرتا ہے۔يہى وجہ ہے كہ كتاب و سنت ميں متعدد مقامات پر طہارت و پاكيزگى اختيار كرنے كى اہميت و فضيلت بيان كى گئى ہے۔
اس كے دلائل ميں سے چند آيات و احاديث حسب ِذيل ہيں:
وَثِيَابَكَ فَطَهِّرْ وَالرُّجْزَ فَاهْجُرْ اپنے كپڑے پاك ركهيں اور گندگى سے احتراز كريں۔ ( المدثر 4)
وَإنْ كُنْتُمْ جُنُبًا فَاطَّهَّرُوْا  اگر تم جنبى ہو تو طہارت حاصل كرو۔ (المائدة 6)
إنَّ اللهَ يُحِبُّ التَّوَّابِيْنَ وَيُحِبُّ الْمُتَطَهِّرِيْنَ  بلا شبہ اللہ تعالىٰ بہت زيادہ توبہ كرنے والوں اور طہارت و پاكيزگى حاصل كرنے والوں كو پسند فرماتے ہيں۔ (البقرة 222)
 حديث ِنبوى ہے كہ:
الطهور شطر الإيمان طہارت و صفائى نصف ايمان ہے۔ (مسلم 223)
لا تقبل صلاة بغير طهور طہارت (يعنى وضو) كے بغير نماز قبول نہيں ہوتى۔ (مسلم 224)
3۔ايك روز صبح كے وقت رسول اللہ ﷺ نے حضرت بلال رضی اللہ عنہ كو بلايا اور دريافت كيا كہ اے بلال رضی اللہ عنہ! كس عمل كى بدولت تم مجھ سے جنت ميں سبقت لے گئے؟ يقينا ميں نے گذشتہ شب جنت ميں اپنے سامنے تمہارے قدموں كى آہٹ سنى ہے۔ تو حضرت بلال رضی اللہ عنہ نے كہا اے اللہ كے رسول ﷺ! ميں نے جب بهى اذان دى تو دو ركعتيں ادا كيں اور جب بهى مجهے حدث لاحق ہوا (يعنى ميں بے وضو ہوا) تو ميں نے اُسى وقت وضو كرليا۔ (يہ سن كر) رسول اللہﷺ نے فرمايا اِسى كے بدلے (تمہيں يہ فضيلت عطا كى گئى ہے) (صحيح الترغيب از البانى 201)
Advertisements

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

w

Connecting to %s

%d bloggers like this: