خاتمہ بحث اور چند ضروری فوائد:

مسک الختام کے طور پر چند فوائد گوش گزار ہیں ، تاکہ بیس تراویح کی اہمیت ذہن نشین ہوسکے۔
 بیس تراویح سنتِ موٴکدہ ہے
حضرت عمر رضی اللہ عنہ کا اکابر صحابہ رضی اللہ عنہم کی موجودگی میں بیس تراویح جاری کرنا، صحابہ کرام  رضی اللہ عنہ کا اس پر نکیر نہ کرنا، اور عہدِ صحابہ  رضی اللہ عنہ سے لے کر آج تک شرقاً و غرباً بیس تراویح کا مسلسل زیرِ تعامل رہنا، اس امر کی دلیل ہے کہ یہ اللہ تعالیٰ کے پسندیدہ دین میں داخل ہے، لقولہ تعالیٰ  “ولیمکنن لھم دینھم الذی ارتضٰی لھم” (اللہ تعالیٰ خلفائے راشدین  رضی اللہ عنہ کے لئے ان کے اس دین کو قرار و تمکین بخشیں گے، جو اللہ تعالیٰ نے ان کے لئے پسند فرمالیا ہے)۔
الاختیار شرح المختار میں ہے
روی اسد بن عمرو عن ابی یوسف قال  سئلت ابا حنیفة رحمہ الله عن التراویح وما فعلہ عمر رضی الله عنہ، فقال  التراویح سنة موٴکدة ولم یتخرصہ عمر من تلقاء نفسہ ولم یکن فیہ مبتدعًا ولم یأمر بہ الا عن اصل لدیہ وعھد من رسول الله صلی الله علیہ وسلم ولقد سن عمر ھذا وجمع الناس علٰی أبیّ بن کعب فصلاھا جماعة والصحابة متوافرون منھم عثمان وعلی وابن مسعود والعباس وابنہ وطلحة والزبیر ومعاذ وأبیّ وغیرھم من المھاجرین والأنصار رضی الله عنہم اجمعین وما ردّ علیہ واحد منھم بل ساعدوہ ووافقوہ وامروا بذٰلک۔ اسد بن عمرو، امام ابویوسف رحمہ اللہ سے روایت کرتے ہیں کہ  میں نے حضرت امام ابوحنیفہ رحمہ اللہ سے تراویح اور حضرت عمر رضی اللہ عنہ کے فعل کے بارے میں سوال کیا، تو انہوں نے فرمایا کہ  تراویح سنتِ موٴکدہ ہے، اور حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے اس کو اپنی طرف سے اختراع نہیں کیا، نہ وہ کوئی بدعت ایجاد کرنے والے تھے، انہوں نے جو حکم دیا وہ کسی اصل کی بنا پر تھا جو ان کے پاس موجود تھی، اور رسول اللہ ﷺ کے کسی عہد پر مبنی تھا۔ حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے یہ سنت جاری کی اور لوگوں کو اُبیّ بن کعب  رضی اللہ عنہ پر جمع کیا، پس انہوں نے تراویح کی جماعت کرائی، اس وقت صحابہ کرام  رضی اللہ عنہ کثیر تعداد میں موجود تھے، حضرات عثمان، علی، ابنِ مسعود، عباس، ابنِ عباس، طلحہ، زبیر، معاذ اُبیّ اور دیگر مہاجرین و انصار رضی اللہ عنہم اجمعین سب موجود تھے، مگر ایک نے بھی اس کو رَدّ نہیں کیا، بلکہ سب نے حضرت عمر رضی اللہ عنہ سے موافقت کی اور اس کا حکم دیا۔(الاختیار لتعلیل المختار ج  ص 68، الشیخ الامام ابی الفضل مجدالدین عبدالله بن محمود الموصلی الحنفی، متوفی 683ھ)
Advertisements

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

w

Connecting to %s

%d bloggers like this: