لَیلَةُ القَدر-1

شبِ قدر
شبِ قدر!فضیلت وبرکت والی رات ہے۔ اس رات کو” شب قدر “ ا س لئے کہتے ہیں کہ اﷲتعالیٰ نے اس رات میں ایک بڑی قدرو منزلت والی کتاب، بڑی قدرو منزلت والے رسول ﷺ پر اور بڑی قدرو منزلت والی امت کیلئے نازل فرمائی اور یہ بھی کہا گیا ہے کہ چونکہ اس شب میں اعمالِ صالحہ مقبول ہوتے ہیں اور بارگاہِ رب العزتمیں ان کی بڑی قدر کی جاتی ہے، اس لئے اس شب کو ”شبِ قدر“ کہتے ہیں۔
اﷲتعالیٰ کا یہ بہت ہی بڑاانعام ہے کہ اس نے امت محمد ﷺ کوشب ِقدرکی صورت میں ایک بہت عظیم اور بے پایاں نعمت عطا فرمائی ہے۔ لیلتہ القدر کی عظمت و فضیلت کا ایک پہلو یہ بھی ہے کہ اس کی قدرو منزلت میں قرآنِ مجید کی ایک پوری سورت ”سورة القدر“ کے نام سے نازل کی گئی ہے۔
اس مبارک و مقدس رات کے بارے میں قرآنِ کریم میں ارشادِ خداوندِ قدوس ہے:اِنَّااَنزَلنٰہُ فِی لَیلَةِ القَدرِ۔وَمَااَدرٰکَ مَالَیلَةُ القَدرِ۔لَیلَةُ القَدرِخَیر مِّن اَلفِ شَھرٍتَنَزَّلُ المَلٰئِکَةُ وَالرُّوحُ فِیھَا بِاِذنِ رَبِّھِم مِّن کُلِّ اَمرٍ۔سَلاَم ھِیَ حَتّٰی مَطلَعِ الفَجرِ۔بے شک ہم نے اس (قرآن) کو شب قدر میں اتارا ہے اور آپ نے کیاجانا کہ شب قدر کیا ہے؟ شب قدر!ہزار مہینوں سے بہتر(رات) ہے۔اس (رات) میں فرشتے اور روح (یعنی جبرائیل امین) اپنے پروردگار کے حکم سے ہر امر (خیر) کیلئے اترتے ہیں، یہ (رات) طلوع فجر ہونے تک سراسر سلامتی ہے “۔ (سورةالقدر:آیت 1تا 5)
اس سورت مبارکہ سے معلوم ہوا کہ اس ایک رات کی عبادت ہزار مہینوں (83 سال اور4 ماہ) کی عبادت سے کہیں بہتر و افضل ہے۔ یہ اس امت محمدیہ ﷺ پر اﷲ تعالیٰ کا کتنا بڑااحسانِ عظیم ہے کہ مختصر سے وقت میں زیادہ سے زیادہ اجروثواب حاصل کرنے کیلئے اتنی عظیم رات عطافرمائی ہے۔رمضان المباک کے آخری عشرہ کی طاق راتوں میں سے ایک رات ”شبِ قدر“ کہلاتی ہے، جو بہت ہی برکتوں، رحمتوں نعمتوں اور سعادتوں کی رات ہے۔ قرآنِ پاک میں اس رات کو ہزار مہینوں(30ہزار راتوں) سے بھی افضل و اعلیٰ قرار دیا گیا ہے۔
{إنَّا أنْزَلْنٰہُ فِیْ لَیْلَۃٍ مُّبَارَکَۃٍ إنَّا کُنَّا مُنْذِرِیْنَ é فِیْھَا یُفْرَقُ کُلُّ أمْرٍ حَکِیْمٍéأمْرًا مِنْ عِنْدِنَا إنَّاکُنَّا مُرْسِلِیْنَ}’’یقینا ہم نے اس قرآن کو برکت والی رات میں نازل کیا بے شک ہم ڈرانے والے ہیں ۔ اس رات میں ہرایک مضبوط کام کا فیصلہ کردیا جاتا ہے۔ یہ معاملہ ہماری جانب سے ہے اور ہم بھیجنے والے ہیں ۔‘‘ (الدخان:۳۔۵)
وہ شخص جس کو اس عظیم رات کی معرفت اورحاضری نصیب ہوجائے اور وہ اس رات کو اللہ تعالیٰ کی عبادت وبندگی میں گزاردے توگو یا کہ اس نے تراسی سال اور چار مہینوں سے بھی زیادہ زمانہ عبادت و ریاضت میں گزاردیا ہے اور اس زیادتی کا بھی حقیقی حال معلوم نہیں کہ ہزار مہینوں سے کتنا افضل ہے۔
اللہ تعالی کی اس امت محمدیہ کے ساتھ خصوصی عنایات ہیں کہ اس نے اس خیر امت کو ایسے انعامات واکرامات سے نوازا ہے جن سے دیگر امتیں محروم رکھی گئیں، منجملہ ان خاص انعامات الہیہ کے شب قدر بھی ہے، جو اللہ کے حبیب ﷺ کی تمنا وآرزو پر اس امت کو عطا کی گئی، شب قدر کی قدر ومنزلت کا عالم یہ ہے کہ وہ ہزار مہینوں سے بہتر ہے یعنی اس شب میں عبادت کرنا تراسی (۸۳) برس چار مہینے کی عبادت سے بہتر قرار پاتا ہے، یہ وہ شب ہے جس میں روح الامین حضرت جبریل مع فرشتوں کے اس دنیا پر نزول فرماتے ہیں اس شب میں عبادت کرنے سے سابقہ گناہوں کی مغفرت ہوجاتی ہے،جو اس شب سے محروم رہا وہ ہر بھلائی سے محروم رہا الغرض اس شب کو سید اللیالی یعنی تمام راتوں کی سردار کہا گیا ہے خوش نصیب ہوتا ہے وہ بندہ جو اس شب قدر کی قدر دانی کرتا ہے اور اس کو اطاعت الہی واتباع رسول میں بسر کرتا ہے، لہو ولعب، فضول اعمال سے اجتناب کرتے ہوئے اس مبارک شب کو ذکر واذکار اور عبادت الہی میں گذارتا ہے، اور ایسے بندے کو اس رات اللہ کی رحمت خاص حاصل ہوتی ہے، کیونکہ یہ منجملہ ان راتوں کے ہے جن میں رحمت الہی کا خاص نزول ہوتا ہے، چنانچہ حضرت عمدۃ المحدثین مولانا محمد خواجہ شریف صاحب دامت برکاتہم شیخ الحدیث جامعہ نظامیہ لکھتے ہیں ’’یہ اللہ تعالی کا فضل ہے کہ اس نے بعض کو بعض پر فضیلت دی ہے اور اس نظامِ فضیلت کی وجہ سے ان مناسبات ومواقع میں اپنی خصوصی رحمتیں نازل کرتا ہے، او راس کی وجہ سے بندوں میں انابت اور عبادات وریاضات میں مسابقت کا جذبہ پیدا ہوتا ہے۔
ماہِ رمضان المبارک اور اس کی ستائیسویں شب یعنی” شب قدر“کی عظمت و فضیلت اور اہمیت امت مسلمہ میں ہمیشہ سے مسلّم رہی ہے اور کیوں نہ رہتی کہ یہ رات تو گناہ گاروں کی مغفرت اور مجرموں کی جہنم سے نجات کی رات ہے۔یہ رات تو عبادت و ریاضت، تسبیح و تلاوت، درود و سلام، توبہ و استغفار،کثرتِ نوافل،صدقات و خیرات، عجزو نیاز مندی اور مراقبہ و احتساب عمل کی رات ہے۔
اس عظیم الشان رات کی عظمت و فضیلت کا ذکر کرتے ہوئے حضرت انس بن مالک رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ رسو ل ا ﷲﷺنے ارشاد فرمایا کہ: ”جب شب قدر آتی ہے تو حضرت جبرائیل امین علیہ السلام فرشوں کی جماعت کے ساتھ زمین پر آتے ہیں اور ملائکہ کا یہ گروہ ہر اس بندے کیلئے دعائے مغفرت اور التجائے رحمت کرتا ہے جو کھڑے یا بیٹھے ہوئے اﷲتعالیٰ کے ذکر اور عبادت میں مشغول رہتا ہے۔ جب کہ ایک روایت میں یہ بھی ہے کہ فرشتے ان بندں سے مصافحہ بھی کرتے ہیں“ ۔ کتنا خوش نصیب اور بلند اقبال ہے وہ بندہ! جو اس رات کو اپنے پروردگار کی یادمیں بسرکرتا ہے۔ جبرائیل امین اور فرشتے اس کے ساتھ مصافحہ کرنے کا شرف حاصل کرنے کیلئے آسمان سے اتر کر اس کے پاس آتے ہیں او ر اس کی مغفرت و بخشش کیلئے دعائیں مانگتے ہیں۔(تفسیرضیاءالقرآن: جلد 5صفحہ 620)
علامہ ابوعبداللہ محمد بن احمدمالکی قرطبی (متوفی668ھ) حضرت کعب احبار سے روآیت کرتے ہیں کہ ”بنی اسرائیل کے زمانہ میں ایک بادشاہ تھا،اللہ تعالیٰ نے اس زمانے کے نبی کو وحی کی کہ اس بادشاہ سے کہیں کہ وہ کوئی تمنا اوردعاکرے تواس نے یہ تمنا کی کہ میں اپنے مال،اولاد اور اپنے جسم و جان کے ساتھ اللہ تعالیٰ کی راہ میں جہاد کروں۔ چنانچہ اللہ تعالیٰ نے اسے ایک ہزار بیٹے عطافرمائے۔ اُس نے اپنے مال اور اولاد کے ساتھ ایک لشکرتیارکیا اور اپنے مال اوراولادکولے کر اللہ تعالیٰ کی راہ میں چل پڑا، وہ ہر ماہ جہادکرتا اور اس کا ایک بیٹا شہید ہوجاتا تو وہ دوسرے بیٹے کو میدانِ جہاد میں لے آتا، اسی طرح ہر ماہ اس کا ایک ایک بیٹاشہید ہوتارہا اور وہ اس کے باوجود دن بھرروزہ رکھتا اور رات کوقیام (عبادت) کرتارہتاتھا، یہاں تک کہ ہزار مہینوںمیں اس کے ہزار بیٹے اللہ کی راہ میں شہیدہوگئے۔پھر وہ خود آگے بڑھا اور کفا رسے جہادکیااور بالآخروہ خود بھی شہید ہو گےا۔لوگوں نے یہ سن کرکہا:”اس شخص کی طرح تو کوئی بھی عبادت نہیں کر سکتا؟“۔ تو اللہ تعالیٰ نے یہ آیت مبارکہ”لیلة القدرخیرمن الف شھر“ یعنی شب قدر کی عبادت اس بادشاہ ایسی ہزارماہ کے صیام وقیام اور جہاد کی عبادتوں سے بھی افضل واعلیٰ ہے“۔ (الجامع لاحکام القرآن: جز20ص132،مطبوعہ دارالفکر بیروت1415ھ)
۔    ام المومنین حضر ت عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہافرماتی ہیں کہ رسول اللہ ﷺ رمضان المبارک کے آخری عشرہ کیلئے خصوصی اہتمام فرماتے تھے اور آپ ﷺکا یہ معمول تھا کہ جب رمضان کاآخری عشرہ شروع ہوتاتھاتوآپ ﷺاپنا تہہ بندمضبوطی سے باندھ لیتے اور راتوں کوذکرخداوندی سے زندہ کرتے اور اپنے اہل وعیال کو بھی عبادت کے لئے جگاتے۔حضر ت عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ: 
کَانَ رَسُولُ اللّٰہِ یَجتَھِدُ فِی العَشرِالاَوَاخِرِمَالَایَجتَھِدُ فِی غَیرِہ۔ رسول اللہﷺ (عبادت الٰہی میں)جتنامجاہدہ( کوشش) اس آخری عشرہ میں فرماتے تھے، کسی دوسرے وقت میں ایسا مجاہدہ نہیں فرماتے تھے۔ (صحیح مسلم،مشکوٰة المصابیح باب لیلة القدر)
Advertisements

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Best Urdu Books

Free Online Islamic Books | Islamic Books in Urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.net

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Donate Your Books at: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

Amna Art Studio

Maker of art and artsy things, art teacher, and loud thinker

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

I am woman, hear me roar

This blog contains the feminist point of view on anything and everything.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

Pressure Cooker

Where I brew the stew to feed inner monsters...

%d bloggers like this: