نمازِ تراویح

حافظ ابن حجر عسقلانی   رحمۃ اﷲ  فرماتے ہیں :والتراویح جمع ترویحۃ وھي المرۃ الواحدۃ من الراحۃ کتسلیمۃ من السلام۔ سمیت الصلاۃ في الجماعۃ في لیالي رمضان التراویح لأنھم أوّل مااجمعوا علیھا کانوا یستریحون بین کل تسلیمتین’’تراویح ترویحۃ کی جمع ہے جو راحت سے مشتق ہے یعنی آرام جیسے تسلیمۃسلام سے مشتق ہے۔ رمضان کی راتوں  میں  جماعت سے (نفل)نماز اداکرنے کو تراویح کہاجاتاہے اس لیے کہ شروع میں لوگ ہردوسلام کے بعد کچھ دیر آرام کیاکرتے تھے۔‘‘ (فتح الباری: 4؍317)
نمازِ تراویح کو قیام اللیل اور صلاۃ اللیل بھی کہاجاتا ہے۔ قیامِ رمضان یانمازِ تراویح کاوقت عشا کی نماز کے بعد سے لے کرفجر کی اذان تک رہتا ہے۔ اس دوران اسے کسی بھی وقت اداکیا جاسکتا ہے۔وقت کی اسی وسعت اورگنجائش کی وجہ سے نمازِ تراویح کو عشاء کے فوراً بعد بھی پڑھ لیاجاتاہے تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگ قیامِ رمضان کی فضیلت حاصل کرسکیں ۔ تاہم پھر بھی رات کے آخری حصے میں ادا کرنا زیادہ اجروثواب کا مستوجب ہے۔
  سیدنا عبداللہ بن سلام رضی اللہ عنہ  بیان کرتے ہیں  کہ رسول اللہﷺ  نے فرمایا: یٰأیھا الناس: افشوا السلام وأطعموا الطعام وصلوا والناس نیام تدخلون الجنۃ بسلام   ’’اے لوگو! سلام عام کرو، کھاناکھلایا کرو، رات کو جب لوگ سورہے ہوں  تو تم نماز پڑھا کرو، سلامتی کے ساتھ جنت میں چلے جاؤ گے۔‘‘ (جامع ترمذی:2485 وقالہ صحیح)
امام ابن حجر عسقلانی نے ۔التلخیص۔ میں بیان کیا ہے کہ حضور نبی اکرم ﷺ نے لوگوں کو دو راتیں 20 رکعت نماز تراویح پڑھائی، جب تیسری رات لوگ پھر جمع ہوگئے تو آپ ﷺ ان کی طرف ﴿حجرۂ مبارک سے باہر﴾ تشریف نہیں لائے۔ پھر صبح آپ ﷺ نے فرمای مجھے اندیشہ ہوا کہ ﴿نمازِ تراویح﴾ تم پر فرض کردی جائے گی لیکن تم اس کی طاقت نہ رکھوگے۔عسقلاني، تلخيص الحبير، 2
نمازِ تراویح کی تعداد بیس ہے اس لئے ہر چار رکعت کے بعد کچھ دیر ٹھہر کر اور سکون کرنے کے بعد نماز کا شروع کرنا مستحب ہے۔ صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین ایسا کیا کرتے تھے، اسی وجہ سے اس نماز کا نام تراویح رکھا گیا ہے۔
ان احادیث سے بصراحت واضح ہوگیا کہ نمازِ تراویح باجماعت ادا کرنا نہ صرف جائز بلکہ افضل ہے۔ نبیﷺ  نے تین راتوں  میں  مسجد آکر اجتماعی طور پرصحابہ کرام رضی اللہ عنہ  کے ساتھ قیام کرکے ثابت فرما دیا کہ یہ مستحب و مسنون ہے۔بعدازاں  اس ڈر سے کہ کہیں  یہ نماز باجماعت ادا کرنے کی وجہ سے فرض نہ ہوجائے اور پھر اُمت اس کی ادائیگی سے عاجز ہوکر گناہ گار ہوجائے۔ لہٰذا اسے جماعت سے پڑھانا ترک کردیا پھر رسول اللہﷺ  کے عہد ِمبارک، سیدنا ابوبکر صدیق رضی اللہ عنہ  کے عہد ِ خلافت اور سیدنا عمر رضی اللہ عنہ  کے ابتدائی دور میں  معاملہ اسی طرح رہا کہ کچھ لوگ باجماعت اور کچھ لوگ انفرادی طور پر اسے ادا کرتے تھے۔ تاآنکہ سیدنا عمر رضی اللہ عنہ  نے تمام لوگوں  کو ایک ہی امام کی اقتدا میں مستقل طور پر جمع فرما دیا۔ چنانچہ عبدالرحمن بن عبدالقاری بیان کرتے ہیں  کہ میں  سیدنا عمر رضی اللہ عنہ  کے ساتھ رمضان کی ایک رات کو مسجد میں  گیا۔ سب لوگ متفرق اور منتشر تھے۔ کوئی اکیلا نماز پڑھ رہا تھا اور کچھ لوگ کسی کے پیچھے کھڑے ہوئے (باجماعت پڑھ رہے)تھے۔ اس پر سیدنا عمر رضی اللہ عنہ  نے فرمایا: میراخیال ہے کہ اگر تمام لوگوں  کوایک ہی قاری کے پیچھے جمع کردوں  تو زیادہ اچھا ہوگا۔ چنانچہ اُنہوں نے یہی ٹھان کر سیدنا اُبی بن کعب رضی اللہ عنہ  کو ان سب کا امام بنا دیا۔ پھر ایک رات آپ نکلے دیکھا کہ لوگ اپنے امام کے پیچھے نماز تراویح (باجماعت) پڑھ رہے ہیں  تو سیدنا عمر رضی اللہ عنہ  نے فرمایا: یہ نیا طریقہ بہتر اور مناسب ہے۔ (صحیح بخاری، رقم:2010)
یہاں  سے یہ بھی ثابت ہوا کہ سیدنا عمر رضی اللہ عنہ  کے لوگوں  کو ایک امام کی اقتدا میں  جمع کرنے سے پہلے بھی بعض لوگ نمازِ تراویح باجماعت ادا کیا کرتے تھے اور پھر یہ کہ نبیﷺ  کی وفات کے بعد چونکہ فرضیت والاخطرہ باقی نہ رہا تھا۔ اس لیے صحابہ کرام نے پھر مستقل طور پرایک ہی امام کے پیچھے اسے باجماعت ادا کرنے کااہتمام کردیا۔ آج اگر کوئی سر پھرا اس عمل کوناجائز اور بدعت گردانے تو وہ بے علم، بے عمل اور مخالف ِصحابہ کرام رضی اللہ عنہ  ہوگا کیونکہ اہل علم جانتے ہیں  کہ اُمت میں  آج تک کسی نے اسے بدعت نہیں کہا۔
سیدنا عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ  نے اپنے دورِ خلافت میں  جب اس نماز کی جماعت کا باقاعدہ اہتمام فرمایا تو ایک دن لوگوں  کو رات کے اوّل حصے میں  باجماعت تراویح ادا کرتے ہوئے دیکھ کر فرمایا:
والتي ینامون عنھا أفضل من التي یقومون یرید آخر اللیل وکان الناس یقومون أوّلہ۔’’رات کاوہ حصہ جس میں  یہ لوگ سوجاتے ہیں  اس حصے سے بہتر اور افضل ہے جس میں  یہ نماز پڑھتے ہیں ۔ حضرت عمر رضی اللہ عنہ  کی مراد رات کے آخری حصے (کی فضیلت) سے تھی۔کیونکہ لوگ یہ نماز رات کے شروع ہی میں  پڑھ لیتے تھے۔‘‘(صحیح بخاری،کتاب صلاۃ التراویح، باب فضل من قام رمضان، رقم:2010)
بہرحال نمازِ تراویح کا عشاء کے فوراً بعد پڑھ لینا جائز جب کہ دیر سے یعنی رات کے آخری حصے میں پڑھنا زیادہ فضیلت کاحامل ہے۔
  نمازِ تراویح باجماعت یا جماعت کے بغیراداکرنادونوں  طرح جائز اور درست ہے۔ تاہم باجماعت ادا کرنے میں  زیادہ فضیلت ہے۔ سیدنا ابن عمر رضی اللہ عنہ  بیان کرتے ہیں  کہ رسول اللہﷺ  نے فرمایا: صلاۃ الجماعۃ تفضل صلاۃ الفذ بسبع وعشرین درجۃ ’’باجماعت نماز اکیلے شخص کی نماز سے ستائیس درجے زیادہ فضیلت رکھتی ہے۔‘‘(صحیح بخاری، کتاب الاذان، باب فضل صلاۃ الجماعۃ، رقم:645)
اس حدیث کے عموم میں  نمازِ تراویح کی جماعت بھی شامل ہے۔ خود رسول اللہﷺ  نے بھی نمازِ تراویح کی جماعت کروائی ہے۔
  چنانچہ سیدہ عائشہ رضی اللہ عنہ  بیان کرتی ہیں  کہ رسول اللہﷺ  نے ایک رات مسجد میں نمازِتراویح پڑھی لوگوں  نے بھی آپﷺ   کی اقتداء میں  پڑھی پھر دوسری رات جب آپﷺ  نے پڑھی تو مقتدی زیادہ ہوگئے پھر تیسری رات بھی ایسے ہوا چوتھی رات جب لوگ (زیادہ) جمع ہوگئے تو آپ گھر سے تشریف ہی نہ لائے۔ جب صبح ہوئی تو نمازِ فجر ادا کرنے کے بعد آپﷺ   نے فرمایا: أمابعد: فإنہ لم یخفَ عليَّ مکانَکم ولکني خشیت أن تُفرض علیکم فتعجزواعنھا  ’’اما بعد! مجھے تمہارے یہاں  جمع ہونے کا علم تھا لیکن مجھے خوف اس بات کا ہوا کہ یہ نماز تم پر فرض نہ کردی جائے اور پھر تم اس کی ادائیگی سے عاجز ہوجاؤ۔‘‘ (بخاری، کتاب صلاۃ التراویح، باب فضل من قام رمضان، رقم:2012)سنن ابوداؤد کی روایت میں  ہے : وذلک في رمضانیعنی رمضان کی بات ہے۔ (ابوداؤد رقم1373)
 سیدنا ابوذر رضی اللہ عنہ  بیان کرتے ہیں  کہ ہم نے رسول اللہﷺ  کے ساتھ رمضان کے روزے رکھے۔ آپ نے ہمارے ساتھ کوئی قیام نہ کیا حتیٰ کہ مہینے میں ایک ہفتہ باقی رہ گیا تو آپ نے ہمیں  قیام کروایا حتیٰ کہ تہائی رات ہوگئی۔ جب (آخر سے) چھٹی رات آئی تو آپ نے قیام نہ کرایا۔ جب پانچویں  رات آئی تو ہمیں قیام کروایا حتیٰ کہ آدھی رات گزر گئی۔ میں نے کہا:اے اللہ کے رسولﷺ ! کاش ہمیں  آپ بقیہ رات بھی اس کا قیام کروا دیتے؟ تو آپ ﷺ  نے فرمایا:إن الرجل إذا صلی مع الإمام حتیٰ ینصرف حسب لہ قیام اللیل’’انسان جب امام کے ساتھ (باجماعت) نماز پڑھتا ہے اور اس کے فارغ ہونے تک اس کے ساتھ رہتا ہے تو اس کے لیے پوری رات کا قیام شمار کیا جاتاہے۔‘‘جب چوتھی رات آئی تو آپ نے قیام نہ کروایا۔ جب تیسری رات آئی تو آپ نے اپنے اہل خانہ، خواتین اور دوسرے لوگوں  کو جمع فرمایا اور ہمیں  (اتنا لمبا) قیام کرایا کہ ہمیں فکر لاحق ہوئی کہ کہیں  ہماری سحری نہ رہ جائے۔ (سنن ابوداؤد  :1375 صحیح)
Advertisements
6 comments
  1. Saqib Ali said:

    بخاری سے تعداد رکعات کیوں نہیں بیاں کی آپ نے؟ أَفَتُؤْمِنُونَ بِبَعْضِ الْكِتَابِ وَتَكْفُرُونَ بِبَعْضٍ.
    آپ بہت اچھا لکھتی ہیں۔لیکن لکھتے ہوے جانب داری سے اجتناب کریں۔ وما الینا الا بلاغ۔

    • اب میں مقلد نہ ہوتی تو ضرور صرف بخاری ہی کے حوالے ہی دیتی
      حضور ﷺ نے تقلید کرنے کو کہا تو صحابہ کی قلید کرتے ہیں
      پھر تابعین کی تقلید کرتے ہیں
      پھر تبعہ تابعین کی تقلید کرتے ہیں
      اسی طرح تقلید در تقلید کرتے ہم با سند چلے ارہے ہیں
      پر جو تقلید کے قائل نہیں وہ صرف بخاری کو سند لیتے ہیں
      درست ہے کہ بخاری میں تمام احادیث صحیح ہیں مگر
      صرف بخاری ہی میں احادیث صحیح نہیں کئی دوسری جگہوں پر بھی احادیث موجود ہیں
      کچھ لوگ انہیں جان بوجھ کر نظر انداز کرتے ہیں انہیں جھٹلانے کی کوشش کرتے ہیں
      اور اس کے لئے ہر طرح کے ہتکنڈے استعمال کرتے ہیں

      کاش کہ جذباتیت سے ہٹ کر عقل کے ناخن بھی لیجئے
      ابھی کئی دلائل آگے آرہے ہیں

      • Saqib Ali said:

        میں نے صرف آپ سے یہ کہا تھاکہ آپ نے بخاری سے تراویح کی رکعات کیوں نہیں بیان کی۔آپ نے کوَئ جواب نیہں دیا۔
        آپ نے بہت اچھی بات کہی "عقل کےناخن بھی لیجیَے” یہی بات آپ سے کہوں گا۔اللہ تعالی قران میں کئ جگہ پر ایسےلوگوں کی سرزنش کرتے ہیں جو اپنی عقل نہیں استعمال کرتے۔ أَتَأْمُرُونَ النَّاسَ بِالْبِرِّ وَتَنسَوْنَ أَنفُسَكُمْ وَأَنتُمْ تَتْلُونَ الْكِتَابَ ۚ أَفَلَا تَعْقِلُونَ (البقرۃ 44) آپ اچھا لکھتی ہیں صرف اس لیے آپ سے گزارش ہے لکھتے ہوے تمام باتوں کو بیان کریں ۔ اور دین کے بارے میں لکھتے ہوے انصاف کرنا بہت ضروری ہے۔
        اپنے آپ کو قاری کی جگہ رکھ کر فیصلہ کریں۔آپ کی تحریر سے پڑھ کر کوئ بھی یہ سمجھے گا کہ بخاری میں 20 رکعات لکھا ہے۔
        تقلید کریں لیکن سوچ سمجھ کر۔میں نے پاکستان میں ان لوگوں کو بھی بخاری پہ عمل کرتے نہیں دیکھا جو اپنے اپکو احل حدیث کہتے ہیں اور صرف اس لیے کہ وہ ثابت کریں کہ وہ صحیح ہیں اور بای سب ٰ غلط ہیں۔ میرا آپ سے سوال یے کہ کوئ 20 رکعات پڑہے یا 8 اس سے کسی کو کیا فایدہ؟ آپ صرف جو آپ کے پاس علم ہے اسکو ایک مقدس فریضہ سمجھ کر پہنچایں ۔اگر آپ کا مقصد کچھ اور ہے تو معزرت میرا یہاں کوئ کام نہیں۔
        آپ کے پاس حدیث تو ہونگی کہ نما ز کیسے پڑہی جاتی ہے ؟کیونکہ صرف اپنے آپ کو حق پر ثابت کرنے کہ لیے ہم بخاری میں بتاے طریقے سے نماز نہیں پڑہتے۔
        عید میلاد نبی ، عرس منانے ،دوسروں کی جان اور مال حلال ،نجا َیز منافع خوری وغیرہ سب کس لیے ؟ صرف یہ ثابت کرنے کے لیے آپ صحیح باقی غلط؟
        قرآن کے بعد صحیح ترین کتاب بخاری یے۔یہ مانتے ہوے بھی اس میں درج احادیث کو نزر انداز کرنا صرف یہ کہ کر کہ ہم مقلد ہیں؟
        وما الینا الا بلاغ۔

  2. سبحان الله
    ماشاء الله
    جزاكم الله خير

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Best Urdu Books

Free Online Islamic Books | Islamic Books in Urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.net

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Donate Your Books at: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

Amna Art Studio

Maker of art and artsy things, art teacher, and loud thinker

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

I am woman, hear me roar

This blog contains the feminist point of view on anything and everything.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

Pressure Cooker

Where I brew the stew to feed inner monsters...

%d bloggers like this: