شَھْرُ رَمَضَانَ -ماہ رمضان المبارک-4

روزے کے مقاصد:اللہ تعالیٰ نے قرآن کریم میں  روزے کا حکم دیتے ہوئے (لَعَلَّکُمْ تَتَّقُوْن)(البقرة  183)کے الفاظ میں  بیان فرمایا: ہے کہ تمہارے اندر تقویٰ پیدا ہو۔تقویٰ کا مطلب ہے، دل میں  اللہ تعالیٰ کا ڈر اور اس کا خوف اس طرح جا گزیں  ہو جائے کہ ہر کام کرنے سے پہلے انسان یہ دیکھے کہ یہ جائز ہے یا ناجائز؟ حلال ہے یا حرام؟ اس سے اللہ تعالیٰ راضی ہو گا یا ناراض؟
    روزے سے یہ تقویٰ کس طرح حاصل ہوتا ہے۔ جب ایک مسلمان روزے کی حالت میں  گھر کی چار دیواری کے اندر بھی، جہاں  اس کو کوئی دیکھنے والا ہوتا ہے نہ اس کا کوئی مواخذہ کرنے والا، کھاتا ہے نہ پیتا ہے اور نہ بیوی سے اپنی جنسی خواہش پوری کرتا ہے، کیوں ؟ محض اس لیے کہ اللہ تعالیٰ نے روزے کی حالت میں  ان چیزوں  سے اسے روک دیا ہے۔ تو پورے ایک مہینے کی تربیت سے۔
    بشرطیکہ انسان خلوص دل اور کامل اذعان اور شعور سے کوشش کرے۔ اس کے دل میں  اللہ تعالیٰ کا خوف راسخ ہو جاتا ہے اور یہ بات اس کے ذہن میں  نقش ہو جاتی ہے کہ جب روزے کی حالت میں  اللہ تعالیٰ کے حکم سے حلال چیزوں  سے بھی میں  اجتناب کرتا رہا ہوں ، تو جو چیزیں  اللہ تعالیٰ نے ہمیشہ کے لیے حرام قرار دی ہوئی ہیں  ، ان کا ارتکاب میرے لیے کس طرح جائز ہو سکتا ہے؟ یا اگر مجھے اللہ تعالیٰ کی رضا مقصود ہے تو میں  اللہ تعالیٰ کی نا فرمانی والے کام کیوں  کروں ؟
روزے کا سب سے بڑا مقصد تو اللہ تعالیٰ اور رسول اکرمﷺ کے حکم کی اطاعت ہے، تاہم علمائے کرام نے روزوں  کے مندرجہ ذیل مقاصد بیان کئے ہیں 
تقوی  سال بھر وافر مقدار میں  کھانے کی وجہ سے جسم و روح میں  سرکشی و درندگی پیدا ہوجاتی ہے اس کو ختم کرنے کیلئے ایک ماہ کےروزے لازم کئے گئے ہیں ۔
ضبطِ نفس تمام حیوانات کے دو بنیادی مقاصد ہوتے ہیں ، وہ کھانا، پینا، اور افزائش نسل، اور یہی دو مقصد انسان کو جرائم پر آمادہ کرتے ہیں  اس لئے ان دونوں  پر پابندی لگا کر تربیت کرائی گئی ہے۔
احساس و ہمدردی  جب تک انسان کو خود تکلیف و پریشانی سے واسطہ نہ پڑا ہو تب تک دوسروں  کی تکلیف کا احساس نہیں  ہوتا، ایک ماہ بھوک و پیاس برداشت کرنے سے غریبوں  کے ساتھ احساس و ہمدردی پیدا ہوتی ہے۔
صبر و تحمل  زندگی تغیرات کا نام ہے۔ اگر آج خوشحالی ہے تو کل تنگ دستی سے بھی سامنا ہوسکتا ہے تو روزوں  کے ذریعے صبر و تحمل کا مادہ پیدا کیا جاتا ہے اور تنگی برداشت کرنے کا عادی بنایا جاتا ہے۔
یماریوں  کا تدارک  ہمیشہ کثرت سے کھانے ، پینے کی وجہ سے جسم میں  ایسی رطوبتیں  پیدا ہوجاتی ہیں  جو آہستہ آہستہ زہر کی صورت اختیار کرلیتی ہیں ۔ جن سے شوگر، بلڈ پریشر، موٹاپا اور دل و معدہ کے امراض پیدا ہوجاتے ہیں ۔ ایک ماہ روزوں  کے ساتھ ان بیماریوں  کا تدارک کیا جاتا ہے۔
اسلامی عبادات میں  ظاہری اور باطنی ہر قسم کی پاکیزگی کا التزام ہر جگہ موجود ہے۔ نماز اگر آئینہ دل کو مجلّٰی اور مصفٰی کرتی ہے تو وضو جسمانی طہارت اور پاکیزگی کے لئے نماز کی اوّلیں  شرط قرار پایا۔ اسی طرح اگر عورت کو نقاب اوڑھنے کا حکم دیا تو ساتھ قید بھی لگائی:قُلْ لِّلْمُؤْمِنَاتِ يَغْضُضْنَ مِنْ اَبْصَارِھِنَّ کہ اے رسول ﷺ! مومن عورتوں  سے کہہ دیجئے کہ وہ اپنی نگاہیں  نیچی رکھیں ۔
اور یہ تسلیم شدہ حقیقت ہے کہ جس عورت کی نگاہ عصمت و عفت اور فطری حیا سے خالی ہے۔ اس کے لئے اگر لاکھ نقابوں  کا اہتمام بھی کر لیا جائے تو وہ مقصد حاصل نہیں  ہو سکتا جس کے لئے  یغضضن من ابصارھن  کی ضرورت پیش آئی۔
روزہ بھی اس حکمت سے خالی نہیں ۔ روزہ سے جہاں  انسان کی باطنی طہارت اور روحانی صحت کا التزام کیا گیا ہے وہاں  اس کی جسمانی صحت اور نظامِ انہضام کی خرابیوں  کا علاج بھی اس میں  موجود ہے۔ پھر یہ ایک تسلیم شدہ حقیقت ہے کہ کثرت خوری اور وقت بے وقت کھانا معدے کی امراض کا موجب ہیں ۔ اس سے جسمانی نشوونما صحیح طریق پر نہیں  ہوتی بلکہ غیر متناسب غذا اور کھانے کے غیر متعین اوقات کی بدولت اکثر لوگ لبِ گور پہنچ جاتے ہیں ۔ سال بھر کی ان بے قاعدگیوں  کو روکنے اور صحت اور تندرسی کے اصولوں  پر عمل پیرا ہونے کے لئے یہ لازم تھا کہ انسانوں  کو تیس روز تک پابند کیا جاتا کہ وہ متعینہ وقت پر کھائیں  پئیں  اور مقررہ وقت کے بعد کھانے پینے سے ہاتھ کھینچ لیں ۔ یہ کیسی حکمت ہے کہ عبادات کے ساتھ ساتھ انسان جسمانی صحت بھی حاصل کرتا ہے اور روح کی بالیدگیوں  کے ساتھ ساتھ اس کی جسمانی صحت بتدریج کمال حاصل کرتی جاتی ہے۔ تجربہ شاہد ہے کہ رمضان میں  اکثر لوگوں  کی جسمانی بیماریاں  محض کھانے کے اوقات کی پابندی کی بنا پر خود بخود دور ہو جاتی ہیں ۔ چنانچہ بڑے بڑے مفسرین  اور ائمہ مجتہدین نے روزے کی دوسری حکمتوں  کے ضمن میں  حکمتِ صحتِ جسمانی کا ذکر بھی کیا ہے۔ خود آنحضرت ﷺ کا فرمان ہے:
 روزہ بدن کی زکوٰۃ ہے۔  یعنی جس طرح زکوٰۃ دینے سے مال پاک ہو جاتا ہے اسی طرح روزہ رکھنے سے جسم بھی بیماریوں  سے پاک ہو جاتا ہے۔
بسیار خوری سے مادیت کا غلبہ بڑھتا ہے اور شہوانی جذبات حملہ آور ہوتے ہیں ۔ روزے کا ایک فائدہ یہ بھی ہے کہ دن بھر بھوکے پیاسے رہنے سے جسمانی اعضاء میں  کچھ کمزوری آجاتی ہے جس سے شہوانی جذبات کے حملے ٹھنڈے پڑ جاتے ہیں ۔ بھوک اور پیاس جنسی جذبات کی برانگیخت کو کچل دیتے ہیں ۔
رسول اکرم ﷺ کا فرمان ہے:الصوم جنةکہ روزہ ڈھال ہے۔
اس سے مراد صرف یہی نہیں  کہ یہ صرف دوزخ کی آگ سے ڈھال ہے بلکہ اس سے یہ بھی مراد ہے کہ روزہ جنسی ہیجان نیز مادی او روحانی ہر قسم کی بیماریوں  کے لئے ڈھال ہے اس طرح کہ بھوک پیاس اس کی جنسی خواہشات کو دبا کر اسے خداوند کریم کی طرف راغب کرتے ہیں ۔ بخاری اور مسلم میں  حضرت عبد اللہ بن عمر سے مروی ہے :
یا محشر الشباب من استطاع منكم الباءة فليتزوج فانه اغض للبصر واحفظ للفرج ومن لم يستطع فعليه بالصوم فان له وجاء کہ اے نوجوانو! تم میں  سے جسے نکاح کرنے کی توفیق ہو اسے چاہئے کہ ضرور نکاح کرے، کیونکہ نکاح شرم و حیا اور شرمگاہ کی حفاظت کے لئے سب سے زیادہ مفید ہے اور جس نوجوان کو نکاح کی استطاعت نہ ہو اسے لازم ہے کہ وہ روزے رکھے کیونکہ روزہ جنسی ہیجان کا تدارک کرتا ہے۔
دوسرے الفاظ میں  ہم یہ کہہ سکتے ہیں  کہ روزہ جسم اور روح کے توازن کو برقرار رکھنے کا نام ہے۔ جسدِ انسانیت سے مادیت کے طوفان ہر آن اُٹھتے رہتے ہیں  اگر ان طوفانوں  کے سامنے بند نہ باندھا جائے تو یہ خاکی بدن ہویٰ و ہوس کا مظہر بن کر رہ جائے، خواہشاتِ نفسانی اس قدر سر کش اور غالب ہو جائیں  کہ انسان ان پر کنٹرول نہ کر سکے۔ لہٰذا خداوند کریم نے ضبطِ نفس اور مادیت کے غلبے سے بچانے کے لئے روزے جیسے عظیم عبادت کا انعام اسے عطا فرمایا: تاکہ اس کی روح اور جسم میں  توازن برقرار رہے اور نفسِ انسانی مطیع و منقاد ہو کر خدا کی یاد میں  مگن رہے۔
جاری ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
Advertisements

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Best Urdu Books

Free Online Islamic Books | Islamic Books in Urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.net

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Donate Your Books at: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

Amna Art Studio

Maker of art and artsy things, art teacher, and loud thinker

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

I am woman, hear me roar

This blog contains the feminist point of view on anything and everything.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

Pressure Cooker

Where I brew the stew to feed inner monsters...

%d bloggers like this: