مکروہ۔۔۔حصہ دوم

گزشتہ سے پیوستہ

دھوبی توسر پکڑ کر بیٹھ گیا ۔اس کی بیوی بھی رونے لگی کہ بچہ تو گیا کام سے۔مسجد میں جو امام ہیں ان کا تو یہ حال ہے کہ کسی نے کچھ دے دیا تو کھا لیا وہ تو ہم سے بھی زیادہ غریب ہیں ،خالی عزت سے کیا ہوتا ہے ۔باپ سمجھا سمجھا کر تھک گیا لیکن وہ کسی کی بات نہیں سنتا تھا۔آخر کار باپ اس کا ہاتھ پکڑ کر مسجد لے گیا اور مولوی کے ہاتھ میں اس کا ہاتھ دے دیاکہ اسے مولوی بنا دو ۔مولوی نے کہا کہ تم تو دھوبی ہو،باپ نے جواب دیا کہ ہاں مگر یہ مولوی بننا چاہتا ہے۔ہم نے لاکھ سمجھایا مگر اس پر بھوت سوار ہو گیا ہے مولوی بننے کا۔
مولوی نے کہا کہ ٹھیک ہے بھیج دینا کل سے اسے میرےپاس میں اسے لکھنا پڑھنا سکھا دوں گا۔
ہاشم نے مسجد جانا شروع کر دیا ،وہاں کچھ بچے اور بھی آتے تھے ۔وہ بہت خوش تھا کہ یہاں اسے کوئی دھوبی نہیں کہتا تھا۔مولوی صاحب نے پہلے ہی دن کہہ دیا تھا کہ اسلام میں کوئی چھوٹا بڑا نہیں ہوتا ،کوئی امیر کوئی غریب نہیں ہوتا ،ہر مسلمان دوسرے مسلمان کا بھائی ہے۔
مولوی صاحب قرآن پڑھاتے،ساتھ ساتھ مطلب بھی سمجھاتے جاتے سب حیران تھے کہ دھوبی کا بچہ بھی تعلیم حاصل کر رہا ہے دوسری طرف دھوبی اسے لعن طعن کرتا رہتا تھا۔
ہاشم کا ذہن پڑھائی میں بہت اچھا تھا جلد ہی اس نے قرآن کریم ختم کر لیا ۔اچھا خاصا پڑھنا لکھنا بھی آگیا تھااب ظاہر ہے مسجد کے امام اسے اتنا ہی پڑھا سکتے تھے کہ جتنا وہ خود جانتے تھے۔اس کا شوق دیکھ کر اسے قریبی گاؤں بھیج دیا گیا ،جہاں کے پیش امام نے انہیں علم شعر کی تعلیم دی جو ایران کا ایک بڑا علم سمجھا جاتا تھا۔اسے اس علم میں دلچسپی ہوئی مگر کچھ ہی عرصہ بعد وہ اس سے اکتا گیا۔اب حال یہ تھا وہ پوری طرح تعلیم بھی حاصل نہ کر سکا اور دھوبی وہ بننا نہیں چاہتا تھا ،یعنی گھر کا رہا نہ گھاٹ کا۔گاؤں سے نکل کر جنگل میں دن بھر گھومتا رہتا تھا باپ اس کی آوارہ گردیوں سے تنگ آچکا تھا آخر کار اس کو گھر سے نکال دیاکہ کچھ کما کر لاؤ ورنہ ہم تمہیں اپنے ساتھ نہیں رکھ سکتے۔ہاشم کون سا اس گاؤں میں خوش تھا اس نے گھر اور گاؤں دونوں کو چھوڑدیا ان دنوں ایران کے کئی شہر علم و ادب کے مرکز بنے ہوئے تھے۔ان شہروں میں اس کی سیرابی کی سامان چھپے ہوئے تھے "مرو”ان میں سب سے قریب تھا ۔اسے معلوم تھا کہ "مرو”میں ہر فن کے استاد بیٹھےہیں وہ "مرو”میں آگیا اسلام کا ابتدائی زمانہ تھا ۔علوم محدود تھےلیکن ذوق و شوق حد سے زیادہ بڑھا ہوا تھا طالب علموں کی بے حد عزت کی جاتی تھی اور ہر طرح سے ان کا خیال رکھا جاتا تھا۔ہر مسجد ایک مکتب بنی ہوئی تھی جگہ جگہ علما درس دیا کرتے تھے۔ہاشم نے بھی یہاں رہ کر تعلیم حاصل کرنا شروع کر دیا ۔
ہاشم کا غائب ہو جانا کوئی قابل ذکر بات نہ تھی اس کے ماں باپ تک کو اس کی فکر نہ تھی ہاں اس کی ماں اسے کبھی یاد کر لیا کرتی تھی پھر یہ کہہ کر صبر کر لیا کرتی کہ وہ کون سا ہمارے کام کا رہا ہے ۔کئی سال گزر گئے ہاشم کا کوئی اتا پتا نہ تھا لوگ اسے بھول گئے تھے کہ ایک دن وہ گاؤں لوٹ آیا۔لوگوں نے اس کی آمد کی خبر اس کے ماں باپ کو دی ماں کی مامتا بے چین ہو گئی اور وہ گھر سے بھاگ کر پاشم کے پاس پہنچی ۔ایک پستہ قد کا نوجوان اس کے سامنے کھڑا تھا وہ اسے گھر لے گئی دیر تک سامنے بٹھا کر روتی رہی ۔شام کو دھوبی گھر آیا تو بیٹے کو سامنے دیکھ کر و ہ بھی خوشی سے پھولا ہوا تھا ۔ دل میں سوچ رہا تھا اتنے دنوں بعد آیا ہے یقیناً دنیا دیکھ کر کافی کچھ سیکھ گیا ہو گا کوئی کام دھندا کرنے لگا ہو گا اب وہ کمائے گا اور ہم بیٹھ کر کھائیں گے۔
ہاشم گاؤں کی مسجد کے امام کے پاس گیا وہی امام جن سے اس نے ابتدائی تعلیم حاصل کی تھی۔وہ تو بے چارے کم پڑھے لکھے آدمی اور ہاشم مختلف علوم و فنون بہترین اساتذہ سے حاصل کر کے آیا تھا ، اس نے امام صاحب سے گفتگو شروع کی تو امام ششدررہ گئے۔وہ جس موضوع پر بات کرتے ہاشم ایسے نکتے پیش کرتا کہ معلوم ہوتا علم کا دریا بہہ رہا ہو۔
امام صاحب نے حیرت سے پوچھا کہ "تو وہی ہاشم ہے نا؟”ہاشم نے کہا "ہاں،میں وہی ہوں”امام صاحب نے کہا کہ”دھوبی کا بیٹا اور اتنا بڑا عالم۔کمال ہو گیا۔”جواب میں ہاشم نے کہا”آپ کی نگاہ میں کمال ہو گا ،مگر میں ذرا بھی مطمئن نہیں ہوں۔مجھ سے کئی ایسے ہیں جو ان علوم پر دسترس رکھتے ہیں، میں تو کچھ ایسا کرنا چاہتا ہوں جو آج تک کسی نے نہ کیا ہو۔
مولوی نے کہا "ایسا کیا کام ہے بھلا کہ جو کوئی اور انسان نہ کرسکا ہو؟اگر تو مردوں کو زندہ بھی کرےگا تو وہ حضرت عیسیؑ بھی کر چکے ہیں۔اگر تو آسمانوں پر بھی چلا جائے تو وہ حضرت محمد ﷺ معراج کے موقعہ آخری آسمان سے بھی آگے جا چکے ہیں ۔ایسے خیالات سے باز آجا اور جو علوم تیری دسترس میں ہیں ان پر اللہ کا شکر ادا کر۔”
جاری ہے
Advertisements
8 comments
  1. ابھی تک سمجھ نہیں آئی کہ یہ ہاشم صاحب کون ہیں ؟ آخر میں ہوا جو دو جماعت پاس ناتجربہ کا

      • بی بی جی ۔ میں دو جماعت پاس ہوں اُردو میڈیم سکول کا

        • [COLOR=”Navy”]اردو میڈیم کے2جماعت پاس ۔۔۔
          اور انگریزی میڈیم کے کتنے جماعت پاس؟
          ویسے 2 جماعتیں بھی کس ضلع میں پاس کیں؟
          بھوپال میں؟[/COLOR]

          • میں چیخوں یا چِلّاؤں یا رؤں یا گاؤں یا منہ کھُلا اور آنکھیں پھَیلا کر بٹر بٹر دیکھنے لگوں ؟
            میرا ضلع بھوپال ؟
            خاص کر جبکہ میں نے اپنی آپ بیتی اپنے بلاگ پر لکھ رکھی ہے
            کیا قیامت قریب آ گئی ہے ؟
            ابھی آگے نمعلوم کیا ہو گا

            • جو ہو گا آپ کو لگ پتا جائے گا
              میں نے کتنا وقت نکال کر لکھا اور آپ کو بغیر انتطار کے ہی سب پتا چل جائے
              انتظار کیجئے

              • جو ہو گا ہوتا رہے مجھے چنداں فکر نہیں ۔ میرا احتجاج تو اس انکشاف پر ہے کہ میں ضلع بھوپال سے تعلق رکھتا ہوں جبکہ میری آپ بیتی میرے بلاگ پر موجود ہے

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Best Urdu Books

Free Online Islamic Books | Islamic Books in Urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.net

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Donate Your Books at: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

Amna Art Studio

Maker of art and artsy things, art teacher, and loud thinker

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

I am woman, hear me roar

This blog contains the feminist point of view on anything and everything.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

Pressure Cooker

Where I brew the stew to feed inner monsters...

%d bloggers like this: