چھوٹ

جوش ملیح آبادی نے فیلڈ مارشل ایوب خان کے خلاف ایک نظم لکھی۔ مخبروں نے فیلڈ مارشل کو وہ نظم جوش کی آواز میں سنوا دی۔ نظم سن کر  ایوب خان نے کہا:
"اتنے بڑے شاعر کو اتنی چھوٹ تو ہونی ہی چاہیئے”
Advertisements
4 comments
    • تحریم said:

      یو ٹیوب پر تو نہ مل سکی
      ہاں مگر ابوشامل جی کے بلاگ پر نظم ملی ہے

      واقعہ کافی پرانہ پڑھا ہے یاد نہیں آرہی کہ یہی وہ نظم تھی یا دوسری
      مجھے تو یہی یاد رہی اب مکمل طور پر کالج کے دن یاد نہیں آرہے کہین گڈ مڈ نہ ہو جائے
      یہ گر وہ نظم نہیں تو یہ حبیب جالب کی ہو گی جس پر انہیں زندان نشین کیا گیا تھا

      اہل علم حضرات سے گستاخی کی معذرت کے ساتھ

      اور اس امید پر کہ یہی وہ نظم ہو گی جناب جوش کی
      ؎مصاحبین
      حضور ہم دس برس سے حاشیہ بردار اولٰی ہیں
      عمومی شور و غل شہروں کی دیرینہ طبیعت ہے
      سیاسی کھیل ہیں، شوریدہ سر ہلڑ مچاتے ہیں
      انہیں لیڈر نچاتے ہیں
      ہمیں آنکھیں دکھاتے ہیں
      اگر ہم جیل بھجوائیں
      تو اکثر تلملاتے ہیں
      حضور! ہم خانہ زادِ سلطنت سجدے لٹاتے ہیں
      شاہ
      بکو مت چپ رہو، آغازِ بد انجام پر سوچو
      یہاں کیا ہو رہا ہے، کون سا شیطان اٹھا ہے
      جھروکے سے اُدھر دیکھو، یہ کیا طوفاں اٹھا ہے
      دمادم، پے بہ پے ایوب مردہ باد کے نعرے؟
      افق پر بے تحاشا جھملاتی شام کے تارے
      گرجتے گونجتے الفاظ میں تقریر کے پارے
      بکو مت، چپ رہو، آغازِ بد انجام پر سوچو
      ایک اور مصاحب داخل ہو کر آداب بجا لاتا ہے
      مصاحب
      امیر المومنین! بالی عمریا کا وزیر آیا
      بہتر نشتروں میں ایک نشتر میر صاحب کا
      بہ قول آنجہانی شیخ، چہرہ ماہتابی ہے
      طبیعت آفتابی ہے
      خدا جانے؟ سنا ہے
      بچپنے ہی سے شرابی ہے
      شاہ
      بلا لاؤ، اکیلا ہے
      کہ کوئی دوسرا بھی ہے؟
      مصاحب
      جماعت کے بہت سے منچلے بھی ساتھ آئے ہیں
      غزلہائے ہفت خواں کے ولولے بھی ساتھ آئے ہیں
      جوانی ناگنوں کے رنگ میں آواز دیتی ہے
      دل سد رہ نشیں کو طاقت پرواز دیتی ہے
      بالی عمریا کا وزیر دربار میں داخل ہو کر قدم بوس ہوتا ہے
      شاہ
      چپڑ غٹو، الل ٹپو، نکھٹو، دًم کٹے ٹٹو
      فضا لاہور کی ہنگامہ پرور ہوتی جاتی ہے
      کہاں ہو؟ کس طرف ہو؟ دیکھتے کیا ہو میاں لٹو
      جماعت کی صدارت اس لیے تم کو عطا کی ہے
      عوام الناس بازاروں میں نعرہ باز ہو جائیں
      سیاسی مسخرے اس دور کے شہباز ہوجائیں
      ارے گھسیٹے، ارے بچھیے کے باوا
      سوچتا کیا ہے؟
      وزیر
      امیر المومنین!۔۔۔۔ ہم بندگانِ خاص کے آقا
      ہم ایسے سینکڑوں سرکارِ عالی پر نچھاور ہیں
      یقیں کیجیے، حریفوں کے مقابل میں دلاور ہیں
      جری ہیں، جانتے ہیں بچپنے سے جاننے والے
      کہ ہم ہیں آپکو ظلِ الٰہی ماننے والے
      مرے قبلہ، مرے آقا، مرے مولا، مرے محسن
      سوائے چند اوباشوں کے، ساری قوم خادم ہے
      سیاسی نٹ کھٹوں کی گرم گفتاری پر نادم ہے
      شاہ
      بکو مت، چپ رہو، یہ ہم سمجھتے ہیں یہاں کیا ہے
      وہ مودودی کے فتنے اور نصر اللہ کے شوشے
      وہ پاکستان مسلم لیگ کے بھڑکے ہوئے گوشے
      ڈیورنڈ روڈ کا وہ شاطرِ اعظم، معاذ اللہ
      کوئی ٹکرائے اس شہباز سے، یہ تاب ہے کس میں؟
      کوئی ایسا بھی ہے، یہ جوہرِ نایاب ہے کس میں؟
      وہ کائیاں چودھری یعنی وزیراعظم سابق
      پڑا ہے لٹھ لیے پیچھے مرے اور ضرب ہے کاری
      تمہیں معلوم ہے عبد الولی خاں کی سیہ کاری؟
      وہ بھٹو، جو مجھے کہتا تھا ڈیڈی، اب کہاں پر ہے
      کہ سخت گفتنی نا گفتنی اس کی زباں پر ہے
      وہ شورش جس نے بھوک ہڑتال سے لرزا دیا سب کو
      تمہیں معلوم ہے بد بخت نے تڑپا دیا سب کو
      قصوری اور شوکت کس لیے آزاد پھرتے ہیں
      انہیں زنداں میں ڈلواؤ، دار پر کھنچواؤ، مرواؤ
      ہمارا حکم ہے ان سب کے خنجر گھونپتے جاؤ
      جسارت اس قدر؟ اب گالیاں دینے پہ اترے ہیں
      سیاسی نٹ کھٹوں کے بیچ بازاریوں کے نخرے ہیں
      کچھ دیر چپ رہنے کے بعد حکومت کی ایک رقاصہ سے
      شاہ
      اری نازک بدن، زہرہ ادا، گوہر صفت لیلٰی
      ترے قربان، بوڑھی ہڈیوں میں جان آ جائے
      رخِ زیبا
      پہ غازہ ہے مگر سی آئی اے کا ہے
      کوئی داؤ بتا، یہ بے تکا طوفان تھم جائے
      ہمارا پاؤں اکھڑا جا رہا ہے پھر سے جم جائے
      بتا نور جہاں، نورِ نظر، رقاصۂ عالم
      ہماری ذات اقدس سے عوام الناس ہیں برہم
      رقاصہ
      مرے آقا! اجازت ہو تو میری بات اتنی ہے
      شریروں کی ہمارے ملک میں تعداد کتنی ہے؟
      یہی دو چار مُلا، پانچ چھ لڑکے شریروں سے
      پرانے گھاگ لیڈر، جیل خانے کے اسیروں میں
      انہیں زہر اب دے کر گولیوں سے کیجیے ٹھنڈا
      کہ شوریدہ سروں کی ڈار کا استاد ہے ڈنڈا
      یہ سب گستاخ ہیں، ان کے لیے تعزیر واجب ہے
      یہ سب غدار ہیں، ان کے لیے زنجیر واجب ہے
      یہ سب بزدل مسافر موت کے ہیں، موت پائیں گے
      کسی حیلے بہانے سے نہ ہر گز باز آئیں گے
      شاہ
      بہت اچھا، ہم اب ان کے لیے اعلان کرتے ہیں
      بس ان کی ناگہانی موت کا سامان کرتے ہیں
      مارچ کو ورق الٹ جاتا ہے
      در و دیوار پہ حسرت کی نظر کرتے ہیں
      الٹ ڈالا، عوام الناس سے فرعون کا تختہ
      طنابیں ٹوٹتی ہیں، شاہ زادے تھر تھراتے ہیں
      وہ گوہر جان نے لاہور کو رخت سفر باندھا
      وہ رقاصہ نکل کے پہلوئے اغیار میں پہنچی
      کٹی شب دختِ رز پیمانۂ افکار میں پہنچی
      سیاسی ڈوم ڈھاری چل بسے، شورِ فغاں اٹھا
      زمانے کی روش پر ایک سیلاب رواں اٹھا
      بہت سی قمریوں سے باغبانوں کو ہلا ڈالا
      کئی ذروں نے مل کر آسمانوں کو ہلا ڈالا
      عوام الناس جاگ اٹھیں،تو ناممکن ہے سو جائیں
      علی بابا کے چوروں کی زبانیں گنگ ہو جائیں

  1. Saba said:

    Yup share the nazm

  2. اس نظم کا تو مجھے ياد نہيں البتہ اتنا جانتا ہوں کہ فيلڈ مارشل محمد ايوب خان زندہ دل آدمی تھے اور اپنے ساتھ مذاق خندہ پيشانی سے سُنتے تھے ۔

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Best Urdu Books

Worlds Largest Free Online Islamic Books | Islamic Books in Urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.net

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Donate Your Books at: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

Amna Art Studio

Maker of art and artsy things, art teacher, and loud thinker

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

Pressure Cooker

Where I brew the stew to feed inner monsters...

My Blog

Just another WordPress.com site

%d bloggers like this: