بلاگ کیا ہے؟؟؟

اپنےمافی الضمیر کو دوسروں تک کسی بھی شکل میں پہنچانے کے ذرائع انسانی زندگی ا جزءلا ینفک ہیں۔ اس جہانِ آب و گل کی ابتداءہی سے انسان اپنے احساسات و خیالات کو مختلف شکلوں میں دوسروں تک پہنچاتا رہاہے۔ ہر دور میں انسانی ذہنوںنے مختلف قسم کے ذرائع ابلاغ ایجاد کیے ہیں۔انٹرنیٹ ٹیکنالوگی کے وجو میں آنے کے بعد سے حالیہ دہائی میں انھیں ذرائع ابلاغ میں ایک اور نئےذریعے کا اضافہ ہوا ہے جس کو بلاگ کہتے ہیں۔
ایک طرح سے بلاگ، ویب سائٹ کا ہی حصہ ہوتا ہے جس پر کسی فرد کی جانب کی جانب سے پابندی کے ساتھ خیالات، احساسات، واقعات وغیرہ متن یا متن کے ساتھ ساتھ سمعی و بصری صورتوں میں پیش کیا جاتا ہے۔بلاگ کو On-line Diaries بھی کہا جاتا ہے۔ آج کل بلاگ نویسی انٹر نیٹ سے منسلک لوگوں کے لیے عام ہوتی جارہی ہے۔ بلاگ نویس اپنے خیالات کو بلاگ کے ذریعے انٹرنیٹ صارفین کے سامنے پیش کرتا ہے اور پھر اس بلاگ کو پڑھنے والے اس پر رائے زنی کرتے ہےںاور مشوروں سے بھی نوازتے ہیں۔ بلاگ نویسی کی ایک بڑی خصوصیت ےہ ہے کہ اس میں صرف متن ہی نہیں بلکہ آڈیو، ویڈیو اور تصاویر بھی پیش کی جاسکتی ہیں۔جس طرح ایک بلاگ نویس اپنے افکار کو متن کے ذریعے پیش کرسکتا ہے اسی طرح کسی واقعے کو ویڈیو اور تصاویر کے ذریعے بھی دکھا سکتا ہے۔ صرف ےہی نہیں بلکہ اپنی ریکارڈیڈ آوا ز میں اس پر اپنا تبصرہ بھی نیٹ صارفین کے گوش گذار کرسکتا ہے۔
بلاگ نویسی کے میدان پر اگر طائرانہ نظر دوڑائی جائے تو مختلف قسم کے بلاگ نظر آئیں گے مثلاً ذاتی بلاگ جس میں ایک فرد اپنے خیالات اور اپنے تبصرے نیز دیگر چیزیں نیٹ صارفین کے سامنے پیش کرتا ہے گرچہ اس کے بلاگ کو پڑھنے والے خال خال ہی ہوںلیکن وہ ایک ذاتی ڈائری کی طرح خامہ فرسائی کرتا رہتا ہے۔تجارتی مقصد کے تحت بھی بلاگ لکھے جاتے ہےں جس کے ذریعے ایک کمپنی اپنے پروڈکٹ کی مارکٹنگ اور Branding کرتی ہے اوراپنے صارفین ودیگر عوام سے تعلقات استوار رکھنا چاہتی ہے۔ اسی طرح بلاگ موضوعاتی بھی ہوتے ہےں جیسے مذہبی، سیاسی، تعلیمی بلاگ، فیشن بلاگ، میوزک بلاگ وغیرہ وغیرہ۔ بلاگ نویسی کی ےہ خاصیت ہے کہ کوئی بھی شخص کسی بھی موضوع کے تحت بلاگ نویسی کرسکتا ہے اور الگ الگ موضوعات پر الگ الگ بلاگ پیش کرسکتا ہے۔
بلاگ نویسی کے آغاز و ارتقا کا جائزہ لیں تو معلوم ہوگا کے بلاگ نویسی ابھی اپنے عنفوان شباب کے دور میں ہے۔ باقاعدہ بلاگ نویسی کا آغاز 1997سے ہوتا ہے اور درجہ بہ درجہ بلکہ تیزی کے ساتھ بلاگ نویسی کو عوامی مقبولیت حاصل ہوتی جارہی ہے۔ چونکہ یہ ایک ایسا پلیٹ فارم ہے جس پر بلاگ نویس کو اپنے افکار کو پیش کرنے کی مکمل آزادی ہوتی ہے۔ اس پر دیگر میڈیائی ذرائع کی طرح کسی اسپانسر کا دباؤ یا اس کی پالیسیوں کی پابندی نہیں ہوتی ۔ بلاگ نویس مکمل آزاد ہوتا ہے حالانکہ یہ آزادی اسی حد تک ہونی چاہیے جہاں سے دوسرے کی آزادی شروع ہوجاتی ہے۔
اٹرنیٹ کی دنیا بہت وسیع ہے۔ ایسی سیکڑوں ویب سائٹیں مل جائیں گی جو نیٹ صارفین کو فری میں بلاگ نویسی کی سہولت فراہم کرتی ہےں۔اس کی مقبولیت کاایک راز یہ بھی ہے۔تقریباً ہر نیوز چینل،نیوز ایجنسی اوراخبارات و رسائل کی ویب سائٹوں پر، تفریحی و تجارتی اور تنظیمی و تعلیمی ویب سائٹوں پر بھی بلاگ مل جائیں گے۔ اس کے علاوہ ایسی بھی ویب سائٹیں ہےںجو صرف بلاگ نویسی کے لیے ہےں اور نیٹ صارفین کو فری میں بلاگ نویسی کے مواقع عطا کرتی ہیں۔ ان میں مشہور و معروف ویب سائٹیں http://www.blog.com, http://www.blogspot.com, اور http://www.wordpress.com ہیں۔یہ ایسی ویب سائٹیں ہیں جن پر کوئی بھی نیٹ صارف اکاؤنٹ بنا کر فری میں بلاگ نویسی شروع کر سکتا ہے اور اپنے خیالات اور تبصرے کو پوری دنیا کے گوشے گوشے میں پھےلا سکتا ہے۔ ایک اکاؤنٹ کے تحت کئی بلاگ تیار کیے جاسکتے ہےں اور ایک ہی بلاگ میں کئی مضامین، تبصرے، تصاویر، آڈیو اور ویڈیو پیش کیے جاسکتے ہیں۔
بلاگ نویسی کی دوڑ میں عام آدمی سے لیکر خاص تک تمام طرح کے لوگ شامل ہیں۔ نیٹ صارفین میں بلاگ کے ذریعے جہاں ایک طرف معزز اور بڑی بڑی شخصیتیں اپنے خیالات پیش کرتی ہیں وہیں انٹرنیٹ سے منسلک ادنی شخص بھی اپنے افکار سے دنیا والوں کو روشناس کراتا ہے۔بڑے بڑے سیاست داں، ماہرین تعلیمات، ماہرین معاشیات کے علاوہ اپنے اپنے میدان کے دیگر ماہرین بلاگ نویسی کے ذریعے حالات حاضرہ پر تبصرہ کرتے ہےں اور اپنے مفید مشورے دیتے رہتے ہیں۔بلاگ نویسی میںفلمی اداکار بھی پیچھے نہیں ہیں۔ وہ بھی اپنا بلاگ لکھتے ہیں، موجودہ صورت حال پر اپنی رائے کا اظہار کرتے ہیںاور گاہے بہ گاہے آپس میں ایک دوسرے کی چٹکیاں بھی لیتے رہتے ہیں، جو میڈیا کے حوالے سے منظر عام پر بھی آتی رہتی ہیں۔ میڈیا بھی ایک ایسی اکائی ہے جو اگر چاہے تو کسی بھی شخص کی ایک ایک بات، ایک ایک حرکت پیش کرکے اس کو شہرت کے ساتویں آسمان کی بلندی پر پہنچا سکتی ہے اور اگرچاہے تو کسی بھی معروف و مشہور شخصیت کو ignore کرکے دنیا والوں کی نگاہوں سے معدوم کر سکتی ہے۔اس کی سیکڑوں مثالیں پیش کی جاسکتی ہیں۔ یہ بلاگ نویسی بھی اسی میڈیا کا ایک حصہ ہے۔
بلاگ نویس چونکہ ایک مکمل آزاداکائی ہے۔ اور بلاگ نویس پر کسی قسم کا کوئی دباؤ نہیں ہوتا ہے اسی لیے کبھی کبھی یہ نقصان دہ بھی ثابت ہوسکتی ہے مثلاً سنگاپور کے دو مشرک چینی باشندوں کو ملک کے Anti-Sedition قانون کے تحت مسلم مخالف بلاگ پوسٹ کرنے پر جیل کی ہوا کھانی پڑی۔ اسی طرح مصر کے ایک بلاگ نویس کریم عامر کے خلاف مصری صدر حسنی مبارک اور ایک اسلامی ادارے کے خلاف ہتک آمیزبلاگ کی پاداش میں مقدمہ چلائے جانے کے بعد
۳ سال کی سزا سنائی گئی۔ اس
لیے ضروری ہے کہ بلاگ نویسی کے میدان میں بھی ذرا قدم سنبھال کر چلیں ورنہ آزادیء اظہار رائے کے غلط استعمال کی پاداش میں کہیں تمام طرح کی آزادی نہ سلب کر لی جائے۔
اردو زبان کے حوالے سے اگر بلاگ نویسی کا جائزہ لیا جائے تو اردوزبان میں اور اردوزبان کے تعلق سے بھی سیکڑوں بلاگ اپنی جانب متوجہ کرتے نظر آئیں گے۔بعض بلاگ تو ایسے ہیں جو اردو زبان و ادب سے متعلق ہےں مگر وہ انگریزی زبان میں ہیں یااردو زبان میں انگریزی حروف اور انگریزی رسم الخط میں ہیں۔ دیگر زبانوں کی طرح اردو زبان نے بھی انٹر نیٹ کی دنیا میں اپنی جگہ اور شناخت قائم کرلی ہے اور بتدریج اس کا دائرہ مزید بڑھتا جا رہا ہے۔اور اردو رسم الخط میں اپنے ہاتھ پیر پھیلا رہی ہے ۔ لہٰذا بلاگ نویسی میں بھی انگریزی حروف اور رسم الخط میں اردو زبان کے ساتھ ساتھ اردو رسم الخط میں بھی بلاگ لکھے جا رہے ہیں۔اردو زبان میں بلاگ لکھنے کے لیے یونی کوڈ فونٹ کی مدد لی جاتی ہے جو ہر کمپیوٹر پر آسانی سے دستیاب ہوتا ہے اور ہر جگہ accessable ہوتاہے۔ اردوزبان میں ایسے بہت سارے برقی اخبار اور سائل و جرائد ہیں جن کی ویب سائٹس پر اردو زبان میں بلاگ پڑھے اور لکھے جا سکتے ہیں۔واضح رہے کہ اردو زبان میں بلاگ لکھنے کے لیے ویب سائٹ کا اردو زبان میں ہونا ضروری نہیں ہے۔ کسی بھی زبان میں موجود ویب سائٹ پر اگر بلاگ لکھنے کی سہولت مہیا ہے تو اس ویب سائٹ پر اردوزبان میں یونیکوڈ فونٹ کا استعمال کرکے بلاگ لکھے جاسکتے ہیں۔شرط ےہ ہے کہ صارف کے کمپیوٹر میں اردو کی بورڈ موجود ہو جو Language & Date Setting Toolکے ذریعے Instal کیا جا سکتا ہے۔تو پھر دیر کس بات کی ہے؟ آپ بھی اپنا بلاگ شروع کیجیے اور دنیا بھر کو اپنے خیالات سے آگاہ کیجیے۔
Advertisements
6 comments
  1. mohibalvi said:

    اگلی پوسٹ کب متوقع ہے ؟

  2. بھی نیا لکھنا شروع کیا ہے
    جلد ہی کافی تحریریں شامل ہوں گی
    ان شء اللہ

  3. hmmm….. nice post…infact blogging has become a part of life of most of them…mostly enjoy blogging for themselevs rather introducing their ideas to the world… 🙂

    by the way welcome to the blog world…

  4. syed mubashir mehdi said:

    میں بھی بلاگ بنانا چاھتا ھوں مکمل رھنماؑی فرماؑیں

اپنی رائے دیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

اردو سائبر اسپیس

Promotion of Urdu Language and Literature

سائنس کی دُنیا

اُردو زبان کی پہلی باقاعدہ سائنس ویب سائٹ

~~~ اردو سائنس بلاگ ~~~ حیرت سراے خاک

سائنس، تاریخ، اور جغرافیہ کی معلوماتی تحقیق پر مبنی اردو تحاریر....!! قمر کا بلاگ

BOOK CENTRE

BOOK CENTRE 32 HAIDER ROAD SADDAR RAWALPINDI PAKISTAN. Tel 92-51-5565234 Email aftabqureshi1972@gmail.com www.bookcentreorg.wordpress.com, www.bookcentrepk.wordpress.com

اردوادبی مجلّہ اجرا، کراچی

Selected global and regional literatures with the world's most popular writers' works

Best Urdu Books

Worlds Largest Free Online Islamic Books | Islamic Books in Urdu | Best Urdu Books | Free Urdu Books | Urdu PDF Books | Download Islamic Books | besturdubooks.net

ISLAMIC BOOKS HUB

Free Authentic Islamic books and Video library in English, Urdu, Arabic, Bangla Read online, free PDF books Download , Audio books, Islamic software, audio video lectures and Articles Naat and nasheed

عربی کا معلم

وَهٰذَا لِسَانٌ عَرَبِيٌّ مُّبِينٌ

International Islamic Library Online (IILO)

Donate Your Books at: Deenefitrat313@gmail.com ..... (Mobile: + 9 2 3 3 2 9 4 2 5 3 6 5)

Taleem-ul-Quran

Khulasa-e-Quran | Best Quran Summary

Al Waqia Magazine

امت مسلمہ کی بیداری اور دجالی و فتنہ کے دور سے آگاہی

TowardsHuda

The Messenger of Allaah sallAllaahu 3Alayhi wa sallam said: "Whoever directs someone to a good, then he will have the reward equal to the doer of the action". [Saheeh Muslim]

آہنگِ ادب

نوجوان قلم کاروں کی آواز

آئینہ...

توڑ دینے سے چہرے کی بدنمائی تو نہیں جاتی

بے لاگ :- -: Be Laag

ایک مختلف زاویہ۔ از جاوید گوندل

اردو ہے جس کا نام

اردو زبان کی ترویج کے لیے متفرق مضامین

آن لائن قرآن پاک

اقرا باسم ربك الذي خلق

پروفیسر عقیل کا بلاگ

Please visit my new website www.aqilkhan.org

AhleSunnah Library

Authentic Islamic Resources

ISLAMIC BOOKS LIBRARY

Authentic Site for Authentic Islamic Knowledge

منہج اہل السنة

اہل سنت والجماعۃ کا منہج

waqashashmispoetry

Sad , Romantic Urdu Ghazals, & Nazam

!! والله أعلم بالصواب

hai pengembara! apakah kamu tahu ada apa saja di depanmu itu?

Life Is Fragile

I don’t deserve what I want. I don’t want what I have deserve.

I Think So

What I observe, experience, feel, think, understand and misunderstand

Amna Art Studio

Maker of art and artsy things, art teacher, and loud thinker

mindandbeyond

if we know we grow

Muhammad Altaf Gohar | Google SEO Consultant, Pakistani Urdu/English Blogger, Web Developer, Writer & Researcher

افکار تازہ ہمیشہ بہتے پانی کیطرح پاکیزہ اور آئینہ کیطرح شفاف ہوتے ہیں

بے قرار

جانے کب ۔ ۔ ۔

سعد کا بلاگ

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام

دائرہ فکر... ابنِ اقبال

بلاگ نئے ایڈریس پر منتقل ہو چکا ہے http://emraaniqbal.comے

Kaleidoscope

Urban desi mom's blog about everything interesting around.

تلمیذ

Just another WordPress.com site

سمارا کا بلاگ

کچھ لکھنے کی کوشش

Guldaan

Islam, Pakistan and Politics

کائنات بشیر کا بلاگ

کہنے کو بہت کچھ تھا اگر کہنے پہ آتے ۔۔۔ اپنی تو یہ عادت ہے کہ ہم کچھ نہیں کہتے

Muhammad Saleem

Pakistani blogger living in Shantou/China

Writer Meets World

Using words to conquer life.

Musings of a Prospective Shrink

sugar spice and everything nice

Aiman Amjad

think, discuss, review and express...

Pressure Cooker

Where I brew the stew to feed inner monsters...

My Blog

Just another WordPress.com site

%d bloggers like this: